مقبول خبریں
مسرت چوہدری اور اختر چوہدری کا لارڈ مئیر عابد چوہان کے اعزاز میں ظہرانہ
پاکستان پریس کلب یوکے کے سالانہ انتخابات اور تقریب حلف برداری
چیئرمین پی آئی ایچ آرچوہدری عبدالعزیز کوسوک ایوارڈ فار کمیونٹی سروسز سے نواز گیا
برطانوی شاہی جوڑے کی پاکستان میں زبردست پذیرائی، وزیر اعظم اور صدر مملکت سے ملاقاتیں
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
اسرار احمد راجہ کی کتاب کی تقریب رونمائی ،مئیر آف لوٹن کونسلر طاہر ملک ودیگرافراد کی شرکت
پارک ویو کمیونٹی سنٹر شہیر واٹر میں ہمنوا یو کے کے زیرِ اہتمام یوم آزادی پاکستان تقریب کا انعقاد
ہر انسان کو اس کے مذہب کے مطابق تدفین کی اجازت ملنی چاہئے: سعیدہ وارثی و دیگر
Corona virus
پکچرگیلری
Advertisement
چوہدری بشیر رٹوی کے زیر قیادت مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کیخلاف مظاہرہ
مانچسٹر (محمد فیاض بشیر)مانچسٹر میں بھارتی یوم جمہوریہ کو کشمیریوں نے یوم سیاہ کے طور پر منایااور مقبوضہ کشمیر میں کشمیریوں کی نسل کشی اور انسانی حقوق کی خلاف ورزی پر احتجاج کیا گیا۔ مظاہرے میں بھارتی وزیراعظم مودی کے خلاف نعرے لگائے گئے۔شدید بارش میں میں بھی مظاہرین کے جذبات قابل دید تھے۔مانچسٹر ٹاؤن میں گاندھی کے مجسمہ کے پاس مسلم کانفرنسی رہنما بشیر رٹوی کی قیادت میں مظاہرہ کیا گیا۔مظاہرین نے پلے کارڈ اور بینرز اُٹھا رکھے تھے جس پر کشمیر کی آزادی کے نعرے درج تھے۔ اس موقع پر آل جموں و کشمیر مسلم کانفرنس تحریک کشمیر بورڈ برطانیہ ویورپ کے چیئرمین چوہدری بشیر رٹوی نے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کی مذمت کی اور مطالبہ کیاکہ بھارت مقبوضہ وادی میں کرفیو ختم کرے اور پابندیاں اٹھائے۔ بھارت کے یومِ جمہوریہ پر مقبوضہ کشمیر فوجی چھاؤنی میں تبدیل ہوگیا ہے۔مظاہرے کا مقصد دنیا کی توجہ کشمیر پر بھارت کے مسلسل قبضے اور کشمیریوں کو گزشتہ 73 سال سے حق خود ارادیت سے محروم رکھے جانے کی طرف مبذول کرانا ہے۔اُنھوں نے کہا کہ بھارت مقبوضہ علاقے میں یوم جمہوریہ منانے کا حق نہیں رکھتا، بھارت نے مقبوضہ وادی میں کشمیریوں کو محصور کر رکھا ہے، قابض بھارتی فوج کشمیریوں کی نسل کشی کر رہی ہے، عالمی برادری کشمیریوں کوحق خود ارادیت دلانے کے لیے کردار ادا کرے۔اُنھوں نے کہا کہ بھارت حقیقی جمہوری ملک نہیں ہے کیونکہ وہ پچھلے 73 برس سے کشمیریوں کی فوجی طاقت کے ذریعے آواز کچل رہا۔بھارت کو مقبوضہ جموں و کشمیر سے فوجوں کے انخلا تک یوم جمہوریہ منانے کا کوئی اخلاقی و سیاسی حق نہیں، دہائیوں سے جاری و ظلم وبربریت اورمحصورکشمیریوں کیخلاف انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کی مثال دنیا میں کہیں نہیں ملتی،مودی کی ہندواتا پالیسیاں ایک منصوبہ بندی کے تحت تحریک آزادی کشمیر کو دبانے اور اس سے کشمیریوں کو الگ کرنی کی سازش ہے۔اس موقع پر دیگر مقررین نے بھی خطاب کیا اور بھارتی مظالم کی مذمت کی اور عالمی برادری سے حقخودارادیتت دلوانے کا مطالبہ کیا۔