مقبول خبریں
جموں وکشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل خواتین کے عالمی دن کے حوالے سے تقریبات منعقد کریگی
برطانیہ میں اپنی صلاحیتیں منوانے کے جتنے مواقع ہیں کسی اور ملک میں نہیں: رحمان چشتی و دیگر
پاکستان میں فٹبال کے فروغ کیلئے انٹرنیشنل سوکا فیڈریشن کا قیام، ٹرنک والا فیملی کو خراج تحسین
وزارتِ عظمیٰ کے بعد نواز شریف مسلم لیگ ن کی صدارت سے بھی فارغ
بھارتی ریاستی دہشتگردی کیخلاف مقبوضہ کشمیر میں ہڑتال، تعلیمی ادارے بند
کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی پامالیوں کو رکوانے کے سلسلہ میں پروگرام کا انعقاد
اوورسیز پاکستانیز ویلفیر کونسل کے زیراہتمام یوم یکجہتی کشمیر پر کار ریلی کا انعقاد
راجہ نجابت اور ان کی ٹیم کامسئلہ کشمیرپر متحرک کردار قابل ستائش ہے: سٹوورٹ اینڈریو
عمران خان مارگریٹ اور میں
پکچرگیلری
Advertisement
20سالوں سے چھائے اندھیرے دور، ملک بجلی کی پیداوار میں خود کفیل ہوگا: شہباز شریف
لاہور:وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے کہا ہے کہ توانائی منصوبوں کی تکمیل سے 20سالوں سے چھائے اندھیرے دورہورہے ہیں اور ملک پہلی مرتبہ بجلی کی پیداوار میں خود کفیل ہوگا۔ایک وقت تھا جب بھارت سے ہمیں بجلی کی آفر آتی تھی لیکن اب وہ وقت بھی دورنہیں جب پاکستان بھارت کو اضافی بجلی فروخت کرنے کے قابل ہوگا۔توانائی بحران کے ختم ہونے سے ترقی اورخوشحالی کا نیا دور شروع ہوگا، ملک کی صنعت ،زراعت ترقی کرے گی اورہمارے سکول ،ہسپتال اورادارے روشن ہوں گے ۔ طویل عرصے کے بعد پنجاب میں تیل اورگیس کے ذخائر دریافت ہوئے ہیں یہ بڑی خوشخبری ہے جس پر ہم سب اﷲ تعالیٰ کی بارگاہ میں شکربجالاتے ہیں۔ یہ پاکستان کا اثاثہ ہیں۔ خیبر پختونخوا میں گیس کے ذخائردریافت ہوئے تو وہاں کی حکومت ہائی کورٹ سے سٹے آڈرلے آئی لیکن ہم ایسا نہیں کریں گے کیونکہ یہ وسائل پوری قوم کی امانت ہیں۔پنجاب ،سندھ،خیبرپختونخوا،بلوچستان،آزاد کشمیراورگلگت بلتستان سے ملکر پاکستان بنتا ہے اورجب یہ تمام اکائیاں ترقی کریں گی تبھی ملک ترقی کرے گا۔وزیراعلیٰ نے ا ن خیالات کا اظہار اٹک میں تیل اورگیس کے منصوبے جھنڈیال ون کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔وزیراعلیٰ نے مزید کہا کہ محنت،امانت اوردیانت کیساتھ ان وسائل سے فائدہ لیکر عام آدمی کی زندگی میں خوشحالی کاانقلاب لانا ہماری ذمہ داری ہے دفاعی لحاظ سے پاکستان مضبوط ملک ہے اوریہ نیوکلیئر طاقت ہے ،اس کیساتھ ساتھ ہمیں معاشی طورپر بھی مضبوط ہونا ہے ا ورمعیشت کو بھی ایٹمی معیشت بنانا ہے ۔ ایک ہاتھ میں نیوکلیئر طاقت اوردوسرے ہاتھ میں کشکول گدائی ہو ،یہ کسی طورپر مناسب نہیں۔کشکول گدائی ہماری قسمت نہ تھی بلکہ یہ ہمارے ا عمال کا نتیجہ ہے ۔