مقبول خبریں
کونسلر شکیل احمد تیسری بار لیبر پارٹی کی طرف سے مئی 2020ء کے لئے امیدوار نامزد
کشمیر کی حیثیت میں یکطرفہ بھارتی تبدیلی جنوبی ایشیا میں خطرناک بگاڑکا باعث ہوگی
پاک سر زمین پارٹی کے مرکزی جوائنٹ سیکرٹری محمد رضا کی زیر صدارت عہدیداران و کارکنان کا اجلاس
برطانوی شاہی جوڑے کی پاکستان میں زبردست پذیرائی، وزیر اعظم اور صدر مملکت سے ملاقاتیں
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
حلقہ ِ ارباب ِ ذوق کے ادبی پروگرام میں پاکستانیوں اور کشمیری کونسلرز کی بڑی تعداد میں شرکت
پارک ویو کمیونٹی سنٹر شہیر واٹر میں ہمنوا یو کے کے زیرِ اہتمام یوم آزادی پاکستان تقریب کا انعقاد
پروفیٹک گفٹس ویڈنگ اینڈ ایونٹس آرگنائزر کے زیر اہتمام ایشین ویڈنگ اینڈ پلانرز ایونٹ کا انعقاد
میرے تمام خواب نظاروں سے جل گئے
پکچرگیلری
Advertisement
پیپلزپارٹی نوٹنگھم کے سابق صدر چوہدری علی شان پی پی پی برطانیہ کے نائب صدر منتخب
نوٹنگھم :پیپلزپارٹی نوٹنگھم کے سابق صدر اور مرکزی رہنما چودھری علی شان کو پیپلز پارٹی برطانیہ کا نائب صدر منتخب کرلیا گیا ہے ان کا نوٹیفیکیشن پارٹی کے سیکرٹری جنرل کونسلر اظہر بڑالوی نے صدر محسن باری کی مشاورت اور ہدایت سے جاری کیا ہے چوھدری علی شان ذوالفقار علی بھٹو کے دیرینہ نظریاتی رینما ہیں جو ہر دور میں پیپلزپارٹی کی مرکزی قیادت کی ہدایت اور گاہیڈ لائن کے تحت پارٹی کا ضابطہ اخلاق فالو کرتے چلے آرہے ہیں چوھدری علی شان نے ناہب صدر کا نوٹیفیکیشن جاری ہونے کے بعد مرکزی قیادت کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ کوشش کریں گے کہ پارٹی کو متحد کرنے کے لئے اپنا بھرپور کردار ادا کریں اور قیادت کی توقعات پر پورا اتریں انہوں نے چیرمین بلاول بھٹو اور پیپلزپارٹی کے مرکزی رہنما چودھری ریاض اور فریال تالپور کی قیادت پر بھرپور اپنے اعتماد کا اظہار کیا اور کہا کہ پیپلز پارٹی عوام کی جماعت ہے اور ہمیشہ جمہوریت پر یقین رکھتی ہے اور عوام کی دوبارہ حکومت 2018 کے الیکشن کے بعد پیپلزپارٹی بحال کرے گی انہوں نے کہا کہ پاکستان میں خوشحالی لانے کی دعویدار جماعت ن لیگ نے معیشت کو تباہی کے دھانے پر لاکر چھوڑ دیا ہے دوسو عرب روپے کے قرضوں میں پاکستان ڈوب چکا ہے سابق نااہل وزیراعظم میاں محمد نوازشریف اداروں کو تباہ کرنے کے درپے ہیں عدلیہ اور پاک افواج پر لاو لشکر سمیت مسلسل حملہ آور ہیں یہ کتنے افسوس کی بات ہے کہ ہمارے ملک پر بین الاقوامی سطح پر دباؤ ہے معیشت خراب اور داخلی اور خارجی آمور پر ملک کو چیلجچز کا سامنا ہے لیکن نوازشریف کی ترجیحات میں ملک و قوم کا مفاد شامل نہیں ہے بلکہ وہ پانامہ سے اقامہ اورمجھے کیوں نکالا جیسے بیانات سے باہر نہیں نکل سکتے ان کو سید یوسف رضا گیلانی مثال اور پیپلزپارٹی کے کردار سے سیکھنے کی ضرورت ہے کہ جب منتخب وزیراعظم سید یوسف رضا گیلانی کو نااہل قرار دیا گیا تھا تو وہ گھر چلے گئے تھے انہوں نے ادارے توڑنے اور ملک کے خلاف کوئی سازش نہیں کی تھی۔