مقبول خبریں
جموں وکشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل خواتین کے عالمی دن کے حوالے سے تقریبات منعقد کریگی
برطانیہ میں اپنی صلاحیتیں منوانے کے جتنے مواقع ہیں کسی اور ملک میں نہیں: رحمان چشتی و دیگر
پاکستان میں فٹبال کے فروغ کیلئے انٹرنیشنل سوکا فیڈریشن کا قیام، ٹرنک والا فیملی کو خراج تحسین
وزارتِ عظمیٰ کے بعد نواز شریف مسلم لیگ ن کی صدارت سے بھی فارغ
بھارتی ریاستی دہشتگردی کیخلاف مقبوضہ کشمیر میں ہڑتال، تعلیمی ادارے بند
کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی پامالیوں کو رکوانے کے سلسلہ میں پروگرام کا انعقاد
اوورسیز پاکستانیز ویلفیر کونسل کے زیراہتمام یوم یکجہتی کشمیر پر کار ریلی کا انعقاد
راجہ نجابت اور ان کی ٹیم کامسئلہ کشمیرپر متحرک کردار قابل ستائش ہے: سٹوورٹ اینڈریو
عمران خان مارگریٹ اور میں
پکچرگیلری
Advertisement
ارفع ٹاور حملے کے ملزم وزیراعلی کو ٹارگٹ کرنا چاہتے تھے:ڈی جی آئی ایس پی آر
راولپنڈی: ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور نے راولپنڈی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے آپریشن خیبر فور اور آپریشن ردالفساد کے حوالے سے میڈیا نمائندوں کو بریفنگ دی۔ اس موقع پر بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہ آپریشن خیبر فور پاک فوج کے مشکل ترین آپریشنز میں سے ایک تھا جسے مکمل کر لیا گیا ہے اور وادی راجگال اور اس کے قرب و جوار کا 250 مربع کلو میٹر علاقہ کلیئر کرا لیا گیا ہے، راجگال اور شوال میں زمینی اہداف حاصل کر لئے گئے ہیں اور اس پورے آپریشن میں 2 سپاہی شہید جبکہ 6 زخمی ہوئے۔ ڈی جی آئی ایس پی آر نے مزید بتایا کہ راجگال وادی میں 91 چیک پوسٹیں بنائی گئیں، سامان ہیلی کاپٹر کے ذریعے فراہم کیا گیا، خیبر ویلی میں کلیئرنس آپریشن جاری ہے، خیبر فور کے دوران افغان فورسز کیساتھ بھی مشاورت کی گئی، شیعہ سنی فساد کا لنک را اور این ڈی ایس سے ملتا ہے، 2017ء میں راولپنڈی میں سنی مسجد پر دہشتگرد حملہ ہوا، حملہ آوروں کو گرفتار کر لیا گیا ہے، وہ سنی ہی تھے مگر انہوں نے شیعہ بھیس میں حملہ کیا۔ڈی جی آئی ایس پی آر نے مزید کہا کہ ٹارگٹ کلنگ میں نمایاں کمی ہوئی ہے، پاکستان رینجرز پنجاب نے خفیہ اطلاعات پر 1728 آپریشنز کئے۔کراچی آپریشن کے حوالے سے بات کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ کراچی پولیس مضبوط ہو گی تو سٹریٹ کرائمز کم ہونگے لیکن بھتہ خوری اور ٹارگٹ کلنگ کے واقعات میں ماضی کی نسبت بہت زیادہ کمی آئی ہے۔ڈی جی آئی ایس پی آر نے مزید بتایا کہ ارفعہ کریم ٹاور کے قریب ہونے والے خودکش حملے کا ٹارگٹ وزیر اعلیٰ پنجاب تھے، اس دن ان کا ارفعہ ٹاور کا دورہ بھی شیڈول تھا لیکن عین وقت پر دہشتگردوں کا منصوبہ تبدیل ہوا اور انہوں نے پولیس کو ٹارگٹ کیا۔ انہوں نے مزید بتایا کہ وزیر اعلیٰ پر دہشتگردوں کے مزید حملے کا بھی منصوبہ تھا جن تک ہماری ایجنسیاں پہنچ چکی ہیں۔میجر جنرل آصف غفور کا کہنا تھا کہ پاکستان سب کا ہے، جب تک ہم اکٹھے ہیں پاکستان کو کوئی نقصان نہیں پہنچا سکتا، سرحد کے اندر رہتے ہوئے اختلافات ہو سکتے ہیں، سرحد کے باہر ہم سب ایک ہیں، مشرف سیاسی بات ذاتی حیثیت سے کرتے ہیں، فوج کے حوالے سے پالیسی بیان آرمی چیف ہی دے سکتے ہیں، امریکہ کی افغان پالیسی کا اعلان کل ہو گا، دفتر خارجہ ہی اس حوالے سے بیان جاری کرے گا، سخت پالیسی آئے گی تو ہم نے پہلے پاکستان کا مفاد دیکھنا ہے، ضرب عضب میں آپریشن بلاتفریق کیا گیا، تمام علاقوں کو کلیئر کرا لیا گیا ہے، فاٹا کے 95 فیصد لوگ واپس جا چکے ہیں باقی شاید جانا نہیں چاہتے، یہ ان کا ذاتی فیصلہ ہے، آئی ڈی پیز کو کیمپوں میں ہر قسم کی سہولت دی، کسی کو زبردستی واپس نہیں بھیجا گیا۔ڈی جی آئی ایس پی آر نے مزید کہا کہ پاکستان میں سول ملٹری تعلقات کا کوئی مسئلہ نہیں، ڈان لیکس رپورٹ پبلک کرنا حکومت کی صوابدید ہے۔