مقبول خبریں
راچڈیل کیسلمئیرسنٹر میں کمیونٹی کو صحت مند رہنے،حفاظتی تدابیر بارے آگاہی ورکشاپ کا انعقاد
یورپی پارلیمنٹ میں قائم ’’فرینڈز آف کشمیر گروپ‘‘ کی تنظیم سازی کردی گئی
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت جولائی میں برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز،سیمینارز منعقد کریگی
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
مظلوم کشمیری بھائیوں کیلئے پہلے کی طرح آواز بلند کرتے رہیں گے:مئیر کونسلر طاہر محمود ملک
اوورسیز پاکستانیز ویلفیئر کونسل کا وسیم اختر چوہدری اور ملک ندیم عباس کے اعزاز میں استقبالیہ
مسئلہ کشمیر کو برطانیہ و یورپ میں اجاگر کرنے پر تحریکی عہدیداروں کا اہم کردار ہے: امجد بشیر
ہم نے سچ کو دیکھا ہے جھوٹ کے جھروکوں سے!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
عمران خان میرے لیڈر،بحیثیت سپیکر میرے کردار پرکبھی اثر انداز نہیں ہوئے:اسدقیصر
مانچسٹر (محمد فیاض بشیر)بیرون ملک بسنے والے پاکستانیوں کے حقوق کو قانونی تحفظ حاصل ہے کمیونٹی میرے ساتھ مل بیٹھ کر اس بارے لائحہ عمل اختیار کرے کہ وہ کیا چاہتے ہیں۔ سپیکر کا کام ہاؤس کو چلانا ہوتا ہے قانون سازی حکومت اور اپوزیشن کا کام ہے کہ وہ کونسے قوانین پارلیمنٹ سے منظور کروانا چاہتے ہیں اس میں سپیکر کی رائے شامل نہیں ہوتی ۔ جہاں تک پروڈکشن آرڈر کی بات میں آئین و قانون کے مطابق اپنی ذمہ داری غیر جانبدارانہ طور پر نبھا رہا ہوں حالانکہ ماضی میں شیخ رشید کے مسئلہ پر سابق سپیکر نے پروڈکشن آرڈر جاری کیے لیکن ان پر عملدرآمد نہیں ہوا جبکہ میں نے جتنے بھی پروڈکشن آرڈر جاری کیے سب پر عملدرآمد ہوا اور سیاسی قائدین پارلیمنٹ ہاؤس آئے اس بارے اپوزیشن لیڈر میاں شہباز شریف اور بلاول بھٹو زرداری نے بھی پارلیمنٹ میں اپنے خطاب میں سپیکر کے غیر جانبدارانہ کردار کا ذکر کیا ہے ۔ وزیراعظم عمران خان میرے لیڈر ہیں ان سے تئیس سالوں سے سیاسی رفاقت ہے ان سے دیگر معاملات پر بات چیت ہوتی ہے لیکن انہوں نے بحیثیت سپیکر میرے کردار پر کبھی اثر انداز نہیں ہوئے اور نہ ہی مجھ پر کسی نے کبھی دباؤ ڈالا ہے۔ ان خیالات کا اظہار پاکستان قومی اسمبلی کے سپیکر اسد قیصر نے مانچسٹر کے مقامی ریسٹورنٹ ہال میں پریس کانفرنس اور نامور کاروباری شخصیت وزیراعظم پاکستان عمران خان کے مشیر انیل مسرت کی جانب سے رکھے گئے عشائیہ کے موقع پر کیا۔ ان کا مذید کہنا تھا کہ بجٹ کے دوران اٹھاون گھنٹے بحث ہوئ اور ایک سیشن آٹھ گھنٹے تک بھی جاری رہا جو ریکارڈ ہے یہی جمہوریت کا حسن ہے ان کا کہنا تھا کہ موجودہ حکومت اور پارلیمنٹ اپنی مدت پوری کرے گی پاکستان کی تعمیر وترقی ہم سب کی قومی ذمہ داری ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ہم معذور افراد کو ساری سہولتیں دیں رہے ہیں نوجوانوں کو ایک لاکھ سے ڈیڑھ کڑور تک قرضے دیں گے تعلیم کے لئے کام کررہے ہیں جسکے لیے سات یونیورسٹیوں کا قیام عمل میں لایا گیا سیاحت کے فروغ کے لیے خصوصی اقدامات کر رہے ہیں پرانے قوانین جو متصادم ہیں ختم کر کے نئے بنائیں گے کسانوں کو قوانین کے زریعے تحفظ دیں گے ھمارا ملک زراعت سے مالامال ہے ہم ماڈل وہلج بنا رھے ہیں جہاں پر سکول ھسپتال کی سہولیات میسر ہوں گی ۔ ان کا کہنا تھا کہ نابینا بچوں کے لیے بھی سکول بنائیں گے ابھی بہت چیلنجوں کا سامنا ہے ان میں سے سب سے بڑا مسئلہ معیشت کا ہے اسے استحکام دینے کی کوشش کر رہے ہیں اور جب ایسا ہو گیا تو پھر عام آدمی پر قیمتوں کے بڑھنے جو مہنگائی کا بوجھ پڑا ہے اسے کم کریں گے اور جو پچاس لاکھ مکانات کا وزیر اعظم عمران خان نے وعدہ کیا ہوا ہے اس منصوبے کو بھی پایہ تکمیل تک پہنچائیں گے بھی بنائیں گے ۔سپیکر اسد قیصر نے انیل مسرت کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ اوورسیز پاکستانی ہمارے لئے بہت اھم ہیں آپ پاکستان کا آثاثہ ہیں عمران خان پاکستان کی تقدیر ضرور بدلیں گے ان کا کہنا تھا کہ وہ برطانیہ کے فوری پر اپنے ذاتی خرچے پر آئے ہیں۔ پریس کانفرنس کے دوران برطانیہ میں تعینات پاکستانی ہائی کمشنر نفیس زکریا، ممبر قومی اسمبلی ریاض فتیانہ،مانچسٹر میں تعینات قونصل جنرل عامر آفتاب قریشی و یگر بھی انکے ہمراہ تھے اسکے بعد عشائیہ میں کمیونٹی کے مختلف مکتبہ فکر کے افراد نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔ مہمانوں کی تواضع روایتی ایشیائی کھانوں سے کی گئی۔