مقبول خبریں
پیر سید منور حسین شاہ کی زیر صدارت بلال جامع مسجدمیں تاجدار ختم نبوت کانفرنس کا انعقاد
مارجری حسین کی لکھی کتاب کی تقریب رونمائی،شرکا نے کتاب کو تاریخ ساز کارنامہ قرار دیا
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت جولائی میں برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز،سیمینارز منعقد کریگی
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
مظلوم کشمیری بھائیوں کیلئے پہلے کی طرح آواز بلند کرتے رہیں گے:مئیر کونسلر طاہر محمود ملک
اوورسیز پاکستانیز ویلفیئر کونسل کا وسیم اختر چوہدری اور ملک ندیم عباس کے اعزاز میں استقبالیہ
مسئلہ کشمیر کو برطانیہ و یورپ میں اجاگر کرنے پر تحریکی عہدیداروں کا اہم کردار ہے: امجد بشیر
ہم نے سچ کو دیکھا ہے جھوٹ کے جھروکوں سے!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
گلوگار راجہ کاشف کی پارلیمنٹ ہائوس میں سائوتھ ایشین کمیونیٹیز کی جانب سے زبردست پزیرائی
لندن (خصوصی رپورٹ: عمران راجہ) پاکستانی نژاد برطانوی گلوگار کی پارلیمنٹ ہائوس میں زبردست پزیرائی، سائوتھ ایشین کمیونیٹیز کی جانب سے راجہ کاشف کو زبردست خراج تحسین، تفصیلات کے مطابق برطانوی پارلیمنٹ ہائوس میں کسی کے کام کو خراج پیش کرنا اس شخصیت کیلئے ایک بٍڑا اعزاز ہوتا ہے پاکستانی نژاد گلوکار راجہ کاشف کیلئے اس تقریب کا اہتمام ممبر پارلیمنٹ سیما ملہوترا نے کیا جس میں دیگر اہم شخصیات کے علاوہ برصغیر کے معروف میوزک ڈائیریکٹر آنند جی، بنگلہ دیش کے ڈپٹی ہائی کمشنر محمد ذوالقرنین، روی شرما، رمی رینجرز اور انیسا ناصر شامل تھیں۔ مقررین نے نوجوان پاکستانی گلوکار کو نوجوان نسل کا نمائیندہ گلوکار قرار دیتے ہوئے کہا کہ برطانیہ میں رہنے کے باوجود انکی آواز کی مٹھاس اور لفظوں کی ادائیگی کمال ہے، آنند جی کا کہنا تھا کہ رباعیات کے ہمراہ انکے دوگانے انہیں ماضی میں لیجاتے ہیں۔ سیما ملہوترا ایم پی کا کہنا تھا انہیں خوشی ہے کہ راجہ کاشف جیسا ٹیلنٹڈ نوجوان انکے حلقے کا رہائشی ہے جو پاکستانی، بنگلہ دیشی اور انڈیا کمیونیٹیز میں یکساں طور پر معروف ہے، انکا کہنا تھا کہ یہ نوجوان ایسی پذیرائی کا بجا طور پر حقدار تھا۔ اس موقع پر راجہ کاشف کے چند معروف گانے بھی دکھائے گئے، آخر میں راجہ کاشف نے تمام حاضرین کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ الفاظ کی ادائیگی میں تھوڑی بہت فرق سے تینوں کمیونٹیز کا میوزک کا مزاج ایک جیسا ہے اسی لیئے انہوں نے تینوں ممالک کیلئے گانے گائے ہیں۔