مقبول خبریں
اکیڈمی آف سائنس،ٹیکنالوجی اینڈ مینجمنٹ اولڈہم کی سالانہ تقسیم اسناد تقریب کا انعقاد
کشمیر یوم سیاہ کے حوالے سے پاکستان ہائی کمیشن لندن میں سیمینار، بھارتی مظالم کی پرزور مذمت
دعوت اسلامی برمنگھم کے زیر اہتمام خراب موسم کے باوجودجشن عید میلاد النبیؐ کا جلوس
برطانوی شاہی جوڑے کی پاکستان میں زبردست پذیرائی، وزیر اعظم اور صدر مملکت سے ملاقاتیں
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
میلاد النبی کی تقریبات منعقد کر کے اللہ کریم کے شکر گزار ہیں کہ اس نے مومنوں پر احسان فرمایا
پارک ویو کمیونٹی سنٹر شہیر واٹر میں ہمنوا یو کے کے زیرِ اہتمام یوم آزادی پاکستان تقریب کا انعقاد
یاسمین ڈار کا لیبر پارٹی لیڈر جیریمی کوربن کے ساتھ مل کر انتخابی مہم کا آغاز
یہ رنگ جو مہکے تو ہوا پھول بنے گی!!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
سائنس، ٹیکنالوجی اور میڈیسن کے شعبوں میں تحقیق کے لئے پاکستانی طلبہ کیلئے وظائف
لندن (عمران راجہ) ہائی کمشنر محمد نفیس زکریا نے پاکستان سے تعلق رکھنے والے پی ایچ ڈی کے سات طلبہ کو 2019 کے ایڈتھ ایولین ولی محمد ٹرسٹ سکالرشپ دئیے۔ یہ طلبہ اس وقت برطانیہ کی مختلف یونیورسٹیوں میں ایس اینڈ ٹی کے مختلف تدریسی شعبوں میں زیرتعلیم ہیں۔ یونیورسٹیوں میں یونیورسٹی آف ویسٹ منسٹر، یونیورسٹی آف مانچسٹر، امپیریل کالج، یو سی ایل اور کنگز کالج شامل ہیں۔ سکالرشپ دینے کی تقریب 19 نومبر کو ہائی کمیشن میں منعقد ہوئی۔ ہائی کمشنر محمد نفیس زکریا بلحاظ عہدہ بورڈ آف ٹرسٹیز کے چیئرمین ہیں۔ وہ 2010-2011 میں اس کے ٹرسٹی بھی رہ چکے ہیں۔ بورڈ آف ٹرسٹی کے ارکان پروفیسر ہارون احمد اور پروفیسر مقصود علی صدیقی کے علاوہ ہائی کمیشن کے افسران نے بھی تقریب میں شرکت کی۔ سکالرشپ حاصل کرنے والے طلبہ میں سید ابراہیم غزنوی، محمد زبیر، جویریہ امجد، محمد زید حمید، بشریٰ کنول، نتاشا جعفری اور سید وقاص عارف شامل تھے۔ اس موقع پر اپنے تاثرات کا اظہار کرتے ہوئے ہائی کمشنر نے میرٹ کی بنیاد پر یہ ایوارڈ حاصل کرنے پر طلبہ اور ان کے والدین کو مبارکباد پیش کی۔ ہائی کمشنر نے کہا کہ جیسے جیسے عالمی سرگرمیوں کا محور ایشیا کی جانب منتقل ہو رہا ہے، پاکستان کے لئے بے پناہ مواقع پیدا ہو رہے ہیں۔ علم کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے نفیس زکریا نے طلبہ کو مشورہ دیا کہ وہ آرٹیفشل انٹیلی جنس، بلاک چین ٹیکنالوجی وغیرہ جیسے نئے تدریسی شعبوں میں داخل ہوں جن کا مستقبل شاندار ہے۔ انہوں نے طلبہ کو مشورہ دیا کہ وہ اس موقع سے بھرپور فائدہ اٹھائیں۔ ہائی کمشنر نے ولی محمد ٹرسٹ کے ٹرسٹی صاحبان کو ٹرسٹ کے امور پیشہ ورانہ اور شفاف انداز میں چلانے پر خراج تحسین پیش کیا۔ انہوں نے ٹرسٹ کے لئے فنڈز کے ذرائع میں وسعت پیدا کر کے سکالرشپ پروگرام کی استعداد بڑھانے کی ضرورت پر زور دیا تاکہ زیادہ طلبہ اس سے مستفید ہو سکیں۔ انہوں نے کہا کہ اس تقریب کے انعقاد کا مقصد اس عمدہ سرگرمی کے بارے میں آگاہی پھیلانا ہے۔ مواقع کے بارے میں ہائی کمشنر کے تاثرات کی مزید وضاحت کرتے ہوئے پروفیسر ہارون احمد نے طلبہ کو پاکستان کے تدریسی منظرنامے اور ملک میں معیاری تعلیمی و تحقیقی سہولیات کے فروغ کے لئے حکومتی کاوشوں کے بارے میں آگاہ کیا۔ انہوں نے بتایا کہ ملک میں ابھرتی ہوئی ٹیکنالوجیز کے فروغ کے لئے اسلام آباد میں ایک نئی ٹیکنالوجی یونیورسٹی قائم کی جا رہی ہے۔ انہوں نے یونیورسٹی پراجیکٹ میں ٹیکنالوجی کے لحاظ سے ترقی یافتہ ممالک کے ساتھ پارٹنرشپس کا بھی ذکر کیا۔ اس یونیورسٹی کے ساتھ ٹیکنالوجی پارک بھی بنائے جائیں گے تاکہ تعلیم کے ساتھ کمرشل سرگرمیوں کو بھی فروغ دیا جا سکے۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ سکالرشپ حاصل کرنے والے طلبہ پاکستان واپس جائیں گے اور اس کی ترقی میں اپنا کردار ادا کریں گے۔ ایڈتھ ایولین ولی محمد ٹرسٹ سال 1957 میں پروفیسر ولی محمد پی ایچ ڈی و سابق وائس چانسلر عثمانیہ یونیورسٹی حیدرآباد نے سائنس، ٹیکنالوجی اور میڈیسن کے شعبوں میں تحقیق کے لئے پاکستانی طلبہ کی معاونت کے لئے قائم کیا۔ یہ ٹرسٹ ہر سال مختلف برطانوی یونیورسٹیوں میں پی ایچ ڈی کے لئے داخل ہونے والے بہترین پاکستانی طلبہ کو شفاف اور کشادہ کارروائی کے ذریعے وظائف دیتا ہے۔ ہائی کمشنر اس ٹرسٹ کے چیئر ہیں اور ان کے علاوہ اس کے چار ٹرسٹی اور ایک ایگزیکٹو سیکرٹری ہیں۔