مقبول خبریں
مانچسٹر ایرینا میں خود کش حملہ میں جاں بحق ہونیوالوں کی یا دمیں دعائیہ تقریب منعقد کی جائیگی
اسلامک ریلیف رنگ و نسل اور مذہب سے بالاتر ہوکرمشن کی جانب گامزن ہے:مقررین
مسجد دارالمنور گمکول شریف راچڈیل میں شب برات پر روحانی محفل کا انعقاد
بھارتی فوج کی ورکنگ باؤنڈری پرفائرنگ، خاتون اور 3 بچے شہید،10 زخمی
نئی دہلی: انتہا پسندوں نے کشمیری خواتین پر لاٹھیاں اور ڈنڈے برسا دیئے
پیپلزپارٹی نوٹنگھم کے سابق صدر چوہدری علی شان پی پی پی برطانیہ کے نائب صدر منتخب
پیپلزپارٹی ہی آئندہ انتخابات میں چاروں صوبوں میں اکثریت حاصل کریگی:میاں سلیم
قائد تحریک امان اللہ خان کی دوسری برسی، جموں کشمیر لبریشن فرنٹ کے رہنمائوں کا خراج عقیدت
اولڈ مین کی لالٹین
پکچرگیلری
Advertisement
پاکستانی نژاد ذوہیب صدیقی کو ہیروئن سمگل کرنے پر 8 سال قید کی سزا
مانچسٹر: پاکستانی نژادذوہیب صدیقی جو کہ نجی ایئرلائن میں ملازم تھا کو مانچسٹر کراؤن کورٹ نے ہیروئن سمگل کرنے پر 8 سال کے لئے جیل بھیج دیا۔کراؤن کورٹ مانچسٹر نے امارات ائیر لائن کے ملازم ذوہیب صدیقی کو ایک لاکھ پاؤنڈز مالیت کی ہیروئن سمگل کرنے کے جرم ثابت ہونے پر 8 سال کی سزا سنا دی۔ پاکستانی زوہیب صدیقی جو کہ امارات ائیر لائن کا ملازم تھا۔ یو کے بارڈر فورس اور نیشنل کرائم ایجنسی نے دوبئی سے امارات ائیر لائن 380 اے مانچسٹر ائیر پورٹ پہنچنے پر زوہیب صدیقی کو ہینڈ بیگ سمیت گرفتار کرکے تفتیش شروع کردی۔دوران تفتیشذوہیب صدیقی نے اقبال جرم کرتے ہوئے بتایا کہ وہ یہ ہیروئن اولڈھم لانا چاہتا تھا۔ آپریشن مینجر مسٹر جون ہیوجیز نیشنل کرائم ایجنسی نے بتایا کہ زوہیب صدیقی امارات ائیر لائن کے ملازم کی مراعات یافتہ رسائی کیوجہ سے ایئر پورٹس کو کرائم کے لئے استعمال کرتا رہا۔ مسٹر پاؤل ایئر لائی ڈپٹی ڈائریکٹر بارڈر فورس نارتھ نے کہا کہ ہمارے ایکسپرٹ بارڈر فورس آفیسرز اور اسپیشل ٹرینڈ کتوں کیوجہ سے اسمگلرذوہیب صدیقی کی گرفتاری عمل میں آئی ہے۔انہی کیوجہ سے ہماری گلیوں،سڑکوں،بازاروں،اور شہروں میں یہ زہر پھیلنے سے روکا گیا ہے۔ یو کے بارڈر فورس اپنے انفورسمنٹ پارٹنرز NCA کیساتھ مل کر ایسے کریمینلز کو کبھی بھی اپنے ملک میں داخل نہیں ہونے دیں گے ۔انکو پکڑ کے انصاف کے کٹہرے میں لاکر سزائیں دلوائیں گے تاکہ کوئی بھی سمگلر آئندہ یہ جرآت نہ کر سکے۔ اس واقعے کے بعد ایئر پورٹ سیکورٹی فورسز کو مزید الرٹ کر دیا گیا ہے۔خصوصی رپورٹ:فیاض بشیر