مقبول خبریں
یو کے اسلامک مشن یوتھ ونگ لیڈز کی طرف سے عید ملن پارٹی :مسلم و نو مسلم کمیونٹیز کی شرکت
پیغام پاکستان فتویٰ دہشت گردی کیخلاف متفقہ قومی بیانیہ کا کردار ادا کرسکتا ہے: قاری صداقت علی
پیٹر برا کے سابق لارڈ میئر محمد ایوب کا پاک سر زمین پارٹی میں شمولیت کا اعلان
چیئرمین تحریک انصاف عمران خان بھی کروڑوں روپے کے اثاثوں کے مالک
محبوبہ مفتی کی حکومت ختم، صدر رام ناتھ کووند نے گورنر راج نافذ کر دیا
شیر خدا نے نبی پاک کی آواز پر لبیک کہہ کر اسلام سے محبت اور وفا کی عمدہ مثال قائم کی
پیپلزپارٹی ہی آئندہ انتخابات میں چاروں صوبوں میں اکثریت حاصل کریگی:میاں سلیم
جموں کشمیر تحریک حق خودارادیت کا نو منتخب کونسلروں میڈیا نمائندگان کے اعزاز میں افطار ڈنر
دشمنوں کے درمیان ایک کتاب
پکچرگیلری
Advertisement
پاک سر زمین پارٹی برمنگھم کے زیر اہتمام قائد اعظم کا یوم پیدائش شایان شان طریقے منایا گیا
برمنگھم:پاک سر زمین پارٹی برمنگھم کے زیر اہتمام بانی پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح کا141واں یوم پیدائش شایان شان طریقے سے حویلی بفٹ ریسٹورنٹ برمنگھم میں منایا گیا جس میں پاکستان اوربرطانیہ کی تمام سیاسی سماجی اور مذہبی رہنمائوں سے شرکت کی تقریب میں شمولیت برطانیہ بھر سے پاک سر زمین پارٹی کے رہنمائوں اور کارکنان نے بھی خصوصی طور پر شرکت کی،تقریب کے مہمان خصوصی پاک سر زمین پارٹی کے مرکزی سیکرٹری جنرل رضا ہارون نے خصوصی طور پر پاکستان سے تشریف لائے تھے،رضا ہارون نے اپنے خطاب کے دوران بانی پاکستان قائد اعظم کو شاندار الفاظ میں خراج تحسین پیش کیا،انہوں نے قیام پاکستان کے حالات پر روشنی بھی ڈالی اور اپنی سابقہ جماعت ایم کیو ایم اور بانی ایم کیو ایم کے اندرونی حالات کا بھی تذکرہ کیا،انہوں نے پاک سر زمین پارٹی کے قیام سے پہلے واقعات کا ذکر کرتے ہوئے کہا3مارچ2016کا وہ دن جب دو بہادر انسان سید مصطفیٰ کمال اور انیس قائم خانی طویل پریس کانفرنس کے دوران اپنے پاکستان سے جانے اور ایم کیو ایم سے لا تعلق ہونے کی تفصیلات بتائیں اور واپس آنے کی وجوہات بتائیں اور آئندہ کا لائحہ عمل بھی بتایا،ہم آ تو گئے ہیں اب ہم نے کرنا کیا ہے انہوں نے کہا ایسی ہی حالات میرے بھی تھے ہمیں ایم کیو ایم میں وہ تمام مراعات حاصب تھیں وہ ہر چیز ہم حاصل کر چکے تھے جس کی انسان خواہش رکھتا ہے،ہم ایم این اے،ایم پی اے،منسٹر،سینیٹر،میئر شپ سب کچھ تھا مگر ہمارا ضمیرمطمئن نہیں تھا پاکستان کے ساتھ جو کھلواڑ کھیلا جا رہا تھا ہم خاموش نہیں رہ سکتے تھے۔