مقبول خبریں
برطانوی معاشرے میں رہتے ہوئے تمام تہوار میں حصہ لینا چاہئے: افضل خان
سپینش شہریت کے حامل سائنسدانوں کی قدرتی آفات پر ریسرچ
پاکستان میں فٹبال کے فروغ کیلئے انٹرنیشنل سوکا فیڈریشن کا قیام، ٹرنک والا فیملی کو خراج تحسین
چیئر مین پی ٹی آئی عمران خان تیسری بار دلہا بن گئے، بشریٰ بی بی سے نکاح ہو گیا
بھارتی ریاستی دہشتگردی کیخلاف مقبوضہ کشمیر میں ہڑتال، تعلیمی ادارے بند
کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی پامالیوں کو رکوانے کے سلسلہ میں پروگرام کا انعقاد
اوورسیز پاکستانیز ویلفیر کونسل کے زیراہتمام یوم یکجہتی کشمیر پر کار ریلی کا انعقاد
راجہ نجابت اور ان کی ٹیم کامسئلہ کشمیرپر متحرک کردار قابل ستائش ہے: سٹوورٹ اینڈریو
کیا یورپ ٹوٹ رہا ہے ؟
پکچرگیلری
Advertisement
ہمنوا یوکے اور محفل فکر و فن کے زیر اہتمام 70ویں یوم آزادی کی پر وقار تقریب
ووکنگ:ہمنوا یوکے اور محفل فکر و فن کے زیر اہتمام 70ویں یوم آزادی کی ایک پر وقار تقریب پاکستان کے قومی ترانے سے شروع ہوئی جس میں لندن،سلو،وے برج اور جرمنی تک سے عالمی اور ادبی شخصیات نے شرکت فرما کر مملکت خداداد پاکستان سے متعلق اپنے اپنے جذبات و احساسات کا اظہار کیا،سب سے پہلے ہمنوا یوکے شعبہ خواتین کی محترمہ صوفیہ میر نے تمام مہمان خواتین و حضرات اور شعرا کرام کو خوش آمدید کہتے ہوئے ہمنوا کی علمی اور ادبی سرگرمیوں پر روشنی ڈالی اور بالخصوص خواتین کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ یہ پروگرام آپ لوگوں کیلئے ہی ترتیب دیئے جاتے ہیں اور ہم توقع رکھتے ہیں کہ ان پروگراموں کی کامیابی میں آپ اپنا بھرپور رول ادا کیا کریں گی انہوں نے بتایا کہ ہم خواتین چاہتی ہیں کہ انہیں تنظیم کی تمام تر Activitiesسے مطلع رکھا جائے،وہ اپنی اپنیemailیا پھرwhatsappنمبر لیڈی کوارڈینیٹر محترمہ عطیہ اسلم کو دے دیں تاکہ انہیں تمام تر معلومات بر وقت پہنچ سکیں،اس کے بعد انہوں نے محفل مشاعرہ شروع کئے جانے کیلئے سٹیج کونسلر راجہ محمد الیاس کے حوالے کیا تو انہوں نے مشاعرے کی صدارت کیلئے لندن سے تشریف لاتے ہوئے صاحب کتاب شاعر جناب احسان شاہد کو سٹیج پر بلایا ان کے ساتھ محفل فکر و فن کے بانی اراکین جناب مظفر احمد مظفر،جناب نعیم سلہریا اور جرمنی سے تشریف فرما ہونے کی دعوت دی گئی،جشن آزادی کا کیک کاٹے جانے کیلئے رشمور بارو کونسل کی کشمیری نژاد میئر محترمہ صوفیہ سلیم بھی بطور خاص مہمان خصوصی تھیں،تقریب کا باقاعدہ آغاز حاجی محمد نواز کی تلاوت قرآن پاک سے ہوا،اس کے بعد انہوں نے اپنی خوش الحان آواز میں نعت رسول مقبولؐ پیش کی ا ن کے بعد جناب سلیم صاحب نے حضرت علامہ اقبالؒ کے کلام سے انتخاب کرتے ہوئے ایک نعت پاک سنا کر سامعین پر ایک خاص کیفیت طاری کر دی،مشاعرے کی عام روایت سے ہٹ کر سب سے پہلے صدر مشاعرہ جناب احسان شاہد نے اپنا کلام اور ترنم سے ایک نعت سنا کر کیف و سرور کے ماحول میں خاطر خواہ اضافہ کیا،ان کے بعد آفتاب احمد صاحب نے کشمیر سے متعلق اپنی نظم پیش کی،یہ زمین یہ آسمان تیرے لئے۔جان پر یہ امتحاں تیرے لئے،تیرے دریا کوہسار اونچے رہیں۔بادلوں کے سائباں تیرے لئے،ان کے بعد دعوت کلام جناب کامران زبیر کامی کو دی گئی تو انہوں نے ان اشعار پر خوب داد وصول کی،شعرا میں عمر فاروق،ڈاکٹر صوفیہ اور بسم اللہ کلیم نے اپنا کلام سنا کر خوب داد وصول کی۔