مقبول خبریں
ڈیبی ابراھم کیساتھ ناروا سلوک سے بھارت کا نام نہاد جمہوری چہرہ بے نقاب
مہنگائی کی ذمے دار عمران خان حکومت ہے ،شہباز شریف
دعوت اسلامی برمنگھم کے زیر اہتمام خراب موسم کے باوجودجشن عید میلاد النبیؐ کا جلوس
برطانوی شاہی جوڑے کی پاکستان میں زبردست پذیرائی، وزیر اعظم اور صدر مملکت سے ملاقاتیں
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
اسرار احمد راجہ کی کتاب کی تقریب رونمائی ،مئیر آف لوٹن کونسلر طاہر ملک ودیگرافراد کی شرکت
پارک ویو کمیونٹی سنٹر شہیر واٹر میں ہمنوا یو کے کے زیرِ اہتمام یوم آزادی پاکستان تقریب کا انعقاد
راجہ نجابت حسین کی ڈیبی ابراھام کے ہندوستان میں داخلے پر پابندی کی شدید مذمت
آتش فشاں
پکچرگیلری
Advertisement
جامعتہ المحمدیہ یوکے اکیڈمی آف اسلامک سائنسز کے زیر اہتمام تقسیم اسناد اور قرآن کانفرنس کا انعقاد
اولڈہم (محمد فیاض بشیر)جامعتہ المحمدیہ یوکے اکیڈمی آف اسلامک سائنسز جو بچیوں کی دینی تعلیم میں نمایاں کردار ادا کر رہی ہے کے تحت ساتویں سالانہ تقسیم اسناد اور قرآن کانفرنس کا انعقاد یورپین اسلامک سنٹر اولڈہم میں ہوا۔ کانفرنس میں مختلف ممالک کے علمائے کرام نے قرآن کریم کی تفسیر پر روشنی ڈالی اور اسے ذریعہ نجات قرار دیا ۔ طریقہ محمدیہ کے استاد شیخ احمد دباخ، عمر حیات قادری، ڈاکٹر مسعود احمد ،ڈاکٹر عزیز الکوبیتی، ڈاکٹر شیخ ریاض حسن بازو ، ڈاکٹر مسعود احمد، پروفیسر محمد کے علاوہ سابق ممبر یورپین پارلیمنٹ ڈاکٹر سجاد حیدر کریم نے خصوصی شرکت کی ۔ تقریب میں جامعتہ المحمدیہ یوکے اکیڈمی آف اسلامک سائنسز سے فارغ التحصیل طالبات کو اسناد بھی پیش کی گئیں اس قابل فخر موقع پر طالبات کے والدین بھی موجود تھے۔ لبنان سے آئے ڈاکٹر شیخ حسن بازو کا کہنا تھا کہ قرآن پاک کی تعلیمات کے ساتھ سنت رسول پر عمل پیرا ہونے سے ہی ہم آگے بڑھ سکتے ہیں ہم نے قرآن کریم کو صرف مردہ شخص کے لیے بخشش کا ذریعہ بنا دیا ہے حالانکہ زندگی گزارنے کے لیے قرآن کریم کی تعلیمات ہمارے لیے مشعل راہ ہیں۔ عمر حیات قادری کا کہنا تھا کہ آج شدت اور انتہا پسندی ہے ہماری نوجوان نسل دین سے دور ہے ان کا مذید کہنا تھا کہ اس نوجوان نسل کو فکر صوفیاء اور اولیاء کرام کی تعلیمات کے ذریعے انہیں دین کے نزدیک لانا انتہائی ضروری ہے میں سمجھتا ہوں کہ آجکی قرآن کانفرنس میں دنیا بھر کے علماء ومشائخ کا یورپ و برطانیہ آنا یہاں کے مسلمانوں کو قرآن کا پیغام دینا انتہائی اہمیت کا حامل ہے اور یقیناً اس کانفرنس کے دورس نتائج نکلیں گے۔ ڈاکٹر مسعود احمد کا کہنا تھا کہ ہمیں قرآن کی طرف لوٹنے کی ضرورت ہے کیونکہ قرآن میں ہدایت اور روشنی ہے ان کا مذید کہنا تھا کہ قرآن کانفرنس لوگوں کے دلوں میں روشنی اور اسکی تعلیمات پھیلانے کا ذریعہ بنے گی۔ مراکو سے آئے پروفیسر محمد کا کہنا تھا کہ تمام پیغمبران اسلام نے امت کی فکر کی اور انہوں نے عملی کام بھی کیا انکے بعد صوفیاء کرام بھی انکے نقش قدم پر چلتے ہوئے ایسے ہی کیا ۔سابق ممبر یورپین پارلیمنٹ ڈاکٹر سجاد حیدر کریم کا کہنا تھا کہ قرآن کانفرنس قرآن مجید کی تعلیمات پھیلانے کا بہترین ذریعہ ہے اس سے بے شمار تنظیمیں جو یہ کام کر رہی ہیں انکے اعلیٰ کام کا ثبوت ہے۔ جامعتہ المحمدیہ یوکے اکیڈمی آف اسلامک سائنسز اور محمدیہ طریقہ کے روح رواں شیخ احمد دباخ کا کہنا تھا کہ قرآن مجید وہ اصول بیان کرتا ہے جو صفتیں آجائیں تو فرد اور قومیں بھی کمال حاصل کرتی ہیں اور اگر یہ صفتیں نکل جائیں تو فرد اور قومیں زوال پذیر ہوتی ہیں اب وہ اصول چاہے مسلمان اپنا لیں چاہے کافر۔ تقریب میں شریک دیگر علماء کرام کا کہنا تھا کہ ایک ایسا معاشرہ جہاں جہالت کے اندھیرے تھے آقا صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی تشریف آوری ہوئ غار حرا سے قرآن کے نزول کا آغاز ہوا اور وہاں پر جو ابجد شناس لوگ تھے انکو قرآن اور صاحب قرآن کی تعلیم نے دنیا کا امام بنا دیا۔ مہمانوں نے جامعتہ المحمدیہ یوکے اکیڈمی آف اسلامک سائنسز میں تعلیم مکمل کرنے والی طالبات کو اسناد پیش کیں ۔ نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم پر درود پاک بھیجا گیا۔ ڈاکٹر شیخ ریاض حسن بازو نے امت مسلمہ کے لیے خصوصی دعا کی۔