مقبول خبریں
مانچسٹر ایرینا میں خود کش حملہ میں جاں بحق ہونیوالوں کی یا دمیں دعائیہ تقریب منعقد کی جائیگی
اسلامک ریلیف رنگ و نسل اور مذہب سے بالاتر ہوکرمشن کی جانب گامزن ہے:مقررین
مسجد دارالمنور گمکول شریف راچڈیل میں شب برات پر روحانی محفل کا انعقاد
بھارتی فوج کی ورکنگ باؤنڈری پرفائرنگ، خاتون اور 3 بچے شہید،10 زخمی
نئی دہلی: انتہا پسندوں نے کشمیری خواتین پر لاٹھیاں اور ڈنڈے برسا دیئے
پیپلزپارٹی نوٹنگھم کے سابق صدر چوہدری علی شان پی پی پی برطانیہ کے نائب صدر منتخب
پیپلزپارٹی ہی آئندہ انتخابات میں چاروں صوبوں میں اکثریت حاصل کریگی:میاں سلیم
قائد تحریک امان اللہ خان کی دوسری برسی، جموں کشمیر لبریشن فرنٹ کے رہنمائوں کا خراج عقیدت
اولڈ مین کی لالٹین
پکچرگیلری
Advertisement
تعلیمی اصلاحات، ٹیچرز ٹریننگ اور سکلڈ ورکرز کی امداد کیلئے برطانیہ اورحکومت پنجاب میں معاہدہ
لندن ... حکومت پنجاب اور برٹش کونسل کے درمیان باہمی مفاہمت کی یادداشت پر دستخط کئے گئے جنکے مطابق دونوں اطراف پاکستان کے صوبہ میں تعلیمی بہتری کیلئے نئے منصوبے ترتیب دینگے دو طرفہ تعاون کے اس معاہدے کے مطابق برطانیہ پنجاب حکومت کی تعلیمی اصلاحات اور ٹیچرز ٹریننگ اور سکلڈ ورکروں مدد کرے گا۔ تقریب پاکستان ہائی کمیشن لندن میں ہوئی حکومت پنجاب کے وزیر تعلیم رانا مشہود اور برٹش کونسل کی پاکستان میں ڈایریکٹر روزمری ہل ہوسٹ نے یاداشت پر دستخط کئے اس سے پہلے پاکستان کے قائم مقام هائی کمشنر زاہد حفیظ چوہدری نے کہا کہ برطانیہ اور پاکستان کے درمیان خصوصی تعلقات پاکستان کے معرض وجود میں آنے کے بعد ہی قائم ہوگئے تھے رانا مشہود نے اس موقع پر کہا کہ تعلیم کی بہتری ہماری حکومت کی ترجیحات میں شامل ہیں گلی کوچوں اور کونے کھدروں میں چلنے والے غیر معیاری پرائیویٹ سکولوں کو حکومت ریگولیٹ کررہی ہے روزمری ہل ہوسٹ کا کہنا تھا کہ برطانوی حکومت کے لئے پاکستان میں تعلیمی اداروں میں اصلاحات اور معیاری تعلیم کا فروغ اولین ترجیح ہے اور حکومت برطانیہ خود اس کی نگرانی کرتی ہے تاکہ طلباء اس سے بھرپور فائدہ اٹھا سکیں. پاکستانی پنجاب کے وزیرتعلیم رانا مشہود احمد خان نے کہا کہ 2018 کے آخر تک پنجاب میں پانچ سے آٹھ سال عمر کا کوئی بچہ سکول سے باہر نہیں رہے گا۔ وہ پاکستان ہائی کمیشن لندن کی جانب سے ایجوکیشن ورلڈ فورم لندن میں شرکت کے لئے پاکستان سے آئے ہوئے وفد کے اعزاز میں دئیے گئے عشائیہ سے خطاب کر رہے تھے۔ دورے کا اہتمام برٹش کونسل پاکستان کی جانب سے کیا گیا۔ حکومت پنجاب اور برٹش کونسل پاکستان کے درمیان مفاہمت کی دو یادداشتوں پر دستخط کئے گئے۔ رانا مشہود اور برٹش کونسل پاکستان کی کنٹری ڈائریکٹر روزمیری ہلہورسٹ (او بی ای) نے معاہدوں پر دستخط کئے۔ مفاہمت کی ان یادداشتوں کے تحت برٹش کونسل پاکستان مہارتوں اور فزیکل ایجوکیشن کے شعبوں میں برطانوی اداروں اور محکمہ سکول تعلیم، حکومت پنجاب کے درمیان روابط پیدا کرنے اور بہترین مروجہ طریقوں کے تبادلے میں مدد دے گی۔ اس تعاون کی بدولت سکول بچوں کو روزگار کی مقامی اور بین الاقوامی منڈیوں کی ضروریات کے مطابق مہارتیں سکھانے میں مدد ملے گی۔ سکول تعلیم کے وزیر رانا مشہود احمد خان نے اپنے خطاب میں پنجاب میں کی گئی تعلیمی اصلاحات کا ایک جامع جائزہ پیش کیا جس سے صوبے میں سکول سے باہر بچوں کی تعداد میں نمایاں کمی آئی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ پنجاب روڈمیپ کے تحت تعلیمی بجٹ 450 فیصد تک بڑھا دیا گیا ہے، طلبہ کے داخلوں کی تعداد 9 ملین سے بڑھ کر 15 ملین تک پہنچ گئی ہے اور نتائج 60 فیصد سے بہتر ہو کر 78 فیصد تک ہو گئے ہیں۔ صوبائی وزیر نے مزید بتایا کہ جدید سہولیات کے حامل سکولوں کی تعداد صوبے میں 70 فیصد سے بڑھ کر 98 فیصد ہو گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نوجوانوں کو روزگار کی بین الاقوامی منڈی کی ضروریات کے مطابق مہارتوں سے لیس کرنے کے لئے سکول میں تکنیکی مہارتیں متعارف کرا رہی ہے۔ انہوں نے صوبے کے شعبہ تعلیم میں برٹش کونسل کے تعاون کو سراہا۔ رانا مشہود نے بالخصوص وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کی جانب سے تعلیم کو حکومت کے اولین ترجیحی شعبوں میں شامل کرنے کے سلسلے میں قائدانہ کردار اور وژن کو سراہا۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعلیٰ کے وژن کی بدولت شعبہ تعلیم میں معیار کے اعتبار سے نمایاں بہتری آئی ہے جس کا اعتراف بین الاقوامی جرائد اور اداروں نے کیا ہے۔ قائمقام ہائی کمشنر زاہد حفیظ چودھری نے وفد کا ہائی کمیشن میں خیرمقدم کیا۔ انہوں نے حکومت پنجاب کی جانب سے صوبے میں تعلیم کے معیارات بہتر بنانے کے سلسلے میں کی جانے والی بہترین کوششوں کو سراہا۔ زاہد حفیظ چودھری نے کہا کہ پاکستان اور برطانیہ کے درمیان باہمی دلچسپی کے تمام شعبوں میں تعلقات کو شاندار قرار ہیں اور برطانیہ پاکستان کا قابل قدر ترقیاتی پارٹنر ہے۔ (رپورٹ: عدیل خان)