مقبول خبریں
برادری ازم پر یقین رکھتے ہیں اور نہ علاقائی تعصب پر اہلیت کی بنیاد پر ڈاکٹر شاہد کی حمائت کر رہے ہیں
اسلام میں جسطرح خدمت انسانی کی حوصلہ افزائی کی گئی اسکی مثال نہیں ملتی: الصف چیریٹی کی امدادی تقریب
لالچی اور خودغرض ٹور آپریٹرز ں نے اللہ کے مہمانوں سے لوٹ کھسوٹ کا بازار گرم کر رکھا ہے
احتجاج کرنیوالے وزیر اعظم ہائوس آ کر مذاکرات کریں، نواز شریف
کشمیریوں نے بھارت کو بتا دیا وہ جدو جہد آزادی سے پیچھے نہیں ہٹیں گے،علی گیلانی
شیراز خان کی برطانیہ واپسی پر چیئرمین سلطان باہو پیر نیازالحسن سروری قادری کی والدہ کی وفات پر تعزیت
کشمیری اس امر پر متفق ہیں کہ ووٹ انہی کو دیا جائے گا جوحق خود ارادیت کی حمائت کرتے ہیں:کونسلر محبوب بھٹی
برطانیہ میں مقیم کمیونٹی پاکستان سے بے پناہ محبت کرتی ہے، . لارڈ میئر بریڈفورڈکا چھچھ ایسوسی ایشن تقریب سے خطاب
حکومت پنجاب کا اوورسیز کمشنر آفس
پکچرگیلری
Advertisement
اسلام میں جسطرح خدمت انسانی کی حوصلہ افزائی کی گئی اسکی مثال نہیں ملتی: الصف چیریٹی کی امدادی تقریب
لندن ... یوں تو دنیا کا ہر مزہب اور طبقہ انسانیت کی خدمت پر زور دیتا ہے لیکن دین اسلام میں جسطرح اس امر کی حوصلہ افزائی کی گئی ہے اسکی مثال نہیں ملتی۔ خدمت انسانی اور حقوق العباد پر توجہ مرکوز کرنے کا کہا گیا ہے جسکا بنیادی مقصد یہی ہے کہ دنیا بھر میں امن، م،حبت اور بھائی چارے کا فروغ ہو۔ ان خیالات کا اظہار مقررین نے الصف چیریٹی کے زیر اہتمام منعقدہ ایک تقریب میں کیا۔ تقریب کا اہتمام مسلم ایڈ برطانیہ اور فیضان اسلام کے تعاون سے کیا گیا تھا اور اس موقع پر مسلم ایڈ برطانیہ کے رابطہ افسر محمد ولایت کھوکھر ایم بی ای نے بے گھر،غریب اور نادار افراد کے لئے سائرہ میر کو 12 ہزار چار سو پونڈ کا چیک پیش کیا۔ مقررین میں والتھم فاریسٹ کے میئر کونسلر ندیم علی، علامہ غلام ربانی افغانی، محمد ولایت کھوکھر ایم بی ای، کونسلر لیاقت علی ، سائرہ میر، نور الاسلام ٹرسٹ کے یوسف ہنسہ اور راجہ الیاس شامل تھے۔ مقررین نے کہا کہ بھوکوں کو کھانا کھلانا ثواب کا کام ہے۔ برطانوی خیراتی اداروں کو چاہئے کہ وہ دوسرے ممالک میں امداد بھیجنے کے ساتھ ساتھ اس ملک کے غریبوں کا بھی خیالات رکھیں۔ انہوں نے کہا کہ برطانیہ میں خاص طور پر امیگرنٹس کمیونٹیز کے اندر غربت بہت زیادہ ہے۔ اس کے علاوہ بڑی تعداد میں لوگ بے گھر بھی ہیں۔ خیراتی اداروں کو چاہئے کہ وہ خاص طور پر برطانیہ کے بے گھر افراد پر بھی توجہ دیں۔ انہوں نے کہا کہ حالیہ کساد بازاری کی وجہ سے سارے مذاہب کے لوگ متاثر ہوئے ہیں۔ ان میں بہت سے ایسے ہیں جن کی کوئی آمدنی نہیں ہے۔ ان کو خیراتی اداروں کی مدد کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ غریبوں کی معاونت کے علاوہ برطانیہ میں کمیونٹی کوہیژن کے لئے کام کیا جانا ضروری ہے۔ اس موقع پر طلبہ کو بہترین کارکردگی پر سرٹیفیکیٹس سے بھی نوازا گیا۔ مسلم ایڈ کے کمیونٹی رابطہ آفیسر ولائت کھوکھر نے اس موقع پر کہا کہ انکی چیریٹی ناصرف دکھی انسانیت کیلئے بلکہ طلبہ و طالبات کی تعلیم کیلئے بھی فنڈز مہیا کرتی ہے تاکہ علم کا اجالا ہر سو پھیلے۔