مقبول خبریں
یورپین اسلامک سینٹر کے منتظم اعلیٰ سکالر مولانا محمد اقبال کے والد محترم کی وفات پر اظہار تعزیت
صدرریاست آزاد جموں و کشمیر سردار مسعود خان کا برطانوی پارلیمنٹ کا دورہ
پاک برٹش انٹر نیشنل ٹرسٹ کے چیئرمین چوہدری سرفراز کی جانب سے عشائیہ کی تقریب
میاں صاحب نظریے کو سمجھتے نہیں، وقت کے ساتھ مؤقف بدلنا نظریہ نہیں ہوتا:بلاول
مقبوضہ کشمیر :بھارتی فوج کے ہاتھوں ایک اور نوجوان شہید،مظاہرے،جھڑپیں
لوٹن ٹائون ہال میں ادبی بیٹھک، لارڈ قربان نے صدارت کی معروف شعرا کرام کی شرکت
برطانیہ کے ساحلی شہر سائوتھ ہیمپٹن میں ملی نغموں کی گونج، ڈپٹی میئر کی خصوصی شرکت
پاکستان کی سیاسی صورتحال، یورپین یونین جمہوریت کے ساتھ کھڑی ہے : ڈاکٹر سجاد کریم
مودی کی سبکی
پکچرگیلری
Advertisement
برطانوی پارلیمنٹ میں مسئلہ کشمیر پر بحث کشمیریوں کی محنت کا نتیجہ:راجہ امجد،چوہدری ظہور
برمنگھم:سیکرٹری جنرل کل جماعتی بین الاقوامی کشمیر رابطہ کمیٹی راجہ امجد خان اور چوہدری ظہور سرور نے اپنے ایک مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ بھارت نے درندگی کی انتہا کر دی ہے،برہان مظفر وانی شہید کی شہادت کے بعد وادی کے اندر ظلم وستم کے جو نقوش چھوڑے جا رہے ہیں اس سے کشمیریوں کا جینا اجیرن بنا دیا گیا ہے،تارکین وطن کشمیری دن رات تحریک کی مضبوطی کیلئے اپنا مثبت رول ادا کر رہے ہیں اور عالمی دنیا کے اعلیٰ ایوانوں تک مسئلہ کشمیر کو روشناس کروانا اور بھارتی جارحیت کو بے نقاب کرنے میں کافی حد تک کامیاب ہو رہے ہیں،برطانوی پارلیمنٹ میں مسئلہ کشمیر پر بحث کشمیریوں کی شب و روز محنتوں کا نتیجہ ہے،پاکستان کی طرف سے اوورسیز کمیونٹی کوکوئی گائیڈ لائن نہیں دی جا رہی اور نہ آنے والی نسل کے لئے جدید تقاضوں کہ مطابق کوئی ویب سائٹ یا انگلش لٹریچر مہیا کیا جا رہا ہے،پاکستان کے اندر کشمیری کمیٹی کا قیام مسئلہ کشمیر کوعالمی سطح پر روشناس کروانے کیلئے کیا گیا تھا اور اضافی پانچ کروڑ کے فنڈز بھی مختص کئے گئے تھے اور موجودہ قائمہ کمیٹی کی پراگرس مایوس کن ہے اور فنڈز کا ضیاع ہے،کشمیر لبریشن سیل کا قیام بھی سیاست کی نظر ہو رہا ہے اور پاکستان کے ممبران اسمبلی پر چالیس رکنی کشمیر کمیٹی بھی اپنا موثر کردار ادا کرنے میں ناکام ہوگئی ہے،اب کشمیر کے بیس کیمپ کی حکومت کو جدید دور کے حالات کے تناظر میں کشمیر پالیسی کو جدید تقاضوں کے مطابق ری ویو کیا جائے اور اوورسیز میں بسنے والے محب الوطن کشمیریوں کو حکومتی سطح پر کام کرنے کیلئے گائیڈ لائن دی جائے،اوورسیز میں میں ہونے والے احتجاج اورمظاہرے کامیاب بنانے کیلئے حکومتی نمائندگان کو ذاتی شرکت ممکن بنانی چاہئے اور جماعتی وابستگیوں سے بالا تر ہو کر اور شخصیت پرستی سے نکل کر کشمیر کاز پر عملاً کردار کیا جائے،آج ہماری آواز پوری دنیا سن رہی ہے ہم ہر کونے میں موثر ہیں ہمیں صرف تربیت اور لائن کی ضرورت ہے،مشترکہ قومی نمائندے کی ضرورت ہے،ہم تحریک کی مضبوطی کیلئے اپنی کاوشیں تیز تر کریں گے۔