مقبول خبریں
یار غار خلیفہ اول سیدنا صدیق اکبرؓ کی شان میں عظیم الشان محفل کا انعقاد
مہنگائی کی ذمے دار عمران خان حکومت ہے ،شہباز شریف
دعوت اسلامی برمنگھم کے زیر اہتمام خراب موسم کے باوجودجشن عید میلاد النبیؐ کا جلوس
برطانوی شاہی جوڑے کی پاکستان میں زبردست پذیرائی، وزیر اعظم اور صدر مملکت سے ملاقاتیں
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
اسرار احمد راجہ کی کتاب کی تقریب رونمائی ،مئیر آف لوٹن کونسلر طاہر ملک ودیگرافراد کی شرکت
پارک ویو کمیونٹی سنٹر شہیر واٹر میں ہمنوا یو کے کے زیرِ اہتمام یوم آزادی پاکستان تقریب کا انعقاد
راجہ نجابت حسین کی ڈیبی ابراھام کے ہندوستان میں داخلے پر پابندی کی شدید مذمت
آتش فشاں
پکچرگیلری
Advertisement
ملکہ الزبتھ دوئم نے بھی(بریگزٹ) سے متعلق پارلیمنٹ کے منظور کردہ بل کی توثیق کردی
لندن:برطانوی ملکہ الزبتھ دوئم نے بھی یورپی یونین سے برطانیہ کی علیحدگی (بریگزٹ) سے متعلق پارلیمنٹ کے منظور کردہ بل کی توثیق کردی جس کے بعد برطانیہ کے انخلا کی راہ مزید ہموار ہوگئی۔ ملکہ الزبتھ دوم کی طرف سے ’’ شاہی مہر‘‘ کے ذریعے باضابطہ توثیق کیے جانیوالے پارلیمانی بل میں وزیراعظم تھریسا مے کو یہ اختیار دیا گیا ہے کہ وہ یوپی یونین کے لزبن معاہدے کے آرٹیکل 50 کو استعمال کرتے ہوئے برطانیہ کی علیحدگی کا عمل شروع کرسکتی ہیں۔برطانوی وزیراعظم تھریسا مے کا کہنا ہے کہ وہ مارچ کے آخر تک یورپین کونسل کو خط بھیجیں گی جس میں اسے برطانیہ کے یورپی یونین سے علیحدگی اختیار کرنے کے فیصلے سے آگاہ کیا جائے گا۔ملکہ کے دستخط کے بعد اب برطانوی وزیراعظم تھریسا مے کسی بھی وقت آرٹیکل 50 کے تحت کارروائی شروع کرسکتی ہیں اور یورپی یونین سے برطانیہ کے علیحدہ ہونیکا عمل مکمل ہونے میں زیادہ سے زیادہ 2 سال کا عرصہ لگ سکتا ہے بشرطیکہ برطانیہ اور یورپی ممالک اس ڈیڈلائن میں اضافے پر متفق نہ ہوں۔