مقبول خبریں
سیاسی ،سماجی کمیونٹی شخصیت بابو لالہ علی اصغر کا مقبوضہ کشمیر کی صورتحال بارے میٹنگ کا انعقاد
بھارتی ظلم و جبر؛ برطانیہ کے بعد امریکی اخبارات میں بھی مسئلہ کشمیر شہہ سرخیوں میں نظر آنے لگا
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز اورسیمینارز منعقد کریگی : راجہ نجابت
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
مظلوم کشمیری بھائیوں کیلئے پہلے کی طرح آواز بلند کرتے رہیں گے:مئیر کونسلر طاہر محمود ملک
اوورسیز پاکستانیز ویلفیئر کونسل کا وسیم اختر چوہدری اور ملک ندیم عباس کے اعزاز میں استقبالیہ
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت کا کشمیر پٹیشن پر دستخطی مہم کا آغاز ،10ستمبر کو پیش کی جائیگی
کافر کو جو مل جائے وہ کشمیر نہیں ہے!!!!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
نیشنل ڈیفنس یونیورسٹی کے وفد کی پاکستان ہائی کمیشن لندن آمد، قائمقام ہائی کمشنر کا خیر مقدم
لندن :برطانیہ کے مطالعاتی دورے پر آئے ہوئے نیشنل ڈیفنس یونیورسٹی اسلام آباد کے اساتذہ اور کورس شرکاء کے ایک گروپ نے پاکستان ہائی کمیشن لندن کا دورہ کیا۔ قائمقام ہائی کمشنر زاہد حفیظ چودھری نے وفد کا خیرمقدم کیا اور انہیں برطانیہ کی سماجی و معاشی صورتحال کے علاوہ یہاں رونما ہونے والے سیاسی واقعات پر بریفنگ دی۔ انہوں نے وفد کے ارکان کو پاکستان اور برطانیہ کے دوطرفہ تعلقات کے مختلف پہلوئوں اور بریگزٹ کے بعد کی صورتحال اور پاکستان کے لئے اس سے پیدا ہونے والے مواقع کے بارے میں آگاہ کیا۔ انہوں نے شرکاء کو بتایا کہ انہانسڈ سٹریٹجک ڈائیلاگ کے تحت دوطرفہ تعلقات کو باقاعدہ ادارے کی شکل مل گئی ہے اور یہ مزید بہتری کی طرف جا رہے ہیں۔ موجودہ دور میں سفارت کاری کے بدلتے ہوئے محرکین پر اظہار خیال کرتے ہوئے انہوں نے شرکاء کو مشن کی سرگرمیوں اور ذمہ داریوں کے بارے میں آگاہ کیا۔ بریفنگ سوال وجواب کے سیشن کے ساتھ ختم ہوئی۔ بعد ازاں وفد کے اعزاز میں عشائیہ دیا گیا۔ وفد کے دورے کے پروگرام میں کئی طرح کی سرگرمیاں شامل ہیں جن میں وزارت دفاع، رائل کالج آف ڈیفنس سٹڈیز (آر سی ڈی ایس)، پارلیمنٹ کے ایوانوں، کنگز کالج لندن، میٹ پولیس ہیڈکوارٹرز، فارن اینڈ کامن ویلتھ آفس (ایف سی او) اور انٹرنیشنل انسٹی ٹیوٹ آف سٹریٹجک سٹڈیز (آئی آئی ایس ایس) میں بریفنگز شامل ہیں۔ انہوں نے پورٹسمائوتھ ہاربر اور پارلیمنٹ کے ایوانوں کا دورہ بھی کیا۔