مقبول خبریں
امیگریشن قوانین میں نرمی سے برطانوی معیشت اور سیاحوں کو فائدہ ہو گا: افضل خان
نواز شریف کیخلاف عوام نے فیصلہ رد کر کے ثابت کیا وہی اصلی لیڈر ہیں:ن لیگ برطانیہ
تارک وطن بزرگوں نے محنت کا جو بیج بویا تھا آج اسکے ثمرات آنا شروع ہوگئے ہیں
وزیر اعظم گھر درست ضرور کریں، لیکن پاکستان کو تماشا نہ بنائیں: چودھری نثار
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فورسز کی فائرنگ، مزید 2 نوجوان شہید
کونسلر وحید اکبر کا آزاد کشمیر کے جسٹس شیراز کیانی کے ا عزاز میں عشائیے کا اہتمام
برطانیہ کے ساحلی شہر سائوتھ ہیمپٹن میں ملی نغموں کی گونج، ڈپٹی میئر کی خصوصی شرکت
برما میں مسلمانوں کا قتل عام انسانی حقوق کی کھلم کھلا خلاف ورزی ہے:وہیپ اینڈریو
کرپٹ خان
پکچرگیلری
Advertisement
حریت کانفرنس کے سینئر راہنما محمود احمد کے بیان کا خیر مقدم کرتے ہیں:ڈاکٹر مسفر حسن
برنلے:جموں کشمیر نیشنل انڈیپینڈنس الائنس جناب محمود احمد ساغر جو حریت کانفرنس کے سینئر راہنما ہیں انکے اس بیان کا بھرپور خیر مقدم کرتی ہے جس میں انہوں نے حکومت پاکستان سے اس بات کا مطالبہ کیا ہے کہ حکومت آزاد کشمیر کو با اختیار اور پوری ریاست جموں کشمیر کے عوام کی نمائندہ حکومت تسلیم کیا جائے اس بات کا اعلان الائنس کے میڈیا ایڈوائزر ڈاکٹر مسفر حسن نے کیا،انہوں نے کہا کہ یکم جولائی کو الائنس کے چیئرمین جناب محمود کشمیری نے صدر آزاد کشمیر جناب مسعود خان سے بریڈ فورڈ میں یہ سوال اٹھایا تھا کہ ایکٹ74کی موجودگی میں انکی کوئی سیاسی حیثیت نہیں اور آج کی بین الاقوامی دنیا کے ساتھ اگر کشمیری قوم کو اپنی آزادی کی بات کرنا ہے تو اس کیلئے حکومت آزاد کشمیر کی سیاسی حیثیت کا تعین ہونا انتہائی ضروری ہے،ڈاکٹر مسفر حسن نے کہا کہ گزشتہ تیس سال کی تاریخ اس امر کی گواہ ہے کہ وادی کشمیر کے نوجوانوں نے اپنی آزادی کی خاطر بے شمار قربانیاں دی ہیں لیکن ان تمام قربانیوں کے باوجود کشمیریوں کی آزادی کی تحریک آگے نہیں بڑھی،انہوں نے کہا کہ دنیا کو قائل کرنے کیلئے اور جموں کشمیر کے عوام کے حق خود ارادیت کے حصول کی خاطر مظفر آباد حکومت کا با اختیار ہونا اشد ضروری ہے،انہوں نے کہا کہ آج دنیا بھر میں پر تشدد طریقوں کی مذمت کی جاتی ہے لیکن جموں کشمیر کی آزادی کی تحریک لیڈر کو دہشت گردی قرار دیا جانا غلط حکمت عملی کی نشاندہی ہی کرتا ہے جس پر غورکرنے اور نئی حکمت عملی اپنائے جانے کا احساس نہ کیا تو جموں کشمیر کے عوام کو اپنی آزادی اور حق خود ارادیت کے حصول کی خاطر دیگر ذرائع اور حکمت عملی پرغور کرنا پڑے گا،یاد رہے کہ جموں کشمیر انڈیپینڈنس الائنس ریاست جموں کشمیر کی وحدت،مکمل آزادی کیلئے سیاسی حکمت عملی پر یقین رکھتا ہے اور اس میں اس وقت،این اے پی،کشمیر فریڈم موومنٹ،یوکے پی این پی اور جموں کشمیر لبریشن لیگ برطانیہ شامل ہیں جبکہ دیگر کشمیری جماعتوں کے ساتھ نظریاتی جدو جہد کے حوالے سے بات چیت جاری ہے۔خصوصی رپورٹ:فیاض بشیر