مقبول خبریں
ن لیگ برطانیہ و یورپ کا نواز شریف،مریم نواز اور کیپٹن صفدر کی سزائیں معطل ہونے پر اظہار تشکر
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
ہم دھوپ میں بادل کی، درختوں کی طرح ہیں!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
نبوت بھی اﷲ کی عطا ہے اور صحابیت بھی، نبوت بھی ختم ہے اور صحابیت بھی: ڈاکٹر خالد محمود
برمنگھم ... اٹھارویں سالانہ عظمت صحابہ و اہل بیت کانفرنس انتہائی جوش و جذبہ کے ساتھ ختم نبوت ایجوکیشن سینٹر بورڈسلے گرین برمنگھم میں منعقد ہوئی کانفرنس کے مہمان خصوصی امام اہل سنت علامہ ڈاکٹر خالد محمود نے اپنے خطاب میں کہا کہ نبوت بھی اﷲ کی عطا ہے اور صحابیت بھی خدا کی عطا ہے نبوت بھی ختم ہے اور صحابیت بھی ختم ہے۔ کوئی اپنی مرضی سے صحابی نہیں بن سکتا صحابیت وہبی ہے کسبی نہیں۔ محنت سے آدمی عالم ڈاکٹر انجینئر محدث مسفر قطب ابدال بن سکتا ہے مگر کوئی محنت سے صحابی نہیں بن سکتا جس طرح خدا تعالیٰ کے رسول چنے ہوئے لوگ ہوتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ختم نبوت کے معنی یہ ہیں کہ آپ کے بعد کوئی نیا نبی پیدا نہیں ہوگا عیسیٰ ابن مریم قرب قیامت میں نازل ہونگے وہ نئے نبی نہیں بلکہ پہلے نبی ہیں۔ ایک نبی کیا آپۖ کی نبوت کے دوران تو ایک لاکھ چوبیس ہزار انبیاء بیت المقدس میں آپ کی امامت میں نماز پڑھ چکے ہیں۔ وفاق المدارس پاکستان کے ناظم اعلیٰ مولانا محمد حنیف جالندھری نے اپنے خطاب میں کہا کہ صحابی اس کو کہتے ہیں جس نے ایمان کی حالت میں سرکار مدینہ کا دیدار اور صحبت اختیار کی ہو۔ انہوں نے کہا کہ ایک حافظ عالم مفتی محدث مفسر بننے کے لئے کئی سال درکار ہیں مگر صحابی بننے کے لئے ایک لمحہ درکار ہیں ایسا لمحہ جس میں ایمان ہو کیونکہ بغیر ایمان کے کوئی صحابی نہیں بن کتا۔ ابوجہل اور ابو لہب پچاس سال تک آپ کی زیارت کرتے رہے مگر صحابی نہ بن سکے۔ انہوں نے کہا کہ نبوت کے بعد سب سے بڑا مقام اور مرتبہ صحابیت کا ہے پوری امت کا اس پر اجماع ہے کہ دنیا کا کوئی ولی قطب ابدال مفکر محدث ایک ادنیٰ صحابی کے دریے کو نہیں پہنچ سکتا۔ صحابہ نے کلمہ اور بیعت حضورۖ کے ہاتھ پر کی آپ نے براہ راست قرآن اور حدیث حضور اقدسۖ سے سنی۔ انہوں نے کہا کہ ماں باپ کو دیکھنا مقبول حج کا ثواب ہے خانہ کعبہ کو دیکھنا ثواب ہے قرآن کو دیکھنا بھی ثواب ہے مگر کوئی اس سے صحابی نہیں بن سکتا۔ اﷲ تعالیٰ نے صحابہ کو اپنی رضا کے سرٹیفکیٹ عطا کردیئے ہیں۔ یہ انعام اور سرٹیفکیٹ کوئی ان سے چھین نہیں سکتا۔ صحابہ پر تنقید کرنے والے صرف اپنی آخرت برباد کررہے ہیں۔ خطیب مولانا زاہد محمود قاسمی نے اپنے خطاب میں کہا کہ علماء دیو بند نے ہمیشہ دلیل کے ساتھ ہر باطل نظریہ کا ڈٹ کر مقابلہ کیا ہے صحابہ کے بغیر اسلام ادھورا ہے صحابہ ہمارے امام اور مقتدا ہیں اہل بیت بھی ہماری آنکھوں کا تارا ہیں۔ انہوں نے کہا کہ صحابہ کا انتخاب خدا نے خود کیا ہے جس طرح کوئی نبی خود نہیں بن سکتا اسی طرح کوئی صحابی بھی خود نہیں بن کتا۔ خدا تعالیٰ نے حضورۖ کے صحابہ کے دل کا امتحان لیا جس میں تمام صحابہ کامیاب اور کامران ہوئے۔ انہوں نے کہا کہ صحابہ کی عزت و ناموس کا پہرہ دیتے رہیں گے۔ مولانا عطاء اﷲ خان نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ارکان اسلام میں سے دو ارکان ایسے ہیں جو امام کے بغیر سرانجام نہیں دیئے جاسکتے ایک نماز اور دوسرا حج حضور اقدس نے حج جیسی عظیم عبادت کے لئے حضرت ابوبکر صدیق کو امام الحج بنا کر بھیجا اسی طرح جب آپ بیمار تھے تو آپۖ نے لوگوں کو حکم دیا کہ جائو ابوبکر کو کہو لوگوں کو نماز پڑھائیں آپ کی وفات کے بعد امت نے آپ کو خلیفہ رسول بنا دیا پہلے خلیفہ حضرت ابوبکر صدیق ہیں۔ مولانا نور الاسلام نے اپنے خطاب میں کہا کہ صحابہ کرام سے عناد اور بغض رکھنے والے کا آپۖ نے جنازہ پڑھنے سے انکار کردیا تھا صحابہ کی توہین انسان کو ایمان سے خارج کردیتی ہے۔ دین اسلام کے لئے صحابہ کرام نے جو قربانیاں دی ہیں اس کی نظیر نہیں ملتی صحابہ کی اطاعت اور اتباع کا حکم خود رسالت مآبۖ نے دیا ہے۔ مولانا اکرام الحق خیری نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ علماء حق علماء دیو بند نے عقیدہ توحید ہوعقیدہ ختم نبوت ہو یا تحفظ ناموس صحابہ کو سب کا ڈٹ کر تحفظ کیا ہے کسی کو عقیدہ ختم نبوت اور ناموس رسالت پر اور ناموس صحابہ پر ڈاکہ ڈالنے کی اجازت نہیں دیں گے۔ مولانا فیض الحق نے انگریزی خطاب میں صحابہ کرام کو زبردست الفاظ مین خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا کہ آج ہم صحابہ کرام کی وجہ سے مسلمان ہیں یہ ان کی بے مثال قربانیوں کا ثمر ہے۔ مولانا محمد عمیر نے اپنے خطاب میں کہا کہ صحابہ پر تنقید کرنے والے دراصل رسالت مآب پر اعتراض کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تمام کے تمام صحابہ جنتی ہیں۔ مولانا امداد الحق نعمانی نے اپنے خطاب میں کہا کہ صحابہ کی عزت و ناموس کے لئے ہر قربانی دینے کے لئے تیار ہیں کسی کو اصحاب رسولۖ کی توہین کی اجازت نہیں دیں گے صحابہ و اہل بیت ہماری آنکھوں کا تارا ہیں۔ انہوں نے برطانیہ بھر سے آئے ہوئے حاضرین کا شکریہ ادا کیا اور امید ظاہر کی کہ وہ ہر سال تجدید عہد کے لئے اس کانفرنس کو کامیاب بناتے رہیں گے۔ کانفرنس میں قاری تصور الحق ڈاکٹر اختر الزمان غوری مولانا رضا الحق سیاکھوی قاری اظہار احمد مولانا ارشد محمود مولانا عمران الحق مولانا سید غضنفر الرحمن قاری ظہیر احمد قاری شاہ حسین مولانا محمد لقمان مولانا جمال بادشاہ مولانا امداد اﷲ قاسمی مولانا محمد خورشید مولانا عثمان ایوب مولانا عثمان نعمانی مسعود عثمانی محمود نعمانی ہذیفہ عمران الحق حافظ محمد آصف مولانا آفتاب احمد مولانا شاہد احمد مولانا محمد یونس حکیم محفوظ الرحمن مولوی لیاقت گورسی قاری نذیر احمدطارق محمود توقیر الرحمن چوہان نے شرکت کی۔ کانفرنس کا آغاز تلاوت کلام پاک ے ہوا حافظ علی ایوب نے تلاوت کلام پاک کی سعادت حاصل کی۔ حمد باری تعالیٰ اور نعت قاری آصف رشیدی قاری ابرار حسین شاہ نے پیش کی۔ نظامت کے فرائض مولانا ضیاء المحسن طیب مولانا محمد قاسم اور مولانا طارق مسعود نے ادا کئے۔ کانفرنس کی صدارت مولانا امداد الحسن نعمانی نے کی۔