مقبول خبریں
پاکستان پریس کلب برطانیہ یارکشائیر ریجن کا سہیل وڑائچ کے اعزاز میں استقبالیہ
پاکستان اور بھارت میں واقعی برابری کہاں ؟ ایک طرف محبت دوسری طرف نفرت
پاکستانی نژاد پیشہ ورانہ ماہرین اور طلبہ جہاں بھی ہوں اقدار کی پاسداری کریں: نفیس زکریا
برطانوی شاہی جوڑے کی پاکستان میں زبردست پذیرائی، وزیر اعظم اور صدر مملکت سے ملاقاتیں
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
حلقہ ِ ارباب ِ ذوق کے ادبی پروگرام میں پاکستانیوں اور کشمیری کونسلرز کی بڑی تعداد میں شرکت
پارک ویو کمیونٹی سنٹر شہیر واٹر میں ہمنوا یو کے کے زیرِ اہتمام یوم آزادی پاکستان تقریب کا انعقاد
قومی برطانوی انتخابات میں کشمیر دوست امیدواران کو ووٹ دینے بارے آگاہی میٹنگ
سہمے ہوئے لوگوںسے بھی خائف ہے زمانہ
پکچرگیلری
Advertisement
ماحولیاتی آلودگی کے باعث بچہ ماں کے رحم میں مر جاتا ہے یا اسکی افزائش رک جاتی ہے: ایک تحقیق
لندن(خصوصی رپورٹ) ماہرین نے خبردار کیا ہے کہ ماحولیاتی یا فضائی آلودگی حمل ضائع ہونے کا سبب بن رہی ہے ، اس سلسلے میں 10 سالوں کے دوران صرف چین میں 17 ہزار سے زائد کیسز رپورٹ ہوچکے ہیں۔ چین کی بریتھ لائف نامی تنظیم کی جانب سے بیجنگ سمیت دیگر شہروں میں بڑھنے والی آلودگی کے حوالے سے تحقیقاتی مطالعے کا انعقاد کیا گیا جس کے نتائج میں یہ بات سامنے آئی کہ فضائی آلودگی سے قبل از اموات، سانس کی بیماریوں کے واقعات تو سامنے آرہے ہیں البتہ ایک تشویشناک بات یہ ہے کہ اس کی وجہ سے حمل بھی ضائع ہورہے ہیں۔ تحقیقاتی رپورٹ میں کہا گیا کہ چین کے دارالحکومت میں رہنے والا بالغ شخص ایک گھنٹے کے دوران بیس ہزار مرتبہ سانس لے کر خطرناک کیمیائی زرات کی خطرناک مقدار کو جسم میں منتقل کررہاہے۔ رپورٹ کے مطابق بیجنگ کی فضاء میں انسانی زندگی کو نقصان پہنچانے والے کیمیائی مادوں کی بین الاقوامی سطح سے 7.2 فیصد زیادہ ہے۔ ماہرین کے مطابق حاملہ خواتین جب ایسی فضا میں سانس لیتی ہیں تو اُن کا حمل ضائع ہونے کا خدشہ ہے۔ سائنسی جریدے نیچر اسسٹینی بیلیٹی میں شائع ہونے والی تحقیقاتی رپورٹ میں آلودہ فضا میں سانس لینے کو ‘حمل کا خاموش قاتل‘ قرار دیا گیا ۔ تحقیقاتی ماہرین کا کہنا ہے کہ فضائی آلودگی کے باعث قبل از وقت پیدائش، بچے کے وزن میں کمی اور سانس کی بیماریوں سمیت حاملہ خواتین کے لیے پیچیدگیاں بڑھ رہی ہیں۔ رپورٹ میں بتایا گیا ہے’’فضائی آلودگی حمل ضائع ہونے کے حوالے سے خاموشی سے اپنا کردار ادا کررہی ہے، اس کی وجہ سے بچہ ماں کے رحم میں مرجاتا ہے یا پھر اُس کی افزائش رک جاتی ہے‘‘۔ ماہرین نے فضائی آلودگی کے حاملہ خواتین پر ہونے والے اثرات کے حوالے سے مزید تحقیقات کرنے کا بھی اعلان کیا۔