مقبول خبریں
یو کے اسلامک مشن یوتھ ونگ لیڈز کی طرف سے عید ملن پارٹی :مسلم و نو مسلم کمیونٹیز کی شرکت
پیغام پاکستان فتویٰ دہشت گردی کیخلاف متفقہ قومی بیانیہ کا کردار ادا کرسکتا ہے: قاری صداقت علی
پیٹر برا کے سابق لارڈ میئر محمد ایوب کا پاک سر زمین پارٹی میں شمولیت کا اعلان
چیئرمین تحریک انصاف عمران خان بھی کروڑوں روپے کے اثاثوں کے مالک
محبوبہ مفتی کی حکومت ختم، صدر رام ناتھ کووند نے گورنر راج نافذ کر دیا
شیر خدا نے نبی پاک کی آواز پر لبیک کہہ کر اسلام سے محبت اور وفا کی عمدہ مثال قائم کی
پیپلزپارٹی ہی آئندہ انتخابات میں چاروں صوبوں میں اکثریت حاصل کریگی:میاں سلیم
جموں کشمیر تحریک حق خودارادیت کا نو منتخب کونسلروں میڈیا نمائندگان کے اعزاز میں افطار ڈنر
دشمنوں کے درمیان ایک کتاب
پکچرگیلری
Advertisement
20سالوں سے چھائے اندھیرے دور، ملک بجلی کی پیداوار میں خود کفیل ہوگا: شہباز شریف
لاہور:وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے کہا ہے کہ توانائی منصوبوں کی تکمیل سے 20سالوں سے چھائے اندھیرے دورہورہے ہیں اور ملک پہلی مرتبہ بجلی کی پیداوار میں خود کفیل ہوگا۔ایک وقت تھا جب بھارت سے ہمیں بجلی کی آفر آتی تھی لیکن اب وہ وقت بھی دورنہیں جب پاکستان بھارت کو اضافی بجلی فروخت کرنے کے قابل ہوگا۔توانائی بحران کے ختم ہونے سے ترقی اورخوشحالی کا نیا دور شروع ہوگا، ملک کی صنعت ،زراعت ترقی کرے گی اورہمارے سکول ،ہسپتال اورادارے روشن ہوں گے ۔ طویل عرصے کے بعد پنجاب میں تیل اورگیس کے ذخائر دریافت ہوئے ہیں یہ بڑی خوشخبری ہے جس پر ہم سب اﷲ تعالیٰ کی بارگاہ میں شکربجالاتے ہیں۔ یہ پاکستان کا اثاثہ ہیں۔ خیبر پختونخوا میں گیس کے ذخائردریافت ہوئے تو وہاں کی حکومت ہائی کورٹ سے سٹے آڈرلے آئی لیکن ہم ایسا نہیں کریں گے کیونکہ یہ وسائل پوری قوم کی امانت ہیں۔پنجاب ،سندھ،خیبرپختونخوا،بلوچستان،آزاد کشمیراورگلگت بلتستان سے ملکر پاکستان بنتا ہے اورجب یہ تمام اکائیاں ترقی کریں گی تبھی ملک ترقی کرے گا۔وزیراعلیٰ نے ا ن خیالات کا اظہار اٹک میں تیل اورگیس کے منصوبے جھنڈیال ون کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔وزیراعلیٰ نے مزید کہا کہ محنت،امانت اوردیانت کیساتھ ان وسائل سے فائدہ لیکر عام آدمی کی زندگی میں خوشحالی کاانقلاب لانا ہماری ذمہ داری ہے دفاعی لحاظ سے پاکستان مضبوط ملک ہے اوریہ نیوکلیئر طاقت ہے ،اس کیساتھ ساتھ ہمیں معاشی طورپر بھی مضبوط ہونا ہے ا ورمعیشت کو بھی ایٹمی معیشت بنانا ہے ۔ ایک ہاتھ میں نیوکلیئر طاقت اوردوسرے ہاتھ میں کشکول گدائی ہو ،یہ کسی طورپر مناسب نہیں۔کشکول گدائی ہماری قسمت نہ تھی بلکہ یہ ہمارے ا عمال کا نتیجہ ہے ۔