مقبول خبریں
مسرت چوہدری اور اختر چوہدری کا لارڈ مئیر عابد چوہان کے اعزاز میں ظہرانہ
پاکستان پریس کلب یوکے کے سالانہ انتخابات اور تقریب حلف برداری
چیئرمین پی آئی ایچ آرچوہدری عبدالعزیز کوسوک ایوارڈ فار کمیونٹی سروسز سے نواز گیا
برطانوی شاہی جوڑے کی پاکستان میں زبردست پذیرائی، وزیر اعظم اور صدر مملکت سے ملاقاتیں
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
اسرار احمد راجہ کی کتاب کی تقریب رونمائی ،مئیر آف لوٹن کونسلر طاہر ملک ودیگرافراد کی شرکت
پارک ویو کمیونٹی سنٹر شہیر واٹر میں ہمنوا یو کے کے زیرِ اہتمام یوم آزادی پاکستان تقریب کا انعقاد
ہر انسان کو اس کے مذہب کے مطابق تدفین کی اجازت ملنی چاہئے: سعیدہ وارثی و دیگر
Corona virus
پکچرگیلری
Advertisement
خواتین کو ڈیمنشیا کے مرض بارے آگاہی دینے کے لیے خصوصی ورکشاپ کا انعقاد
راچڈیل (محمد فیاض بشیر)سنٹر آف ویلبینگ ٹریننگ اینڈ کلچر سنٹر راچڈیل میں خواتین کو ڈیمنشیا کے مرض بارے آگاہی دینے کے لیے خصوصی ورکشاپ کا انعقاد کیا گیا اور اسکے ساتھ آقائے دو جہاں حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی ولادت باسعادت کے موقع پر روحانی محفل نعت کا انعقاد کیا گیا جس میں نامور نعت خواں طاہرہ جبیں نے خصوصی شرکت کر کے محفل میں سماں باندھ دیا۔ سنٹر کے چیف ایگزیکٹو محمد سرور چشتی صابری کے علاوہ خواتین کی بڑی تعداد نے شرکت کی اور ڈیمنشیا بارے دی گئ معلومات کو مفید قرار دیا۔ اس موقع پر محمد سرور چشتی صابری کا کہنا تھا کہ اس پروگرام کا مقصد کمیونٹی کے اندر خواتین میں جو ڈیمنشیا کا مرض بڑھ ہے اس بارے آگاہی دینی تھی اور ساتھ میں محفل نعت کا انعقاد کیا گیا ساتھ میں آرٹس کلچر ہیرٹیج کو بھی فروغ دیا گیا اسے ہمیں خود سمجھ کر دوسری کمیونیٹیز کو بھی آگاہی دینی چاہیے۔ محفل میں شریک نسیم کا کہنا تھا کہ خواتین کو اکٹھے ہونے کا موقع ملا اور ساتھ میں ڈیمنشیا بار مفید معلومات ملی ۔ عذرا کا کہنا تھا کہ صحت کے متعلق معلومات اور خصوصی طور پر وہ خواتین جو زیادہ وقت گھر میں ہی گزارتی ہیں انہیں یہاں آکر ڈیمنشیا اور دیگر ذہنی امراض بارے آگاہی ہوئ ساتھ میں محفل میلاد النبی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کا انعقاد خوش آئند تھا۔ بلقیس کا کہنا تھا کہ خواتین میں ڈیمنشیا کی مرض تیزی سے بڑھ رہی ہے اور اس سے انکی صحت کے مسائل میں اضافہ ہو رہا ہے خواتین کو ایسے پروگراموں میں ضرور شرکت کرنی چاہیے تاکہ انہیں اس بیماری سے نمٹنے بارے پتہ چل سکے۔