مقبول خبریں
مانچسٹر ایرینا میں خود کش حملہ میں جاں بحق ہونیوالوں کی یا دمیں دعائیہ تقریب منعقد کی جائیگی
اسلامک ریلیف رنگ و نسل اور مذہب سے بالاتر ہوکرمشن کی جانب گامزن ہے:مقررین
مسجد دارالمنور گمکول شریف راچڈیل میں شب برات پر روحانی محفل کا انعقاد
بھارتی فوج کی ورکنگ باؤنڈری پرفائرنگ، خاتون اور 3 بچے شہید،10 زخمی
نئی دہلی: انتہا پسندوں نے کشمیری خواتین پر لاٹھیاں اور ڈنڈے برسا دیئے
پیپلزپارٹی نوٹنگھم کے سابق صدر چوہدری علی شان پی پی پی برطانیہ کے نائب صدر منتخب
پیپلزپارٹی ہی آئندہ انتخابات میں چاروں صوبوں میں اکثریت حاصل کریگی:میاں سلیم
قائد تحریک امان اللہ خان کی دوسری برسی، جموں کشمیر لبریشن فرنٹ کے رہنمائوں کا خراج عقیدت
اولڈ مین کی لالٹین
پکچرگیلری
Advertisement
بیرسٹر سلطان نے مڈ لینڈ میں بھی پی ٹی آئی کشمیر کی رکنیت سازی کا آغاز کر دیا
برمنگھم:آزاد کشمیر کے سابق وزیر اعظم و پی ٹی آئی کشمیر کے صدر بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے کہا ہے کہ اوورسیز کشمیری و پاکستانی اس لئے پی ٹی آئی کے ساتھ ہیں کیونکہ ہم ایک طرف مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے کوشاں ہیں اور دوسری طرف کرپشن اور تعصب کی سیاست کے خاتمے کی جدو جہد کر رہے ہیں،بیرون ملک چونکہ میڈیا کی وجہ سے لوگوں میں شعور ہے اب جبکہ پی ٹی آئی کشمیر نے برطانیہ میں بھی ممبر شپ کا آغاز ہو چکا ہے اور ایسے لگتا ہے کہ برطانیہ کے کشمیری پی ٹی آئی کشمیر کے پلیٹ فارم سے مسئلہ کشمیر کو آگے بڑھانا چاہتے ہیں اور عمران خان کے ویژن کو لے کر آگے بڑھنا چاہتے ہیں،ان خیالات کا اظہار انہوں نے پی ٹی آئی کشمیر کے زیر اہتمام مڈ لینڈ میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا،اس موقع پر بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے مڈ لینڈ میں بھی پی ٹی آئی کشمیر کی رکنیت سازی کا آغاز کیا،بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے کہا کہ اب چونکہ مڈ لینڈ میں رکنیت سازی کا آغاز ہو گیا ہے اور برطانیہ میں10مئی کو پی ٹی آئی کشمیر کے انٹرا پارٹی الیکشن ہوں گے اور اس میں تمام عہدیدار منتخب کئے جائیں گے،انہوں نے کہا کہ آج میں برسلز جا رہا ہوں وہاں پر یورپین پارلیمنٹ میں خطاب کے علاوہ میں یورپی یونین میں اعلیٰ سطحی ملاقاتیں بھی کروں گا،اسی طرح میں22مارچ کو جنیوا میں احتجاجی مظاہرے کی قیادت کروں گا اور اقوام متحدہ کے کمیشن برائے انسانی حقوق کے اعلیٰ عہدیداروں سے ملاقاتیں کر کے انٹر نیشنل کمیونٹی کی توجہ مسئلہ کشمیر،مقبوضہ کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی پامالی اور بھارت کی طرف سے آئے روز سیز فائر لائن کی خلاف ورزیوں پر مبذول کرائوں گا۔