مقبول خبریں
مانچسٹر کرائون ہال میں سالانہ عرس بابا فرید گنج بخش پاک پتن شریف کے سلسلہ میں محفل کا انعقاد
اوورسیز پاکستانی کا ایک کروڑ روپے مالیت کا مکان ناجائز قبضہ سے چھڑالیاگیا
ڈاکٹر افضل جاوید ورلڈ سائیکائیٹرک ایسوسی ایشن (WAP) کے صدر منتخب
ہر ادارہ اپنے دائرے میں کام کرے تو ملک ترقی کرے گا: وزیر داخلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی جبرکیخلاف مکمل ہڑتال، زبردست احتجاجی مظاہرے
لوٹن ٹائون ہال میں ادبی بیٹھک، لارڈ قربان نے صدارت کی معروف شعرا کرام کی شرکت
برطانیہ کے ساحلی شہر سائوتھ ہیمپٹن میں ملی نغموں کی گونج، ڈپٹی میئر کی خصوصی شرکت
پاکستانی کمیونٹی سنٹر مانچسٹر میں کبوتر پروری کا سالانہ کنونشن، تقسیم انعامات کی تقریب
مودی کی سبکی
پکچرگیلری
Advertisement
آئندہ چھ ماہ تک کوئی تحریک عدم اعتماد دوبارہ پیش نہیں ہو سکتی: چوہدری یٰسین
سلاؤ ...آزادکشمیر کے سینئر وزیر چوہدری محمد یٰسین برطانیہ واپس پہنچ آے ہیں، وہ آزادکشمیر کے وزیراعظم چوہدری مجید کے خلاف پیش کی جانے والی تحریک عدم اعتماد کی وجہ سے اپنا دورہ برطانیہ ادھورا چھوڑ کر آزادکشمیر چلے گئے تھے۔ اس تحریک عدم اعتماد کے حوالے سے آزادکشمیر کے سیاسی افق پر وہ ایک مردِ میدان کے طور پر ابھر کر سامنے آئے ۔ان کا کہنا ہے کہ جب بھی عدم اعتماد کی تحریک پیش ہوئی ہم اپنی عددی اکثریت پوری کرلیں گے..مسلم کانفرنس کے ساتھ ہماری بات چیت تقریباً مکمل ہوچکی ہے۔ بیرسٹر سلطان محمود دوسری مرتبہ پارٹی سے غداری کرکے آزاد کشمیر کیلئے ناقابل اعتبار شخص بن چکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی آزاد کشمیر امور کی انچارج ممبر قومی اسمبلی فریال تالپور کو تمام حالات و واقعات پر مبنی تفصیلی رپورٹ پیش کر رہی ہے عدم اعتماد کی تحریک کی ناکامی کے حوالے سے مرکزی رول ادا کرتے ہوئے اسے ناکام بنایا آئندہ چھ ماہ تک کوئی تحریک عدم اعتماد دوبارہ پیش نہیں ہو سکتی۔ چوہدری یٰسین نے مزید کہا کہ بیرسٹر سلطان محمود کے حمایتی وزرا مشیران کوآرڈینیٹرز ڈسٹرکٹ ایڈمنسٹریٹر ڈپٹی ایڈمنسٹرٹر کوبتدریج فارغ کر دیا جاے گا جو ایک مثبت اقدام ہے۔ ان کی جگہ جیا لے ورکرز کو ایڈجسٹ کیا جاے گا۔ چوہدری یسین نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ آزاد کشمیر میں پیپلز پارٹی کی قیادت اور وزارت عظمیٰ کی تبدیلی کے بارے میں اس وقت تک کوئی تجویز زیر غور نہیں۔ وزیراعظم آزاد کشمیر چوہدری عبدالمجید ہی ہمارے پارٹی صدر اور ٹیم کیپٹن ہیں اور وہی مزید 3 سال تک وزیراعظم رہیں گے۔