مقبول خبریں
مسرت چوہدری اور اختر چوہدری کا لارڈ مئیر عابد چوہان کے اعزاز میں ظہرانہ
پاکستان پریس کلب یوکے کے سالانہ انتخابات اور تقریب حلف برداری
چیئرمین پی آئی ایچ آرچوہدری عبدالعزیز کوسوک ایوارڈ فار کمیونٹی سروسز سے نواز گیا
برطانوی شاہی جوڑے کی پاکستان میں زبردست پذیرائی، وزیر اعظم اور صدر مملکت سے ملاقاتیں
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
اسرار احمد راجہ کی کتاب کی تقریب رونمائی ،مئیر آف لوٹن کونسلر طاہر ملک ودیگرافراد کی شرکت
پارک ویو کمیونٹی سنٹر شہیر واٹر میں ہمنوا یو کے کے زیرِ اہتمام یوم آزادی پاکستان تقریب کا انعقاد
ہر انسان کو اس کے مذہب کے مطابق تدفین کی اجازت ملنی چاہئے: سعیدہ وارثی و دیگر
Corona virus
پکچرگیلری
Advertisement
پیر ابو احمد مقصود مدنی برطانیہ و یورپ کے دورے کے بعد پاکستان پہنچ گئے
مانچسٹر (محمد فیاض بشیر)اداراہ نور السلام فیصل آباد کے سرپرست اعلیٰ پیر ابو احمد محمد مقصود مدنی یورپ اور برطانیہ میں نوجوان نسل کو دین اسلام اور حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی سیرت طیبہ کا درس دینے اور اس پر عمل کی تلقین کے ساتھ انسانیت کی خدمت کا درس دینے اس پر عمل کی تلقین کرنے کا کامیاب دورہ کرنے کے بعد پاکستان واپس پہنچ گئے جہاں پر قریبی رفقا عزیز و اقارب اور مریدین نے پرتپاک استقبال کیا اور ملاقات کرنے والوں کا تانا بندھا رہا ۔ میڈیا کو جاری کیے گئے اپنے ایک خصوصی بیان میں ان کا کہنا تھا کہ دور حاضر کے جدید تقاضوں کو ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے انتہائی ضروری ہے کہ ہم اپنی نوجوان نسل کو دنیاوی اور دینی تعلیم عین اسی کے مطابق دلوائیں اسلامی تعلیمات کو قرآن کریم اور سنت رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم پر عمل پیرا ہونے کا درس دیں یہ سب کچھ تب ہی ممکن ہے جب ہم دین اسلام میں سختی کا عنصر نہ لے کر آئیں ہمارا مذہب شائستگی،بردباری اخلاقیات۔برداشت صلح جوئی اور اتحاد و اتفاق کا عملی درس دیتا ہے اگر ہم اسکے برعکس اسلام کا پرچار کریں گے تو ہماری نوجوان نسل دین سے دوری اختیار کر لے گی جو ہمارے لیے لمحہ فکریہ ہے ہمیں چاہیے نوجوان نسل کو دین اسلام سے دلی لگاؤ رکھنے اور اسے عالمی سطح تک پھیلانے کے لیے انہیں سادہ فہم زبان میں اسکی تعلیمات دیں جو مستقبل میں اسلام کو عالمی سطح پر پھیلانے میں موثر ثابت ہو ۔ ان کا کہنا تھا کہ بدقسمتی سے غیر مذاہب قوموں نے قرآن مجید کی تعلیمات کو اپنا کر فلاعی معاشرے کی بنیاد رکھی اور انسانیت کی خدمت میں مصروف عمل ہیں جبکہ مسلمان ممالک میں بادشاہت کا نظام ہے نظم و ضبط اور انسانیت کے حقوق کا خیال کم رکھا جاتا ہے اقرا پروری اور امرا اصول و ضوابط سے ہٹ کر اثر رسوخ سے ہر طرح کا فائدہ اٹھا لیتے ہیں جبکہ متوسط طبقہ انصاف اور وسائل کے استعمال کو پانے کے لیے در در کی ٹھوکریں کھاتا ہے یہ سب کچھ تب ہی ممکن ہو گا جب ہم قرآن کریم کی تعلیمات اور سنت رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم پر عمل کریں گے امت مسلمہ کا اتحاد وقت کی ضرورت ہے تاکہ دنیا میں امن کا قیام عمل میں لایا جا سکے۔ پیر ابو احمد محمد مقصود مدنی نے دنیا بھر میں ظلم کا شکار انسانیت کی آزادی و خود مختاری ،امت مسلمہ کے اتحاد اور پاکستان کی سلامتی ترقی کے لیے خصوصی دعا بھی کی۔