مقبول خبریں
مقبوضہ کشمیر کےعوام کو بھارتی چنگل سےنجات دلانے کیلئے برطانوی حکومت کردار ادا کرے:راجہ نجابت
ڈیبی ابراھم کی قیادت میں ممبران پارلیمنٹ اور کمیونٹی رہنماؤں کی لارڈ طارق احمد سے ملاقات
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز اورسیمینارز منعقد کریگی : راجہ نجابت
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کی وزیراعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر اور شاہ غلام قادر سے ملاقات
پارک ویو کمیونٹی سنٹر شہیر واٹر میں ہمنوا یو کے کے زیرِ اہتمام یوم آزادی پاکستان تقریب کا انعقاد
راجہ نجابت حسین کا مسئلہ کشمیر پر بحث میں حصہ لینے پر ارکان یورپی پارلیمنٹ کو خراج تحسین
جب ریت پہ لکھو گے محبت کی کہانی!!!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
بیرسٹرامجد ملک کا راچڈیل کے مقامی ریسٹورنٹ میں لاہور ہائی کورٹ بار کے وفد کے اعزاز میں ظہرانہ
راچڈیل (محمد فیاض بشیر)ایسوسی ایشن آف پاکستانی لائیرز برطانیہ کے چیئرمین بیرسٹر امجد ملک نے لاہور ہائی کورٹ بار کے وفد جسکی قیادت سیکرٹری فیاض احمد رانجھا کر رہے تھے کہ اعزاز میں راچڈیل کے مقامی ریسٹورنٹ میں ظہرانہ دیا ۔ پاکستان اور برطانیہ کے وکلاء کے درمیان باہمی دلچسپی کے امور اور تعلقات کو مضبوط کرنے کے ساتھ مودی سرکار کی جانب سے مقبوضہ کشمیر کی موجودہ صورتحال انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں،کرفیو کے نفاذ پر قانونی حیثیت بارے باہمی گفت شنید کرتے ہوئے مشترکہ لائحہ عمل اپنانے کا اعادہ کیا۔ اس موقع پر لاہور ہائی کورٹ بار کے سیکرٹری فیاض احمد رانجھا کا کہنا تھا کہ کشمیری قوم کے ساتھ پاکستان بھر میں اظہار یکجہتی کے لیے تقریبات ہو رہی ہیں اور جسطرح سب لوگ کشمیر کے لیے یک زبان ہیں اور وزیراعظم عمران خان بطور سفیر کشمیری قوم کی نمائندگی کر رہے ہیں وکلاء برادری بھی لمحہ بہ لمحہ کشمیری قوم کے ساتھ کھڑی ہے۔ سیکرٹری مالیات لاہور ہائی کورٹ بار عنصر جمیل گجر کا کہنا تھا کہ ہم کشمیریوں کے ساتھ اظہار یکجہتی اور انکی نمائندگی کرتے ہوئے کشمیر کی آزادی تک کشمیریوں کی جنگ لڑیں گے۔ مخدوم طارق شاہ کا کہنا تھا کہ پوری دنیا کشمیر کی کشیدہ صورتحال کو تشویش کی نظر سے دیکھ رہی ہے بین الاقوامی مبصر کشمیر جا کر وہاں کی صورتحال کا از خود جائزہ لیں اور اقوام متحدہ سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ کشمیر کے مسئلہ کو حل کروائیں۔ بیرسٹر مقبول ملک کا کہنا تھا پاکستان اور برطانیہ کے وکلاء کا نمائندہ وفد کشمیر جائے تاکہ وہاں کی اصل صورتحال بارے پتہ چلے۔ طاہر انصاری کا کہنا تھا کہ پاکستان اور بھارت ایٹمی طاقتیں ہیں جنگ سے پوری دنیا میں تباہی پھیلے گی اور تیسری عالمی جنگ چھڑ سکتی ہے۔ غلام رسول شہزاد کا کہنا تھا کہ بھارت نے منظم سازش کے تحت مقبوضہ کشمیر میں کوفیو کا نفاذ کیا ہوا تاکہ دنیا کو کشمیریوں پر ہونے والے مظالم بارے آگاہی نہ ہو۔ ان کا مذید کہنا تھا کہ برطانیہ اور دیگر ممالک میں بسنے والے ہم وطنوں کو اس بارے آواز اٹھانی چاہیے تاکہ بھارت بے نقاب ہو۔ تقریب کے میزبان ایسوسی ایشن پاکستانی لائیرز برطانیہ کے چئیرمن بیرسٹر امجد ملک نے مہمانوں کو خوش آمدید کرتے ہوئے کہا برطانیہ اور پاکستان کے وکلاء کے درمیان بات چیت ہوئ کہ ہم کیسے بھارت نے جو کشمیریوں کو قید کیا ہوا کیسے ختم ہو اور انہیں انکا پیدائشی حق خود ارادیت کیسے ملے اور آرٹیکل 370 واپس بحال ہو اور جب تک کشمیریوں کو حق خود ارادیت نہیں مل جاتا بھارت انکی جغرافیائی صورتحال کو سبوتاژ نہ کر سکے۔ لاہور ہائی کورٹ بار کے وفد کو ایسوسی ایشن آف پاکستانی لائیرز کی جانب سے تعریفی اسناد بھی دی گئیں ۔