مقبول خبریں
سیاسی ،سماجی کمیونٹی شخصیت بابو لالہ علی اصغر کا مقبوضہ کشمیر کی صورتحال بارے میٹنگ کا انعقاد
بھارتی ظلم و جبر؛ برطانیہ کے بعد امریکی اخبارات میں بھی مسئلہ کشمیر شہہ سرخیوں میں نظر آنے لگا
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز اورسیمینارز منعقد کریگی : راجہ نجابت
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
مظلوم کشمیری بھائیوں کیلئے پہلے کی طرح آواز بلند کرتے رہیں گے:مئیر کونسلر طاہر محمود ملک
اوورسیز پاکستانیز ویلفیئر کونسل کا وسیم اختر چوہدری اور ملک ندیم عباس کے اعزاز میں استقبالیہ
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت کا کشمیر پٹیشن پر دستخطی مہم کا آغاز ،10ستمبر کو پیش کی جائیگی
کافر کو جو مل جائے وہ کشمیر نہیں ہے!!!!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
مارجری حسین کی لکھی کتاب کی تقریب رونمائی، کتاب تاریخ ساز کارنامہ ہے:شرکا
لندن (خصوصی رپورٹ: عمران راجہ)آرٹ ایک ایسا فن ہے جس کے ذریعے کسی بھی قوم کی تہذیب و ثقافت کو اصل روح کیساتھ اجاگر کیا جاسکتا ہے، دی ورلڈ آف تصدق حسین اس بات کا منہ بولتا ثبوت ہے، ان خیالات کا اظہار مقررین نے آرٹ کی نامور نقاد مارجری حسین کی لکھی کتاب کی تقریب رونمائی میں کیا۔ مہمان مقررین نے معروف مصور تصدق سہیل کے فن پاروں پر مشتمل کتاب کو ایک تاریخ ساز کارنامہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ انہوں نے ایک عمر پردیس میں گزار دی مگر وطن سے محبت انکے فن پاروں میں کوٹ کوٹ کے بھری نظر آتی ہے۔مقررین کا کہنا تھا کہ یہ کتاب پاکستان اور برطانیہ کے آپس میں جڑے رشتوں کی خوبصورتی کا نمونہ ہے جس نے لازوال پینٹنگز بنائیں وہ پاکستان سے برطانیہ آکر آباد ہوئے اور جس نے ان پینٹنگز کے حوالے سے کتاب لکھی وہ برطانیہ سے پاکستان جا کر رہیں، اس موقع پر مصنفہ مارجری حسین نے پاکستان سے جڑی اپنی یادوں کا بھی ذکر کیا۔مارجری حسین نے شرکا کو بتایا کہ انھوں نے پاکستانی کلچر اور فنکاروں سمیت ان کے کام کو نا صرف دیکھا بلکہ پاکستان میں مختلف علاقوں کےخود معلوماتی دورے بھی کئے۔تقریب میں کرکٹر ظہیر عباس، پاکستان ہائی کمشن کے فرسٹ سیکریٹری پریس منیر احمد، کتاب کی مصنفہ ماجری حسین، سلمان ملک، شہزادہ حیات، سلیم شیخ، ریحانہ سہگل، رحمت صغیر، ناصر جاوید سمیت معروف برطانوی اور پاکستانی شخصیات نے اظہار خیال کیا۔تقریب میں تصدق سہیل کے فن پاروں کی نمائش بھی کی گئی اور ماجری حسین کی بیٹی اور ان کی نواسی نے خصوصی طور پر شرکا کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ پاکستان کے علاقے سیاحتی اور تاریخی اعتبار سے اہم ترین ریاست ہے جس کو دنیا بھر میں مثبت انداز میں پیش کیا جانا چاہئے اور اس کتاب میں مارجری حسین نے جس قدر ہو سکا یادوں کی صورت میں پاکستانی کلچر کو تصویری اور تحریری فن پارہ بنانے کی کوشش کی ہے۔دوران تقریب حاضرین کو وائلن پر خوبصورت پاکستانی نغموں کی دھنوں سے محظوظ کیا گیا۔