مقبول خبریں
پی پی برطانیہ کے زیر اہتمام محترمہ بے نظیر بھٹو شہید کی64ویں سالگرہ کی تقریب کا انعقاد
تحقیقاتی ٹیم ایک طرف، قوم دوسری طرف جا رہی ہے، احتساب نہیں تماشہ ہو رہا ہے:نواز شریف
چمپئنز ٹرافی کے پاک بھارت میچ میں کشمیری کمیونٹی نے سٹیڈیم کے باہرشدید احتجاج کیا
این ڈی ایس، را دہشتگردوں کی سرپرست، افغانستان دہشتگردی کا ناسور ختم کرے:آرمی چیف
مودی سرکار کی بربریت، بھارتی فورسز کے ہاتھوں مزید 4 نہتے کشمیری شہید
سید حسین شہید سرور کا ڈاکٹرپیرسیدعلی رضاکے اعزازمیں اپنی رہائشگاہ پر افطارڈنر کا اہتمام
آکسفورڈ کی غیر مسلم کمیونٹی کے راہنمائوں کی بڑی تعداد کا مرکزی جامع مسجد کا دورہ
کشمیر گروپ مقبوضہ کشمیر میں مظالم بند کروانے کیلئے موثر اقدامات کرے گا:ڈیبی ابراہم
آؤ ہوش کے ناخن لیں!
پکچرگیلری
Advertisement
پاکستان کے ہائی کمشنر سےپی بی بی سی کے وفد کی جولین ہیملٹن کی زیرقیادت ملاقات
لندن:پاکستان بریٹین بزنس کونسل (پی بی بی سی) کے وفد نے چیئرمین جولین ہیملٹن کی زیرقیادت برطانیہ میں پاکستان کے ہائی کمشنر سید ابن عباس سے ان کے دفتر میں ملاقات کی۔ چیئرمین پی بی بی سی نے ہائی کمشنر کو دو اہم تجارتی سرگرمیوں کے بارے میں آگاہ کیا جن کا اہتمام پی بی بی سی مستقبل قریب میں کر رہی ہے۔ ایک ’’ڈوئنگ بزنس ان پاکستان‘‘ ہے جو 18 جنوری 2017 کو گلاسکو میں سکاٹش گورنمنٹ اور پاکستان ہائی کمیشن لندن کی مدد سے منعقد ہو گی جبکہ دوسری سرگرمی مارچ 2017 میں سابق برطانوی سیکرٹری خارجہ جیک سٹرا کی زیرقیادت ایک اعلیٰ اختیاراتی تجارتی وفد پاکستان بھیجنے کے بارے میں ہے۔ پی بی بی سی کے وفد نے ہائی کمشنر کو گلاسکو کی تقریب ’’ڈوئنگ بزنس ان پاکستان‘‘ میں اظہار خیال کی دعوت دی۔ ہائی کمشنر نے پی بی بی سی کی اس کاوش میں بھرپور دلچسپی کا اظہار کیا اور ان سرگرمیوں کو کامیاب بنانے میں حکومت پاکستان کے ہر ممکن تعاون کی یقین دہانی کرائی۔ بعد ازاں کامن ویلتھ الائنس آف ینگ انٹریپرینیورز (سی اے وائی ای) ایشیا کا وفد اپنے صدر شعبان خالد کی زیرقیادت ملاقات میں شامل ہو گیا۔ سی اے وائی ای کے وفد نے بھی پی بی بی سی کے مجوزہ تجارتی وفد کے لئے اپنی حمایت کا اظہار کیا۔ ہائی کمشنر نے کہا کہ ینگ انٹریپرینیورز پاکستانی معیشت میں مثبت تبدیلی لانے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔ انہوں نے پاکستان اور برطانیہ کے درمیان بہتر کمرشل تعلقات کے مشترکہ مقصد کے حصول کے لئے مختلف کاروباری پلیٹ فارموں کو جوڑنے کی ضرورت کو اجاگر کیا۔ ہائی کمشنر نے مزید کہا کہ کاروباری برادری کے ساتھ اس طرح کے روابط دونوں ملکوں کے درمیان دوطرفہ تجارت کا حجم بڑھانے میں اہم کردار ادا کریں گے۔ملاقات میں پاکستان ہائی کمیشن کے منسٹر پولیٹیکل زاہد حفیظ چوہدری بھی موجود تھے۔