مقبول خبریں
یو کے اسلامک مشن یوتھ ونگ لیڈز کی طرف سے عید ملن پارٹی :مسلم و نو مسلم کمیونٹیز کی شرکت
پیغام پاکستان فتویٰ دہشت گردی کیخلاف متفقہ قومی بیانیہ کا کردار ادا کرسکتا ہے: قاری صداقت علی
پیٹر برا کے سابق لارڈ میئر محمد ایوب کا پاک سر زمین پارٹی میں شمولیت کا اعلان
ٹکٹوں کی تقسیم پر ناراض کھلاڑیوں کا کپتان کی رہائشگاہ کے باہر احتجاج جاری
مقبوضہ کشمیر: بی جے پی کا اتحاد ختم کرنے کا اعلان، وزیراعلیٰ مستعفی
شیر خدا نے نبی پاک کی آواز پر لبیک کہہ کر اسلام سے محبت اور وفا کی عمدہ مثال قائم کی
پیپلزپارٹی ہی آئندہ انتخابات میں چاروں صوبوں میں اکثریت حاصل کریگی:میاں سلیم
جموں کشمیر تحریک حق خودارادیت کا نو منتخب کونسلروں میڈیا نمائندگان کے اعزاز میں افطار ڈنر
دشمنوں کے درمیان ایک کتاب
پکچرگیلری
Advertisement
امریکا پر کسی بھی وقت ’بے رحمانہ‘ حملہ ہو سکتا ہے، شمالی کوریا کی دھمکی
پیانگ یانگ: شمالی کوریا اور امریکا کے درمیان کشیدگی میں گزرتے دنوں کے ساتھ اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔ گزشتہ دنوں پیانگ یانگ نے امریکی جزیرے گوام کو اپنے میزائلوں سے نشانہ بنانے کی دھمکی دی تو اب کہا جا رہا ہے کہ کسی بھی وقت امریکا کے کسی بھی حصے کو نشانہ بنایا جا سکتا ہے۔امریکی میڈیا کے مطابق شمالی کوریا کی جانب سے یہ دھمکی امریکا اور جنوبی کوریا کے درمیان جنگی مشقوں کے ردعمل میں آئی ہے۔ پیانگ یانگ نے ان مشقوں کو غیر دانشمندانہ اقدام قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ دونوں ملک ایسی ایٹمی جنگ کو دعوت دے رہے ہیں جس پر قابو پانا ناممکن ہوگا۔ دھمکی میں کہا گیا ہے کہ اس کی فوج کسی بھی وقت امریکا کو ٹارگٹ کر سکتی ہے اور یہ حملہ نہ ہی گوام اور نہ ہی ہوائی پر ہوگا بلکہ امریکا کے کسی بھی حصے کو ’بے رحمی‘ سے نشانہ بنایا جا سکتا ہے۔یاد رہے کہ گزشتہ ہفتے شمالی کوریا نے دھمکی دی تھی کہ اس نے امریکی جزیرے گوام پر میزائلوں سے حملہ کرنے کی مکمل منصوبہ بندی کر لی ہے۔ اس حملے کا تمام اختیار کم جانگ ان کو دیدیا گیا ہے، وہ جیسے ہی حکم دیں گے، حملہ کر دیا جائے گا۔دوسری جانب امریکی افواج اور ٹرمپ انتظامیہ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ جنوبی کوریا کے ساتھ پیر 21 اگست سے شروع ہونے والی جنگی مشقیں شیڈول کے تحت ہونے جا رہی ہیں جو 10 روز تک جاری رہیں گی۔