مقبول خبریں
برطانوی معاشرے میں رہتے ہوئے تمام تہوار میں حصہ لینا چاہئے: افضل خان
سپینش شہریت کے حامل سائنسدانوں کی قدرتی آفات پر ریسرچ
پاکستان میں فٹبال کے فروغ کیلئے انٹرنیشنل سوکا فیڈریشن کا قیام، ٹرنک والا فیملی کو خراج تحسین
چیئر مین پی ٹی آئی عمران خان تیسری بار دلہا بن گئے، بشریٰ بی بی سے نکاح ہو گیا
بھارتی ریاستی دہشتگردی کیخلاف مقبوضہ کشمیر میں ہڑتال، تعلیمی ادارے بند
کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی پامالیوں کو رکوانے کے سلسلہ میں پروگرام کا انعقاد
اوورسیز پاکستانیز ویلفیر کونسل کے زیراہتمام یوم یکجہتی کشمیر پر کار ریلی کا انعقاد
راجہ نجابت اور ان کی ٹیم کامسئلہ کشمیرپر متحرک کردار قابل ستائش ہے: سٹوورٹ اینڈریو
کیا یورپ ٹوٹ رہا ہے ؟
پکچرگیلری
Advertisement
پاکستانی نژاد ذوہیب صدیقی کو ہیروئن سمگل کرنے پر 8 سال قید کی سزا
مانچسٹر: پاکستانی نژادذوہیب صدیقی جو کہ نجی ایئرلائن میں ملازم تھا کو مانچسٹر کراؤن کورٹ نے ہیروئن سمگل کرنے پر 8 سال کے لئے جیل بھیج دیا۔کراؤن کورٹ مانچسٹر نے امارات ائیر لائن کے ملازم ذوہیب صدیقی کو ایک لاکھ پاؤنڈز مالیت کی ہیروئن سمگل کرنے کے جرم ثابت ہونے پر 8 سال کی سزا سنا دی۔ پاکستانی زوہیب صدیقی جو کہ امارات ائیر لائن کا ملازم تھا۔ یو کے بارڈر فورس اور نیشنل کرائم ایجنسی نے دوبئی سے امارات ائیر لائن 380 اے مانچسٹر ائیر پورٹ پہنچنے پر زوہیب صدیقی کو ہینڈ بیگ سمیت گرفتار کرکے تفتیش شروع کردی۔دوران تفتیشذوہیب صدیقی نے اقبال جرم کرتے ہوئے بتایا کہ وہ یہ ہیروئن اولڈھم لانا چاہتا تھا۔ آپریشن مینجر مسٹر جون ہیوجیز نیشنل کرائم ایجنسی نے بتایا کہ زوہیب صدیقی امارات ائیر لائن کے ملازم کی مراعات یافتہ رسائی کیوجہ سے ایئر پورٹس کو کرائم کے لئے استعمال کرتا رہا۔ مسٹر پاؤل ایئر لائی ڈپٹی ڈائریکٹر بارڈر فورس نارتھ نے کہا کہ ہمارے ایکسپرٹ بارڈر فورس آفیسرز اور اسپیشل ٹرینڈ کتوں کیوجہ سے اسمگلرذوہیب صدیقی کی گرفتاری عمل میں آئی ہے۔انہی کیوجہ سے ہماری گلیوں،سڑکوں،بازاروں،اور شہروں میں یہ زہر پھیلنے سے روکا گیا ہے۔ یو کے بارڈر فورس اپنے انفورسمنٹ پارٹنرز NCA کیساتھ مل کر ایسے کریمینلز کو کبھی بھی اپنے ملک میں داخل نہیں ہونے دیں گے ۔انکو پکڑ کے انصاف کے کٹہرے میں لاکر سزائیں دلوائیں گے تاکہ کوئی بھی سمگلر آئندہ یہ جرآت نہ کر سکے۔ اس واقعے کے بعد ایئر پورٹ سیکورٹی فورسز کو مزید الرٹ کر دیا گیا ہے۔خصوصی رپورٹ:فیاض بشیر