مقبول خبریں
برادری ازم پر یقین رکھتے ہیں اور نہ علاقائی تعصب پر اہلیت کی بنیاد پر ڈاکٹر شاہد کی حمائت کر رہے ہیں
اسلام میں جسطرح خدمت انسانی کی حوصلہ افزائی کی گئی اسکی مثال نہیں ملتی: الصف چیریٹی کی امدادی تقریب
لالچی اور خودغرض ٹور آپریٹرز ں نے اللہ کے مہمانوں سے لوٹ کھسوٹ کا بازار گرم کر رکھا ہے
احتجاج کرنیوالے وزیر اعظم ہائوس آ کر مذاکرات کریں، نواز شریف
کشمیریوں نے بھارت کو بتا دیا وہ جدو جہد آزادی سے پیچھے نہیں ہٹیں گے،علی گیلانی
شیراز خان کی برطانیہ واپسی پر چیئرمین سلطان باہو پیر نیازالحسن سروری قادری کی والدہ کی وفات پر تعزیت
کشمیری اس امر پر متفق ہیں کہ ووٹ انہی کو دیا جائے گا جوحق خود ارادیت کی حمائت کرتے ہیں:کونسلر محبوب بھٹی
برطانیہ میں مقیم کمیونٹی پاکستان سے بے پناہ محبت کرتی ہے، . لارڈ میئر بریڈفورڈکا چھچھ ایسوسی ایشن تقریب سے خطاب
حکومت پنجاب کا اوورسیز کمشنر آفس
پکچرگیلری
Advertisement
پاک برطانیہ وزرا اعظم ملاقات، تجارت اور معیشت سمیت مختلف شعبوں میں تعاون کا جائزہ
لندن ....پاکستان کے وزیراعظم محمد نواز شریف اور برطانوی وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون کی باہمی ملاقات میں دو طرفہ دوستانہ تعلقات کو مزید مضبوط اور دفاع سمیت دیگر شعبوں میں تعاون میں اضافے کا عزم کیا گیا ہے۔ ملاقات کے بعد جاری ہونے والے مشترکہ اعلامیہ میں وزیراعظم نواز شریف کا حوالہ دیتے ہوئے کہا گیا پاکستان نے اپنی سرزمین سے دہشت گردی کے مکمل خاتمے کا تہیّہ کر رکھا ہے اور افغانستان سمیت کسی ملک کے خلاف اپنی سرزمین کسی کو بھی استعمال کرنے کی ہرگز اجازت نہیں دے گا۔ وزیراعظم نواز شریف نے گزشتہ سال برطانوی وزیراعظم کے دورہ پاکستان کا بھی حوالہ دیا اور کہا کہ وہ ڈیوڈ کیمرون کے جذبات کے اظہار کے جواب میں برطانیہ کے دورہ پر آئے ہیں۔ وزیراعظم نے کہا کہ دہشت گردی اور انتہاء پسندی کی لعنت کے باعث پاکستان کو بہت زیادہ نقصان پہنچا ہے۔انہوں نے کہا کہ ملک سے اس لعنت کا خاتمہ کیا جائے گا۔ دہشت گردی اور انتہاء پسندی کا خاتمہ ہماری قومی پالیسی کا حصہ ہے۔ نواز شریف نے برطانیہ کے ڈی ایف آئی ڈی کی طرف سے پاکستان کے لیے جاری امداد اور تعاون کی تعریف کی اور کہا کہ پاکستان کے عوام ترقی کے لیے برطانوی امداد و تعاون کے مشکور ہیں۔ ڈیوڈ کیمرون نے وزیراعظم نواز شریف کا پرتپاک خیرمقدم کیا اور معاشی استحکام، سماجی و اقتصادی ترقی کے لیے پاکستان کی بھرپور حمایت کا اعادہ کیا۔ انہوں نے دہشت گردی اور انتہاء پسندی کے خاتمے کے لیے پاکستانی حکومت کی کوششوں کی بھی حمایت کی۔ ملاقات کے دوران دونوں وزرائے اعظم نے تجارت، معیشت سمیت مختلف شعبوں میں دوطرفہ تعلقات کا جائزہ لیا اور ان تعلقات کو مزید مستحکم بنانے کے عزم کا اظہار کیا۔برطانوی وفد میں وزیر اعظم ڈیوڈ کیمرون کے ہمراہ وزیر خارجہ ولیم ہیگ اور سینئر منسٹر بیرونس وارثی موجود تھیں جبکہ پاکستانی وفد میں وزیر اعظم کے ہمراہ وزیر خزانہ اسحاق ڈار، خارجہ امور کے مشیر سرتاج عزیز، مشیر داخلی امور ڈاکٹر فاطمی، وزیر اعلی پنجاب میاں شہباز شریف، وزیر اعلی بلوچستان ڈاکٹر مالک بلوچ شامل تھے۔