مقبول خبریں
جموں وکشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل خواتین کے عالمی دن کے حوالے سے تقریبات منعقد کریگی
برطانیہ میں اپنی صلاحیتیں منوانے کے جتنے مواقع ہیں کسی اور ملک میں نہیں: رحمان چشتی و دیگر
پاکستان میں فٹبال کے فروغ کیلئے انٹرنیشنل سوکا فیڈریشن کا قیام، ٹرنک والا فیملی کو خراج تحسین
وزارتِ عظمیٰ کے بعد نواز شریف مسلم لیگ ن کی صدارت سے بھی فارغ
بھارتی ریاستی دہشتگردی کیخلاف مقبوضہ کشمیر میں ہڑتال، تعلیمی ادارے بند
کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی پامالیوں کو رکوانے کے سلسلہ میں پروگرام کا انعقاد
اوورسیز پاکستانیز ویلفیر کونسل کے زیراہتمام یوم یکجہتی کشمیر پر کار ریلی کا انعقاد
راجہ نجابت اور ان کی ٹیم کامسئلہ کشمیرپر متحرک کردار قابل ستائش ہے: سٹوورٹ اینڈریو
عمران خان مارگریٹ اور میں
پکچرگیلری
Advertisement
امریکا پر کسی بھی وقت ’بے رحمانہ‘ حملہ ہو سکتا ہے، شمالی کوریا کی دھمکی
پیانگ یانگ: شمالی کوریا اور امریکا کے درمیان کشیدگی میں گزرتے دنوں کے ساتھ اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔ گزشتہ دنوں پیانگ یانگ نے امریکی جزیرے گوام کو اپنے میزائلوں سے نشانہ بنانے کی دھمکی دی تو اب کہا جا رہا ہے کہ کسی بھی وقت امریکا کے کسی بھی حصے کو نشانہ بنایا جا سکتا ہے۔امریکی میڈیا کے مطابق شمالی کوریا کی جانب سے یہ دھمکی امریکا اور جنوبی کوریا کے درمیان جنگی مشقوں کے ردعمل میں آئی ہے۔ پیانگ یانگ نے ان مشقوں کو غیر دانشمندانہ اقدام قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ دونوں ملک ایسی ایٹمی جنگ کو دعوت دے رہے ہیں جس پر قابو پانا ناممکن ہوگا۔ دھمکی میں کہا گیا ہے کہ اس کی فوج کسی بھی وقت امریکا کو ٹارگٹ کر سکتی ہے اور یہ حملہ نہ ہی گوام اور نہ ہی ہوائی پر ہوگا بلکہ امریکا کے کسی بھی حصے کو ’بے رحمی‘ سے نشانہ بنایا جا سکتا ہے۔یاد رہے کہ گزشتہ ہفتے شمالی کوریا نے دھمکی دی تھی کہ اس نے امریکی جزیرے گوام پر میزائلوں سے حملہ کرنے کی مکمل منصوبہ بندی کر لی ہے۔ اس حملے کا تمام اختیار کم جانگ ان کو دیدیا گیا ہے، وہ جیسے ہی حکم دیں گے، حملہ کر دیا جائے گا۔دوسری جانب امریکی افواج اور ٹرمپ انتظامیہ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ جنوبی کوریا کے ساتھ پیر 21 اگست سے شروع ہونے والی جنگی مشقیں شیڈول کے تحت ہونے جا رہی ہیں جو 10 روز تک جاری رہیں گی۔