مقبول خبریں
مقبوضہ کشمیر کےعوام کو بھارتی چنگل سےنجات دلانے کیلئے برطانوی حکومت کردار ادا کرے:راجہ نجابت
ڈیبی ابراھم کی قیادت میں ممبران پارلیمنٹ اور کمیونٹی رہنماؤں کی لارڈ طارق احمد سے ملاقات
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز اورسیمینارز منعقد کریگی : راجہ نجابت
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کی وزیراعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر اور شاہ غلام قادر سے ملاقات
پارک ویو کمیونٹی سنٹر شہیر واٹر میں ہمنوا یو کے کے زیرِ اہتمام یوم آزادی پاکستان تقریب کا انعقاد
راجہ نجابت حسین کا مسئلہ کشمیر پر بحث میں حصہ لینے پر ارکان یورپی پارلیمنٹ کو خراج تحسین
جب ریت پہ لکھو گے محبت کی کہانی!!!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
حضرت عثمان غنی ؓ نے دین اسلام کی ترویج میں اہم کردار ادا کیا: علامہ ظفر محمود فراشوی
مانچسٹر(محمد فیاض بشیر)مرکزی جامع مسجد جامع کریمہ،جامع قران، کے خطیب علامہ ظفر محمود فراشوی مجدد نے کہا ہے کہ خلیفہ راشد سوم حضرت عثمان غنی ؓ نے دین اسلام کی ترویج میں اہم کردار ادا کیا آپ ؓ کی سخاوت اپنی مثال آپ تھی حضرت عثمان غنی ؓ کے دورِ خلافت میں اسلامی سلطنت کا پرچم دور دور تک لہرایا آپ ؓ حضور نبی کریم حضرت محمد ؐ کے سچے اور جانثار ساتھی ہیں حضور اکرم ؐ کی دو صاحبزادیوں کا عقد حضرت عثمان غنی ؓ سے ہوا اور آپکو ؓ ذوالنورین کا شرف حاصل ہوا ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے روح پرودروحانی محفل سے امیرالمومنین حضرت سیدنا عثمان غنی ؓ کے یوم شہادت کے موقع پر جامع کریمہ میں منعقدہ خصوصی محفل سے خطاب میں کیا۔انہوں نے کہا کہ ضرورت اس امر کی ہے کہ ایسی تقاریب شہر میں زیادہ سے زیادہ منعقد کی جائیں تاکہ نوجوان نسل میں ملک اور دین سے محبت کواجاگرکیا جا سکے اور انکو اسلامی تعیلیمات اور اسلامی شعار سے روشناس کروایا جاسکے پاکستان لاکھوں قربانیوں کے بعد معرض وجود میں آیا نئی نسل کو اس کی قدر کرنی چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ المیہ یہ ہے کہ تاریخ اسلام منافقین کے ظلم و زیادتی اور مظلوموں کے لہو سے رنگین ہے حضرت عثمان غنی ؓ نے لازوال قربانی دے کر انسانيت اور اسلام کا سر بلند فرمانے کے ساتھ ساتھ فتنہ اور شر کا خاتمہ کیا اور مدینہ میں خون ریزی سے اجتناب فرمایا اور اپنے ساتھیوں کو جنگ نا کرنے کا حکم دیا۔روحانی محفل کے اختتام پر ملکی سالمیت اور خصوصی طور پر کشميریوں کی آزادی کے لئے دعا کی گئی۔