مقبول خبریں
برطانوی معاشرے میں رہتے ہوئے تمام تہوار میں حصہ لینا چاہئے: افضل خان
سپینش شہریت کے حامل سائنسدانوں کی قدرتی آفات پر ریسرچ
پاکستان میں فٹبال کے فروغ کیلئے انٹرنیشنل سوکا فیڈریشن کا قیام، ٹرنک والا فیملی کو خراج تحسین
چیئر مین پی ٹی آئی عمران خان تیسری بار دلہا بن گئے، بشریٰ بی بی سے نکاح ہو گیا
بھارتی ریاستی دہشتگردی کیخلاف مقبوضہ کشمیر میں ہڑتال، تعلیمی ادارے بند
کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی پامالیوں کو رکوانے کے سلسلہ میں پروگرام کا انعقاد
اوورسیز پاکستانیز ویلفیر کونسل کے زیراہتمام یوم یکجہتی کشمیر پر کار ریلی کا انعقاد
راجہ نجابت اور ان کی ٹیم کامسئلہ کشمیرپر متحرک کردار قابل ستائش ہے: سٹوورٹ اینڈریو
کیا یورپ ٹوٹ رہا ہے ؟
پکچرگیلری
Advertisement
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹرنیشنل کے زیر اہتمام آل پارٹیز کشمیر کانفرنس کا انعقاد
بریڈ فورڈ :یورپی پارلیمنٹ میں مسئلہ کشمیر پر مفصل بحث کے لئے قرارداد 31 جنوری 2018کو برسلز میں پیش کی جائے گی جس کے لئے تحریک حق خود ارادیت انٹرنیشنل کا وفد راجہ نجابت حسین کی قیادت میں برسلز جائے گا جب کہ یورپی پارلیمنٹ میں فرینڈز آف کشمیر کے شریک چیئرمین اور لیبر پارٹی کے گروپ لیڈر رچرڈ کوربٹ (ایم ای پی )، کنزرویٹو پارٹی کی وائس چیئرمین اور فرینڈز آف کشمیر کی شریک چیئر پرسن انتھیا میکناٹائر (ایم ای پی )، یورپی پارلیمنٹ میں فارن آفئیرز اور انسانی حقوق کے لیبر ممبر پارلیمنٹ واجد خان، کنزرویٹو پارٹی کے فارن آفیئرز اور انسانی حقوق کے ممبر پارلیمنٹ امجد بشیر (ایم ای پی ) اور جولی وارڈ (ایم ای پی)، ممبر کلچر ، یوتھ اور خواتین کمیٹی نے اس قرارداد کی حمایت کرتے ہوئے اپنے اپنے گروپوں اور پارلیمنٹ میں مقبوضہ کشمیر کے عوام اور برٹش کشمیریوں کی نمائندگی کرتے ہوئے مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کے چارٹر اور عرصہ ستر سال سے زیر التوا اس انسانی مسئلے کے حل کے لئے حمایت حاصل کریں گے ۔ برطانوی ممبران یورپین پارلیمنٹ BREXIT سے پہلے اپنی سیاسی ، اخلاقی او رسفارتی سرگرمیوں میں کشمیریوں سے تعاون میں تیزی لائیں اور سٹراسبرگ میں انسانی حقوق پر بحث کے لئے مسئلہ کشمیر کو ایجینڈے میں شامل کروائیں۔ یورپی پارلیمنٹ میں جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹرنیشنل کا وفد نہ صرف قرارداد کی منظوری کے لئے لابی کرے گا بلکہ برطانیہ کے یورپ سے علیحدہ ہونے کی صورت میں دیگر 27 ممالک کے ارکان یورپی پارلیمنٹ کو فرینڈز آف کشمیر کا ممبر بنوانے کے لئے بھی مختلف گروپوں سے ملاقاتیں کرے گا جس کے لئے واجد خان (ایم ای پی )، امجد بشیر (ایم ای پی )، جان پراکٹر (ایم ای پی ) کے علاوہ دونوں شریک چیئر پرسنز نے بھی تحریک کے ساتھ مل کر کوششیں تیز کرنے کا عزم کیا ہے ۔ اس موقع پر 2 فروری 2018 سے لے کر 11 فروری تک برطانیہ بھر میں ہفتہ یکجہتی کشمیر کی تقریبات کی بھی منظوری دی گئی جس کے لئے کانفرنس میں شریک مندوبین نے تائید کی۔ ان اقدامات کا فیصلہ جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹرنیشنل کے زیر اہتمام مقامی ریسٹورنٹ میں منعقد آل پارٹیز کشمیر کانفرنس میں کیا گیا جس کی صدارت تحریک کے بانی چیئر مین راجہ نجابت حسین نے کی جب کہ مہمان خصوصی رچرڈ کوربٹ (ایم ای پی) تھے اور اس موقع پر برطانوی پارلیمنٹ میں قائم آل پارٹیز کشمیر گروپ کے وائس چیئرمین شیڈو منسٹر بیرسٹر عمران حسین (ایم پی )،جولی وارڈ (ایم ای پی )، لیبر پارٹی کی نو منتخب ممبر نیشنل ایگز یکٹو کمیٹی کونسلر یاسمین ڈار ، برٹش مسلم وویمن فورم برطانیہ کی چیئر پرسن صبحیہ شہزاد، پاکستانی فزیشنز اینڈ سرجنز برطانیہ کے صدر ڈاکٹر غلا م عباس ، برٹش پاکستانی اور کشمیری کونسلر فورم نارتھ آف انگلینڈ کے چیئر مین کونسلر عاصم رشید ، مسلم لیگ آزاد کشمیر کے مرکزی راہنما چوہدری جاوید قادر ، نائب صدر برطانیہ چوہدری ساجد پنوں ، مسلم کانفرنس برطانیہ کے صدر چوہدری محمد بشیر رٹوی ، حاجی محمد نجیب ، تحریک حق خود ارادیت انٹرنیشنل برطانیہ کے وائس چیئرمین امجد حسین مغل ، یارکشائر کے چیئرمین چوہدری محمد اکرم ، مانچسٹر کے سابق لارڈ میئر کونسلر نعیم الحسن ، بریڈ فورڈ کے نامزد لارڈ میئر کنزرویٹو کونسلر ظفر علی اعوان ، سابق میئر آف مکنتھورپ سردار اسحاق جاوید، سابق میئر آف ہالی فیکس چوہدری ارشد محمود ، کونسلر رضوانہ جمیل ، کونسلر محمد شفیق ، کونسلر حسن علی ، کونسلر ظفر اقبال ، کونسلر محمد رفیق ، کونسلر اصغر خان قریشی ، پروفیسر ڈاکٹر رزاق راج، پروفیسر نذیرتبسم ، سردار عابد حسین ، کامران حسین اور دیگر راہنمائوں نے کانفرنس میں شریک ہو کر مسئلہ کشمیر پر تحریکی سرگرمیوں میں تعاون اور اپنی اپنی طرف سے منظم انداز میں مہم کو کامیاب کرنے کا عزم کیا ۔ مہمان خصوصی رچرڈکوربٹ نے کہا کہ بعض لوگ اگر یہ سمجھتے ہیں کہ مسئلہ کشمیر پر کوئی پراگرس نہیں ہوئی تو وہ خام خیالی کا شکار ہیں۔ برطانیہ اور یورپ کے ہر سیاسی راہنما، ممبران پارلیمنٹ اور انسانی حقوق کی تنظیموں تک جس انداز میں تحریکی عہدیداروں نے چلایا اس پر میں اور دیگر کشمیر دوست قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں اور جب تک ہم یورپی پارلیمنٹ میں ہر سطح پر مسئلہ کشمیر پر کشمیریوں کی آواز بن کر بولتے رہیں گے اور راجہ نجابت حسین کی کاوشوں کو ایسے انداز میں لے کر آگے بڑھیں گے جس سے مقبوضہ کشمیر کے عوام کی تکلیفوں کا ازالہ ہو سکے۔ انہوں نے کہا کہ وہ اپنے یورپی گروپ جس کے 190 سے زائد ممبران ہیں کشمیریوں کے لئے بھرپور لابی کر یں گے اور تمام کشمیری قوم کو یقین دلاتے ہیں کہ یورپی پارلیمنٹ میں بھی ان کے دوستوں اور ہمدردوں کی بہت بڑی تعداد موجود ہے جو انکی آزادی تک خاموش نہیں بیٹھے گی ۔ نارتھ ویسٹ سے لیبر رکن یورپی پارلیمنٹ جولی وارڈ نے اپنے خطاب میں کہا کہ وہ تین کمیٹیوں کی ممبر ہیں اور ان کمیٹیوں کے اندر مسئلہ کشمیر پیش کرنے کے ساتھ آزاد جموں وکشمیر اور پاکستان کا دورہ کرنے کے علاوہ گزشتہ دو سال سے جینوا میں انسانی حقوق کے کمیشن میں بھی کشمیریوں کی دو بار نمائندگی کر چکی ہیںاور آئیندہ بھی جائیں گی جب کہ یورپی پارلیمنٹ کے نمائندے کی حیثیت سے بہت جلد نیو یارک کا بھی دورہ کریں گی اور ہر جگہ مسئلہ کشمیر پر ہمدردوں اور اضافہ کروانے کے لئے جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹرنیشنل کے عہدیداروں سے تعاون کریں گی۔ برطانوی پارلیمنٹ میں قائم کشمیر گروپ کے وائس چیئرمین بیرسٹر عمران حسین نے جہاں تحریکی عہدیداروں کی کارکردگی کو سراہا وہاں کشمیر گروپ کی طرف سے گزشتہ سال بحث، انکوائری اور برطانوی حکومت کے ساتھ ساتھ لیبر پارٹی کی طرف سے مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے انتخابی منشور کا حصہ بنانے کو بھی تسلی بخش قرار دیا اور کہا کہ تحریکی عہدیدار بھی کشمیر پر پارلیمنٹ میں جو تقریبات کرتے ہیں ان میں وہ اور انکے دیگر ساتھی ہمیشہ تعاون کرتے ہیں اور بہت جلد جہاں اگلی بحث کے لئے کوشش کی جائے گی وہاں انکوائری کا دوسرا مرحلہ بھی شروع کرنے کے لئے کشمیر گروپ کا وفد ریاست کے دونوں اطراف کا دورہ کرے گا ۔ اس موقع پر کونسلر یاسمین ڈار نے کہا کہ آج وہ لیبر پارٹی کی نیشنل ایگزیکٹو کی ممبر منتخب ہوئی ہیں تو اس میں جہاں لیبر پارٹی کا کردار ہے وہاں جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹرنیشنل کے بہن بھائیوں نے میرے لئے سیاست میں جگہ بنوانے میں کلیدی کردارا دا کیا ہے اور وہ اس پوزیشن میں بھی مسئلہ کشمیر کو پارٹی کے اندر ، برطانوی اوریورپی پارلیمنٹ اور شیڈو فارن آفیئرز ٹیم سے مل کر اپنی جد و جہد جاری رکھیں گی ۔ کونسلر عاصم رشید نے کہا کہ جہاں ہمارا کونسلرز گروپ مقامی اور قومی مسائل کے حل کے لئے کوششیں کرے گا وہاں ہم اپنے اپنے ممبران پارلیمنٹ کو مسئلہ کشمیر پر بھی متحرک کرین گے ۔ ڈاکٹر غلا م عباس نے اپنے خطاب میں کہا کہ وہ اپنے پروفیشنل حضرات کے زریعے جہاں فلاحی منصوبوں میں معاونت کریں گے وہاں برطانیہ میں بسنے والے گیارہ ہزار سے زائد ڈاکٹروں کو مسئلہ کشمیر کی سرگرمیوں میں بھی متحرک کریں گے۔ بریڈ فورڈ کے کنزرویٹو پارٹی کی طرف سے نامزد لارڈ میئر کونسلر ظفر علی اعوان نے کہا کہ وہ عرصہ دراز سے مسئلہ کشمیر پر متحرک ہیں اور کیتھلے کے تمام ممبران پارلیمنٹ کو ہمیشہ کشمیریوں کا ہمنوا بنا کر اس کا ثبوت دیا ہے اور آئیندہ بھی کشمیری عوام کے نمائیندے کی حیثیت سے کوششیں جاری رکھیں گے۔ صبیحہ خان اور راجہ نجابت حسین نے تحریکی پروگراموں سے آگاہ کیا اور حاضرین کا شکریہ ادا کیا۔خصوصی رپورٹ:فیاض بشیر