مقبول خبریں
مانچسٹر کرائون ہال میں سالانہ عرس بابا فرید گنج بخش پاک پتن شریف کے سلسلہ میں محفل کا انعقاد
اوورسیز پاکستانی کا ایک کروڑ روپے مالیت کا مکان ناجائز قبضہ سے چھڑالیاگیا
ڈاکٹر افضل جاوید ورلڈ سائیکائیٹرک ایسوسی ایشن (WAP) کے صدر منتخب
اناڑی قیادت مسلط کرنیکی کوشش ناکام، مخالفین کی سیاست کھنڈر ہو جائے گی:بلاول بھٹو
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی جبرکیخلاف مکمل ہڑتال، زبردست احتجاجی مظاہرے
لوٹن ٹائون ہال میں ادبی بیٹھک، لارڈ قربان نے صدارت کی معروف شعرا کرام کی شرکت
برطانیہ کے ساحلی شہر سائوتھ ہیمپٹن میں ملی نغموں کی گونج، ڈپٹی میئر کی خصوصی شرکت
پاکستانی کمیونٹی سنٹر مانچسٹر میں کبوتر پروری کا سالانہ کنونشن، تقسیم انعامات کی تقریب
مودی کی سبکی
پکچرگیلری
Advertisement
2018 انتخابات: پی پی پنجاب سمیت ملک بھر میں اکثریت حاصل کر یگی:لطیف کھوسہ ودیگر
لندن:پاکستان پیپلز پارٹی دو ہزار اٹھارہ کے انتخابات میں پنجاب سمیت ملک بھر میں بلاول بھٹو کی قیادت میں اکثریت حاصل کرے گی اور ایک بار پھر بھٹو کا نعرہ لگے گا۔ نوازشریف کی کرپشن اور سفید جھوٹ عوام نے دیکھ لیا اور انکی سیاست کے آخری لمحات چل رہے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار سردار لطیف خان کھوسہ سابق گورنر پنجاب اور سابق سیکرٹری جنرل پی پی پی نے لندن میں ایک پر ہجوم پریس کانفرنس میں کیا جسکا اہتمام پاکستان پیپلز پارٹی برطانیہ نے کیا۔ پریس کانفرنس میں محسن باری سابق صدر پی پی پی برطانیہ، چوہدری آفتاب، میاں سلیم، آصف علی خان، شمیم بھٹو، سیف الرحمن، آلڈرمین مشتاق لاشاری، خالصہ تحریک کے سردار سندیپ سنگھ، شکیل متل، سید تسنیم حیدر شاہ، اقبال بٹ، ڈاکٹر ثبور، محمود خان، چوہدری ظفر، وحید اقبال، یونس آفریدی، امجد امین بوبی، طارق بھٹی اور دیگر پارٹی کارکنان نے شرکت کی۔ ابرار میر امیدوار برائے سیکرٹری پی پی پی اوورسیز، جنرل سیکرٹری پی پی ہی یوکے اور سینئر نائب صدر پی پی پی یوکے نے خصوصی شرکت کی۔سردار لطیف خان کھوسہ نے کہا کہ بھٹو شہید کے دور سے ہی جمہوریت اور عوام دشمن طاقتیں سرگرم ہوچکی تھیں مگر قائد عوام نے کسی طال آزما کے سامنے سر نہیں جھکایا بلکہ اصولوں پہ جان کی قربانی دیکر امر ہوگئے۔ بھٹو صاحب نے جاگیردارانہ نظام کو ختم کیا اور پسے ہوئے طبقے کی آواز بن گئے۔ وہ دور ایک سیاہ ترین دور تھا اور جنرل ضیا ء جیسے خوفناک ڈکٹیٹر کے سامنے بھی پی پی پی چٹان کی طرح کھڑی رہی۔ افغانستان کے ساتھ ہمارے حالات بہتر ہونے چاہئیں ورنہ اسکا فائدہ دہشت گردوں کو ہوگا۔ لطیف کھوسہ نے کہا کہ وہ کیا وجہ ہے کہ بھٹو صاحب کے بعد انکی پنکی بھی عوام کے حقوق کی جنگ لڑتے ہوئے عوام میں ہے سر بازار شہید ہونے کو تیار ہو گئیں۔ یقینا یہ ایک مضبوط نظریہ ہے کہ جو ہماری قیادت سمیت کارکنوں کی شہادت کا باعث بنتا ہے۔ پاکستان پیپلز پارٹی ملک میں امن اور جمہوریت کی سب سے بڑی ضمانت اور علمبردار ہے۔ آج حکمران اپنے خاندان اور رشتے داروں کی تجوریاں بھر رہے ہیں اور عوام بجلی، گیس اور پانی کے علاوہ انصاف جیسی سہولتوں کو ترس رہی ہے۔ آج کوئی ان سے پوچھے کہ کدھر گئی وہ جنگلا بس، سستی روٹی کے پلانٹ، دانش سکول، لیپ ٹاپ، انرجی کے منصوبے کہ جن پہ اربوں روپے عوام کے لگا مگر آخر میں انہوں نے پانچ سو ارب کا سرکلر ڈیٹ اپنے من پسند شخص کی کمپنی کو دئیے اور اب پھر سے چار سو ارب روپے کا سرکلر ڈیٹ پہنچ چکا ہے۔ سردار لطیف کھوسہ نے کہا کہ ھماری حکومت نے تو بینظیر اِنکم سپورٹ اور این ایف سی ایوارڈ جیسی تاریخی معاشی خوشحالی دی۔ پھر صدارتی اختیارات پارلیمنٹ کو دئیے، اداروں کو مظبوط کیا، پٹھان قوم کو کے پی کے کی شناخت دی، مسئلہ کشمیر پہ انڈیا سے مثبت مذاکرات جاری رکھے، صوبائی خودمختاری دی اور سب سے بڑھ کر اٹھارویں ترمیم کہ جسکی وجہ سے آمروں کا راستہ بھی روکا اور آئین کو اسکی مسخ شدہ حالت سے باھر نکال کر اصل شکل میں لایا۔ ھم نے میڈیا کو ھر طرح کی سہولت فراہم کی اور ان پر کبھی جبر یا پابندی نہیں کی۔ آصف علی زرداری نے انتہائی مشکل حالات میں بھی چائنا سے گوادر اور سی پیک جیسے تاریخی منصوبوں کو جاری کیا۔ ایران کے ساتھ گیس اور بجلی کے معاھدے کئیے مگر افسوس کہ یہ حکومت گیس والے منصوبے سے ڈر کر بھاگ گئی اور اب پیپلز پارٹی کا کا لگایا ہوا پودا سی پیک بھی اپنے نام پہ کررھی ھے۔ ملا فضل اللہ اور صوفی محمد جیسے دہشت گردوں کو مالاکنڈ سے بھگایا اور فوج کا وقار بلند کیا۔ مختلف سوالات کے جوابات میں انہوں نے کہا کہ ہم نے کبھی بھی ان سے مفادات کیلئے نہیں بات کی بلکہ جمہوریت کے فروغ کے لئے انکے ساتھ کھڑے رہے مگر یہ ہر بار رعونیت پہ اتر جاتے ھیں۔ ھم نے حامد سعید کاظمی پہ بھی جھوٹے مقدمے کا دفاع کیا اور وہ باعزت بری ھوئے۔ پھر ڈاکٹر عاصمہ ور شرجیل میمن بھی عدالتوں سے رجوع کر کے سب کے سامنے ھیں۔ ھم نے ہمیشہ عدلیہ کی ہر حال میں عزت کی مگرہمیں ہی نشانہ بنایا گیا۔ انہوں نے محسن باری سمیت تمام پیپلز پارٹی برطانیہ کے کارکنان کا دلی شکریہ ادا کیا۔