مقبول خبریں
انتخابات کے بعد ن لیگ اور پیپلز پارٹی سے اتحاد نہیں ہو سکتا: چیئرمین تحریک انصاف
مسئلہ کشمیرتسلیم شدہ بین الاقوامی کیس ، جسے حل کروانا اقوام متحدہ کی ذمہ داری :راجہ فارو ق حیدر
مسئلہ کشمیر پر سیاستدانوں سے حمایت کیلئے جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت کی سرگرمیوں میں تیزی
میرے ساتھ تب تک وفاداری کی جائے جب تک راہِ حق پر ہوں، عمران خان
مقبوضہ کشمیر :پلوامہ کے علاقے میں کانگریس کے سابق رہنماء غلام نبی پٹیل قتل
پیپلزپارٹی نوٹنگھم کے سابق صدر چوہدری علی شان پی پی پی برطانیہ کے نائب صدر منتخب
سلائو کی میئر عشرت شاہ کا لاہور میں اوور سیز پاکستانیز کمیشن پنجاب کے دفاتر کا دورہ
جموں و کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کا ہنگامی آزادی ریاست جموں و کشمیر پلان
خواب جھلستے جاتے ہیں اک معصوم سی لڑکی کے
پکچرگیلری
Advertisement
مقبوضہ کشمیر میں نور ترالی کی شہادت پر ہڑتال جاری،جھڑپوں میں متعدد زخمی
سرینگر:مقبوضہ کشمیر میں ضلع پلوامہ کے علاقے سانبورہ میں بھارتی فورسز کے ہاتھوں شہید ہونے والے تین فٹ کے مجاہد نو رمحمد عرف نور ترالی کی شہادت کے تیسرے روز بھی وادی میں معمولات زندگی بحال نہ ہو سکے ، اس دوران تعزیتی ہڑتال کے باعث کاروباری مراکز،تجارتی ادارے اور بازار بند رہے جبکہ ٹریفک غائب ہونے کے باعث سڑکیں بھی سنسان رہیں ،بھارتی فورسز کے ساتھ جھڑپوں میں متعدد افراد کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں ،وادی میں ریل سروس تیسرے روز بھی معطل ،انٹرنیٹ اور موبائل سروس بحال نہ ہو سکی ۔اس دوران مختلف علاقوں میں لوگوں نے شہید کے حق میں ریلیاں اور جلوس نکالے اور بھارتی فورسز کیخلاف نعرے بازی کی ۔بھارتی فورسز نے مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے آنسو گیس اور لاٹھی چارج کا استعمال کیا جس کے نتیجے میں متعدد افراد زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں ۔ادھر کٹھ پتلی انتظامیہ نے کل جماعتی حریت کانفرنس کو سرینگر میں ایک اہم اجلاس کے انعقاد سے روک دیا۔ کشمیر میڈیاسروس کے مطابق کل جماعتی حریت کانفرنس کے چیئرمین سید علی گیلانی نے مقبوضہ علاقے کی صورتحال پر غور و خوض کیلئے حریت کی جملہ اکائیوں کا اجلاس حیدر پورہ میں اپنی رہائش گاہ پر طلب کیا تھا تاہم بھارتی پولیس نے کسی کو گھر کے اندر جانے کی اجازت نہیں دی اور اجلاس سے قبل حریت کانفرنس کے بیشتر ارکان گرفتار کر لیے ۔جبکہ مقبوضہ کشمیرمیں کٹھ پتلی انتظامیہ نے حریت فورم کے چیئرمین میر واعظ عمر فاروق کوایک مرتبہ پھر سرینگر میں اپنی رہائش گاہ میں نظر بند کر دیا ہے ۔ میر واعظ عمر فاروق فاروق کو جمعرات کو سرینگر کے علاقے خانیار میں دستگیر صاحب ؒ کی زیارت پر ایک عوامی اجتماع سے خطاب کرنا تھا تاہم قابض انتظامیہ نے انہیں گھر میں نظر بند کر کے صوفی بزرگ کے سالانہ عرس میں شرکت اور اجتماع سے خطاب سے روک دیا۔ادھر سید علی گیلانی، میر واعظ عمر فاروق اور محمد یاسین ملک پر مشتمل مشترکہ مزاحمتی قیادت نے اپنے ایک جاری بیان میں کٹھ پتلی انتظامیہ کی طرف سے بلدیاتی انتخابات کے اعلان پر سخت رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کشمیریوں سے اپیل کی ہے کہ وہ انتخابی ڈرامے کا مکمل بائیکاٹ کریں۔ دریں اثنا قابض فورسز نے سوپور کے مضافاتی علاقے کا محاصرہ کر کے سرچ آپریشن کیا اور بعد ازاں دعویٰ کیا کہ آپریشن کے دوران بھاری اسلحہ برآمد کیا گیا ہے ۔