مقبول خبریں
برادری ازم پر یقین رکھتے ہیں اور نہ علاقائی تعصب پر اہلیت کی بنیاد پر ڈاکٹر شاہد کی حمائت کر رہے ہیں
اسلام میں جسطرح خدمت انسانی کی حوصلہ افزائی کی گئی اسکی مثال نہیں ملتی: الصف چیریٹی کی امدادی تقریب
لالچی اور خودغرض ٹور آپریٹرز ں نے اللہ کے مہمانوں سے لوٹ کھسوٹ کا بازار گرم کر رکھا ہے
احتجاج کرنیوالے وزیر اعظم ہائوس آ کر مذاکرات کریں، نواز شریف
کشمیریوں نے بھارت کو بتا دیا وہ جدو جہد آزادی سے پیچھے نہیں ہٹیں گے،علی گیلانی
شیراز خان کی برطانیہ واپسی پر چیئرمین سلطان باہو پیر نیازالحسن سروری قادری کی والدہ کی وفات پر تعزیت
کشمیری اس امر پر متفق ہیں کہ ووٹ انہی کو دیا جائے گا جوحق خود ارادیت کی حمائت کرتے ہیں:کونسلر محبوب بھٹی
برطانیہ میں مقیم کمیونٹی پاکستان سے بے پناہ محبت کرتی ہے، . لارڈ میئر بریڈفورڈکا چھچھ ایسوسی ایشن تقریب سے خطاب
حکومت پنجاب کا اوورسیز کمشنر آفس
پکچرگیلری
Advertisement
سپورٹس مین شپ کا مظاہرہ کرنا اگر غداری ہے توہم سب غدار ہیں: برنلے اینڈپینڈل فرینڈز لیگ
نیلسن ... ایشیا کرکٹ چیمپئن شپ کے بنگلہ دیش میں ہونے والے ٹورنامنٹ میں پاکستان کی ٹیم کے ہاتھوں بھارت کی شکست پر کشمیری طلباء کو پاکستان کی ٹیم کو سپورٹ کرنے کے جرم میں اور یونیورسٹی سے نکالنے پر طلباء سے اظہار یکجہتی کے لئے برنلے اینڈپینڈل فرینڈز لیگ نے ایک اجلاس کا اہتمام برائر فیلڈپیپلز سنٹرمیں کیا ۔تنظیم کے چئیر مین حاجی صغیر احمد کی صدارت میں ہونے والے اس اجلاس میں مذہبی و سیاسی احباب شریک ہوئے جن میں مدینہ مسجد نیلسن کے خطیب سید نوید شاہ، مدینہ مسجد کوہن کے خطیب قاری ارشد محمود ، سید اختر حسین شاہ اور برنلے سے حافظ محمد ارشد کے علاوہ سیاسی حلقوں سے نامزد ڈپٹی مئیر کونسلرنواز احمد کونسلر عبد العزیز ، بیرسٹر افضال انور ،مذکر علی، پیف کے سیکرٹری جنرل اسلم جاوید ، تحریک کشمیر کے نائب صدرحاجی محمد یٰسین ، منہاج القرآن کے حاجی غضنفر علی ، کشمیر ویلفئیر ایسوسی ایشن کے چوہدری محمد کلیم اور پاکستانی کرسچئین کمیونٹی کی نمائندگی ڈیوڈ ڈین نے کی۔ چئیر مین حاجی صغیر احمد نے اس اجلاس بلانے کے اغراض و مقاصد بیان کرتے ہوئے اپنی تنظیم کی طرف سے اہل کشمیر اور متاثرہ کشمیری طلباء سے اظہار یکجہتی کیامقررین نے اظہار خیال کرتے ہوئے بھارتی حکام کی جانب سے کشمیری طلبا کے ساتھ اس ناروا سلوک کی مذمت کی کہ بھارت اپنے آپ کو دنیا کی بڑی جمہوریت کہلواتا ہے لیکن اظہار رائے پر پابندی لگا کر اپنے اصل روپ میں سامنے آگیا ہے معروف کھیلوں میں عوام دنیا بھر کی مختلف ٹیموں کو سپورٹ کرتے ہیں اگر ممالک اپنے لوگوں کو دوسرے ملک کی ٹیم کو سپورٹ کرنے پر غدار قرار دینے لگے تو ہم سب غداری کے مرتکب ہوتے ہیں یہ مثال قائم کرکے بھارت نے اپنا مکروہ چہرہ دنیا کو دکھا دیا ہے۔ مقررین نے آئندہ کے لائحہ عمل کے طور چند تجاویز بھی پیش کیں جن پر عمل پیرا ہوکر جموں و کشمیر کے لوگوں سے اظہار یکجہتی کی جا سکتی ہے جن میں سب نے پینڈل میں بسنے والے لوگوں سے مطالبہ کیا ہے کہ اب ہماری آنکھیں کھل جانی چاہیئں اور ہمیں یہاں برطانیہ میں ہر قسم کی جنس اور بھارتی مصنوعات کا بائیکاٹ کرنا چاہئے۔