مقبول خبریں
پاکستان کے نظریاتی استحکام کیلئے مسلم لیگ کو منظم کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے:فدا حسین کیانی
گوادر چیمبر آف کامرس کے نومنتخب صدر گوادر رئیل اسٹیٹ کیلئے اثاثہ ثابت ہونگے: ذیشان چوہدری
کشمیری آزادی کی جنگ لڑ رہےہیں ،یہ انکا پیدائشی حق ہے:چوہدری جاوید ،چوہدری یعقوب
نواز شریف کے دوبارہ پارٹی صدر بننے کی راہ ہموار، شق 203 سینیٹ سے بھی منظور
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فورسز کی فائرنگ، مزید 2 نوجوان شہید
کونسلر وحید اکبر کا آزاد کشمیر کے جسٹس شیراز کیانی کے ا عزاز میں عشائیے کا اہتمام
برطانیہ کے ساحلی شہر سائوتھ ہیمپٹن میں ملی نغموں کی گونج، ڈپٹی میئر کی خصوصی شرکت
ڈاکٹر سجاد کریم کی قیادت میں یورپی پارلیمنٹ کے وفد کا جارحیا پہنچنے پرپرتپاک استقبال
کرپٹ خان
پکچرگیلری
Advertisement
امریکا پر کسی بھی وقت ’بے رحمانہ‘ حملہ ہو سکتا ہے، شمالی کوریا کی دھمکی
پیانگ یانگ: شمالی کوریا اور امریکا کے درمیان کشیدگی میں گزرتے دنوں کے ساتھ اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔ گزشتہ دنوں پیانگ یانگ نے امریکی جزیرے گوام کو اپنے میزائلوں سے نشانہ بنانے کی دھمکی دی تو اب کہا جا رہا ہے کہ کسی بھی وقت امریکا کے کسی بھی حصے کو نشانہ بنایا جا سکتا ہے۔امریکی میڈیا کے مطابق شمالی کوریا کی جانب سے یہ دھمکی امریکا اور جنوبی کوریا کے درمیان جنگی مشقوں کے ردعمل میں آئی ہے۔ پیانگ یانگ نے ان مشقوں کو غیر دانشمندانہ اقدام قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ دونوں ملک ایسی ایٹمی جنگ کو دعوت دے رہے ہیں جس پر قابو پانا ناممکن ہوگا۔ دھمکی میں کہا گیا ہے کہ اس کی فوج کسی بھی وقت امریکا کو ٹارگٹ کر سکتی ہے اور یہ حملہ نہ ہی گوام اور نہ ہی ہوائی پر ہوگا بلکہ امریکا کے کسی بھی حصے کو ’بے رحمی‘ سے نشانہ بنایا جا سکتا ہے۔یاد رہے کہ گزشتہ ہفتے شمالی کوریا نے دھمکی دی تھی کہ اس نے امریکی جزیرے گوام پر میزائلوں سے حملہ کرنے کی مکمل منصوبہ بندی کر لی ہے۔ اس حملے کا تمام اختیار کم جانگ ان کو دیدیا گیا ہے، وہ جیسے ہی حکم دیں گے، حملہ کر دیا جائے گا۔دوسری جانب امریکی افواج اور ٹرمپ انتظامیہ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ جنوبی کوریا کے ساتھ پیر 21 اگست سے شروع ہونے والی جنگی مشقیں شیڈول کے تحت ہونے جا رہی ہیں جو 10 روز تک جاری رہیں گی۔