مقبول خبریں
کشمیر سالیڈیرٹی کیلئے یکم فروری سے 11فروری تک تقریبات منعقد کرائی جائیں گی
پیپلزپارٹی کے رہنما ندیم اصغر کائرہ کی پریس کانفرنس ،صحافیوں کے سوالات کے جوابات دیئے
واجد خان ایم ای پی کا آزاد کشمیر سے آئے حریت کانفرنس کے رہنمائوں کے اعزاز میں عشائیہ
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
جموں و کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے زیر اہتمام پہلی کشمیر کلچرل نمائش کا اہتمام
دسمبر بے رحم اتنا نہیں تھا!!!!!!!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
ماہر تعلیم اور برطانوی چیریٹی کی معروف شخصیت جاوید خان کیلئے ڈاکٹریٹ کی اعزازی ڈگری
لندن( خصوصی رپورٹ: اکرم عابد) برنارڈو میں جاوید خان آٹھ ہزار سے زائد عملے اور تئیس ہزار سے رضاکاروں کی ٹیم کی سربراہی کرتے ہیں جو اسے برطانیہ کی سب سے بڑی بچوں کی خیراتی تنظیم بناتی ہے ۔ گذشتہ برس خیراتی تنظیم نے تین لاکھ ایک ہزار سے زائد بچوں ، نوجوانوں اور والدین کی زندگیاں تبدیل کی تھیں . پاکستانی نژاد برطانوی کی حیثیت سے یہ برنارڈو کے ڈیڑھ سو سالہ تاریخ میں پہلے غیر سفید فام سی ای او ہیں۔ انیس سو اسی میں جامعہ سیلفورڈ سے ریاضی میں بیچلرز کی ڈگری حاصل کرنے کے بعد انہوں نے ویسٹ مڈلینڈ میں استاد کی حیثیت سے اپنے کیریئر کا آغاز کیا، بعدازاں تعلیمی سیکٹر میں بہت تیزی سے ترقی کی منازل طے کرتے ہوئے سربراہ ریاضی، اسسٹنٹ پرنسپل اور مزید آگے بڑھتے ہوئے مقامی حکومت کے ڈائریکٹر برائے تعلیم مقرر ہوئے . جاوید نے اپنی زندگی عوامی خدمت اور کمزوروں کی امداد میں گزار دی۔ دو ہزار سولہ میں جاوید نے برٹش مسلم ایوارڈز میں "سپرٹ آف برٹین" اپنے نام کیا تھا۔ جاوید خان کا کہنا تھا کہ سیلفورڈ یونیورسٹی میں شاندار وقت گزارا، جس نے مجھے زندگی میں بہترین ریاضی کی تعلیم سے نوازا۔ میں پروفیسرز کا شکرگزار ہوں جنہوں نے مجھ پر اعتماد کیا اور ان دوستوں کا جنہوں نے میری حوصلہ افزائی کی ۔ یہ سب سیلفورڈ کی ہی بدولت ہے کہ میں اس مقام پر موجود ہوں۔ انہوں نے مزید کہا کہ جب سے میں فارغ اتحصیل ہوا ہوں ، میں نے نوجوانوں اور کمیونٹیز کے ساتھ کام کیا تاکہ ایک مثبت مستقبل حاصل کیا جاسکے، پہلے یہ کام میں نے ریاضی کا استاد بن کر کیا، پھر مقامی حکوت اور تعلیم میں سربراہ کے طور پر اور اب برنارڈو کے چیف ایگزیکٹو کی حیثیت سے سر انجام دے رہا ہوں۔ یہ میرے لیے بہت بڑا انعام ہے کہ مجھے سیلفورڈ میں دعوت دے کر اعزازی ڈگری دینے کے ساتھ میں اپنے اس سفر کو آپ کے سامنے بیان کر رہا ہوں ۔ میں امید کرتا ہوں کہ یہ برطانیہ بھر میں موجود نوجوانوں کو اس امر سے قطع نظر کہ وہ کہاں سے تعلق رکھتے ہیں ، یا جس قسم کے چیلنجز کا وہ سامنا کر رہے ہیں، یہ پیغام بھیجے کہ مستقبل انہی کیلئے ہے۔