مقبول خبریں
یورپی پارلیمنٹ کی انسانی حقوق کمیٹی کا مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر ہیئرنگ کا فیصلہ
بیسٹ وے گروپ کے سربراہ سرانور پرویز کی جانب سے کمیونٹی رہنمائوں کے اعزاز میں استقبالیہ
نبوت بھی اﷲ کی عطا ہے اور صحابیت بھی، نبوت بھی ختم ہے اور صحابیت بھی: ڈاکٹر خالد محمود
ملک دشمن عناصر دہشتگردی کے ذریعے پاکستان میں الیکشن سبوتاژ کرنا چاہتے ہیں:عمران خان
مقبوضہ کشمیر :بھارتی فوج نے نوجوان کا سر تن سے جدا کر دیا ،احتجاج،جھڑپیں
شیر خدا نے نبی پاک کی آواز پر لبیک کہہ کر اسلام سے محبت اور وفا کی عمدہ مثال قائم کی
پیپلزپارٹی ہی آئندہ انتخابات میں چاروں صوبوں میں اکثریت حاصل کریگی:میاں سلیم
مسئلہ کشمیر پرقوم کا نکتہ نظر اور قربانیاں رنگ لا رہی ہیں:جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت
نیا موسم تمہارا منتظر ہے۔۔۔۔۔۔۔۔
پکچرگیلری
Advertisement
آزادکشمیر حکومت لوگوں کے جان و مال کے تحفظ میں مکمل ناکام ہو چکی: ڈاکٹر مسفر حسن
برنلے:آزادکشمیر حکومت لوگوں کے جان و مال کے تحفظ میں مکمل طور پر ناکام ہو چکی ہے،لائن آف کنٹرول پر بسنے والے لوگوں کا مسلسل فائرنگ کی وجہ سے کوئی پرسان حال نہیں،صدر آزاد کشمیر سردار مسعود آئے روز دعوتیں کھانے برطانیہ و یورپ پہنچ جاتے ہیں، جموں کشمیر لبریشن لیگ برطانیہ و یورپ کے صدر ڈاکٹر مسفر حسن نے گزشتہ کئی ماہ سے جاری گولہ باری اور فائرنگ جس نے لائن آف کنٹرول پر بسنے والے لوگوں کی زندگیاں اجیرن کر رکھی ہیں پر شدید تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس فائرنگ کے نتیجے میں بے شمار لوگ موت کے منہ میں جا چکے،بے شمار زخمی اور معذور ہو چکے ہیں لیکن ان لوگوں کی مشکلات کے ازالے کیلئے حکومت آزاد کشمیر نے کوئی اقدام نہیں کئے،متاثرہ علاقوں میں علاج کو کوئی معقول سہولت میسر نہیں،زخمیوں کو بروقت ہسپتال پہنچانے کا کوئی انتظام موجود نہیں اور حکومتی ذمہ دار اور سرکاری ملازمین اسلام آباد میں موج کر رہے ہیں،انہوں نے کہا کہ مشکل میں گھرے عوام سوشل میڈیا کے ذریعے دنیا میں آباد کشمیریوں سے مدد کیلئے پکار رہے ہیں جبکہ صدر آزاد کشمیر ہر دوسرے روز برطانیہ و یورپ میں دعوتیں کھانے آ جاتے ہیں اور انکے ان بے مقصد دوروں سے کشمیری عوام یا انکی تحریک کو کسی قسم کا کوئی فائدہ ہوتا دکھائی نہیں دیتا انہوں نے کہا کہ برطانوی اراکین پارلیمنٹ ہم سے یہ سوال پوچھتے ہیں کہ صدر آزاد کشمیر ہمیں کون سی ایسی بات بتانے آئے ہیں جسکا ہمیں علم نہیں کیونکہ برطانوی کشمیری انہیں ہر معاملے سے آگاہ رکھتے ہیں تو ہمارے پاس ان سوالات کا کوئی جواب نہیں ہوتا انہوں نے کہا کہ صدر آزاد کشمیر کے ان بے مقصد دوروں پر اٹھنے والے اخراجات سے کنٹرول لائن پر متاثرہ لوگوں کو علاج اور ایمبو لینس کی سہولیات کم از کم مہیا کی جا سکتی ہیں،انہوں نے کہا کہ حکومت آزاد کشمیر کے نمائندوں کو اپنے عوام کی فلاح و بہبود پر توجہ دینی چاہئے اس سے قبل کے لوگ مایوس ہو کر انتہائی اقدام اٹھانے پر مجبور ہو جائیں۔خصوصی رپورٹ:فیاض بشیر