مقبول خبریں
سیاسی ،سماجی کمیونٹی شخصیت بابو لالہ علی اصغر کا مقبوضہ کشمیر کی صورتحال بارے میٹنگ کا انعقاد
بھارتی ظلم و جبر؛ برطانیہ کے بعد امریکی اخبارات میں بھی مسئلہ کشمیر شہہ سرخیوں میں نظر آنے لگا
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز اورسیمینارز منعقد کریگی : راجہ نجابت
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
مظلوم کشمیری بھائیوں کیلئے پہلے کی طرح آواز بلند کرتے رہیں گے:مئیر کونسلر طاہر محمود ملک
اوورسیز پاکستانیز ویلفیئر کونسل کا وسیم اختر چوہدری اور ملک ندیم عباس کے اعزاز میں استقبالیہ
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت کا کشمیر پٹیشن پر دستخطی مہم کا آغاز ،10ستمبر کو پیش کی جائیگی
کافر کو جو مل جائے وہ کشمیر نہیں ہے!!!!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
عالمی طاقتوں کے دوہرے معیار سے مسئلہ کشمیر حل نہ ہو سکا:مولانا خادم حسین چشتی
اولڈہم (محمد فیاض بشیر)برطانیہ بھر میں عیدالاضحی کا تہوار مذہبی جوش وجذبے اور سادگی سے منایا گیا جسکی بنیادی وجہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی جارحیت اور حال ہی میں کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کر کے اسے بھارتی یونین کا حصہ بنانے کا گھناؤنا فعل ہے ۔ نگینہ جامع مسجد ورنتھ ہال روڈ اولڈہم میں عید الاضحی کے خصوصی خطبہ کے موقع پر ممتاز مذہبی راہنما مولانا قاری خادم حسین چشتی نے کہا کہ ستر سال گزر گئے مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں نہتے شہریوں کو تشدد کا بدترین نشانہ بنانے اور خواتین کی عزتوں سے کھیلنا بھارتی سکیورٹی اداروں کے اہلکاروں کا معمول بن گیا عالمی طاقتیں، اقوام متحدہ اور انسانی حقوق کی علمبردار تنظیموں کی سرد مہری نے کشمیری قوم کو بھرپور احتجاج اور تشدد کا راستہ اپنانے پر مجبور کر دیا ۔ پاکستان کشمیری قوم کا واحد وکیل ہے اور مسئلہ کشمیر پر بھارت سے دو جنگیں بھی ہو چکی ہیں اقوام متحدہ میں کشمیریوں کو انکا پیدائشی حق خود ارادیت بارے قراردیں موجود ہیں لیکن بدقسمتی سے عالمی طاقتوں کا دوہرے معیار سے مسئلہ کشمیر حل نہیں ہو سکا۔ ان کا کہنا تھا کہ مودی سرکار نے مذہب کے تعصب کی انتہا کر دی ماضی میں بھی مذہبی تعصب کی آڑ میں مودی نے بھارتی گجرات میں مسلمانوں کا قتل عام کیا تھا اور اب مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کو ختم کر کے اسے بھارتی یونین کا حصہ بنانا بھی اسی سوچ کا شاخسانہ ہے ۔ ان کا کہنا تھا کہ وقت آگیا ہے کہ پاکستان کو کشمیریوں کی اخلاقی اور سفارتی حمایت سے ایک قدم آگے آنا ہو گا اور جن ماؤں بہنوں اور بیٹیوں کی عزت سے کھیلا جا رہا ہے ان بھارتی درندوں کو ایسا سبق سکھایا جائے کہ تاقیامت تاریخ یاد رکھے ۔ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کو اب مقبوضہ کشمیر پر حملہ کر دینا چاہیے تاکہ کشمیری ماؤں بہنوں اور بیٹیوں کی عزت محفوظ ہو سکے اور کشمیری قوم آزادی سے سکھ کا سانس لے۔ قاری خادم حسین چشتی نے امت مسلمہ کے اتحاد و اتفاق اور دنیا میں مظلوم لوگوں کی داد رسی کے لیے خصوصی دعا کی۔