مقبول خبریں
برادری ازم پر یقین رکھتے ہیں اور نہ علاقائی تعصب پر اہلیت کی بنیاد پر ڈاکٹر شاہد کی حمائت کر رہے ہیں
اسلام میں جسطرح خدمت انسانی کی حوصلہ افزائی کی گئی اسکی مثال نہیں ملتی: الصف چیریٹی کی امدادی تقریب
لالچی اور خودغرض ٹور آپریٹرز ں نے اللہ کے مہمانوں سے لوٹ کھسوٹ کا بازار گرم کر رکھا ہے
احتجاج کرنیوالے وزیر اعظم ہائوس آ کر مذاکرات کریں، نواز شریف
کشمیریوں نے بھارت کو بتا دیا وہ جدو جہد آزادی سے پیچھے نہیں ہٹیں گے،علی گیلانی
شیراز خان کی برطانیہ واپسی پر چیئرمین سلطان باہو پیر نیازالحسن سروری قادری کی والدہ کی وفات پر تعزیت
کشمیری اس امر پر متفق ہیں کہ ووٹ انہی کو دیا جائے گا جوحق خود ارادیت کی حمائت کرتے ہیں:کونسلر محبوب بھٹی
برطانیہ میں مقیم کمیونٹی پاکستان سے بے پناہ محبت کرتی ہے، . لارڈ میئر بریڈفورڈکا چھچھ ایسوسی ایشن تقریب سے خطاب
حکومت پنجاب کا اوورسیز کمشنر آفس
پکچرگیلری
Advertisement
عبدالرشید غازی قتل کیس،مشرف کو حاضری سے ایک روز کا استثنیٰ مل گیا،22مئی کو طلب
اسلام آباد ...عبدالرشید غازی قتل کیس میں پرویز مشرف کو 22 مئی کو طلب کر لیا گیا ، 3مئی کو پرویز مشرف کی پیشی سے استثنیٰ کو منظور کر لیا گیا عدالت نے پرویز مشرف کی بریت اور مستقل حاضری سے استثنیٰ کے لیے فریقین کو نوٹس جاری کر دیئے ، ہفتہ کو ایڈیشنل سیشن جج واجد علی کی عدالت میں پرویز مشرف کے خلاف عبدالرشید غازی قتل کیس کی سماعت ہوئی ، پرویز مشرف کی طرف سے ان کے وکیل اختر شاہ پیش ہوئے عدالت میں سابق صدر کی طرف سے متعدد درخواستیں دائر کی گئیں جن میں ایک درخواست میں گزشتہ روز تین مئی کو عدالت سے حاضری کے لیے استثنیٰ کی درخواست بھی تھی جبکہ مستقل استثنیٰ اور بریت کی درخواستیں بھی دائر کی گئیں، پرویز مشرف کے وکیل نے کہا کہ عدالت کے احکامات پر مکمل عمل کیا جائے گا پرویز مشرف عدالتوں میں پیش ہوتے رہے ہیں اگر عدالت حکم دے تو وہ آج ہی پیش ہو جائیں گے لیکن سکیورٹی دی جائے تو وہ مقدمات کا خود سامنا کرنے کے لیے تیار ہیں ، انہوں نے کہا کہ پرویز مشرف عدالت میں پیش ہو جاتے ہیں لیکن اگر انہیں کچھ ہوا تو اس کی تمام ذمہ داری درخواست گزار پر ہو گی ، درخواست گزار کے وکیل عبدالخالق نے کہا کہ ہر بار درخواستوں میں ایک ہی موقف دیا جاتا ہے کہ پرویز مشرف کو سکیورٹی خدشات ہیں اور وہ بیمار ہیں درخواست گزار کے وکیل نے استدعا کی کہ پرویز مشرف کو عدالت پیش ہونے کے لیے احکامات جاری کیے جائیں اور اگر وہ پیش نہیں ہوتے تو ان کے ضمانتیوں کو طلب کیا جائے ، عدالت نے پرویز مشرف کو سماعت میں استثنیٰ کی منظوری دیتے ہوئے بائیس مئی کو طلب کر لیا اور مستقل حاضری سے استثنیٰ کے لیے تمام فریقین کو نوٹس جاری کر دیئے ۔