مقبول خبریں
حضرت عثمان غنی ؓ نے دین اسلام کی ترویج میں اہم کردار ادا کیا: علامہ ظفر محمود فراشوی
بھارتی ظلم و جبر؛ برطانیہ کے بعد امریکی اخبارات میں بھی مسئلہ کشمیر شہہ سرخیوں میں نظر آنے لگا
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز اورسیمینارز منعقد کریگی : راجہ نجابت
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
مظلوم کشمیری بھائیوں کیلئے پہلے کی طرح آواز بلند کرتے رہیں گے:مئیر کونسلر طاہر محمود ملک
اوورسیز پاکستانیز ویلفیئر کونسل کا وسیم اختر چوہدری اور ملک ندیم عباس کے اعزاز میں استقبالیہ
جموں کشمیر تحریک حق خودارادیت کے زیر اہتمام کشمیر کانفرنس،ممبران برطانوی و یورپی پارلیمنٹ کی شرکت
وہ جو آنکھ تھی وہ اجڑ گئی ،وہ جو خواب تھے وہ بکھر گئے
پکچرگیلری
Advertisement
مدینہ انسٹیٹیوٹ مسجد اینڈ کمیونٹی ہب اولڈہم میں محفل ذکر کا اہتمام ،کمیونٹی کی بڑی تعداد میں شرکت
اولڈہم (محمد فیاض بشیر)مدینہ انسٹیٹیوٹ مسجد اینڈ کمیونٹی ہب جو دین اسلام کی ترویج کے لیے ایک منظم طریقے سے خدمت میں مصروف ہے اور سال بھر سماجی کمیونٹی اور مذہبی سرگرمیوں کا محور ہوتا ہے۔ رمضان المبارک کے بابرکت ماہ کے دوران ہر ہفتہ صلوت اور محفل ذکر کا خصوصی اہتمام کیا جاتا ہے جس میں خواتین اور بچوں کی بڑی تعداد شرکت کرتی ہے مختلف اسلامی ممالک کے افراد کے ساتھ مل بیٹھ کر روزہ افطار کیا جاتا ہے۔ اس موقع پر مدینہ انسٹیٹیوٹ مسجد اینڈ کمیونٹی ہب کے صدر کا کہنا تھا کہ صلوۃ و ذکر کے محفل میں رب العالمین کا ذکر کر کے ہم اپنی روح اور ایمان کو تازہ کرتے ہیں کمیونٹی کی بڑی تعداد شرکت کرتی ہے جو خوش آئند بات ہے۔ ان کا مذید کہنا تھا کہ سب سے بڑی بات مختلف اسلامی ممالک کے افراد کا اس محفل میں شرکت کر کے ذکر الہٰی کرنا کمیونٹی کے اندر باہمی اتحاد و اتفاق اور یگانگت کو فروغ دینا یے۔ انسٹیٹیوٹ میں رضا کارانہ خدمات سر انجام دینے والے ظہیر اقبال کا کہنا تھا کہ ہر ہفتہ کی شام ذکر کی محفل کا انعقاد اور خاندان بھر کے افراد کا بچوں سمیت آنا خوش آئند ہے ہمارے نوجوان ہم سب کے لیے سرمایہ حیات ہیں ۔ شمائلہ یونس کا کہنا تھا کہ خاندان کے تمام افراد بچوں سمیت یہاں آئے جو کہ قابل فخر بات ہے۔ ان کا مذید کہنا تھا کہ بچوں کی تفریح کے لیے جھولے اور دیگر سرگرمیوں کا بھی اہتمام کیا گیا تھا وہ اس وجہ سے بہت خوش تھے ۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ ذکر الہٰی سے ایمان تازہ ہوتا ہے اور روح کو سکون ملتا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ رمضان المبارک کے دوران بین الثقافتی کمیونٹی کے ساتھ افطاری کرنا بہت اچھا لگتا ہے اور ساتھ میں بچوں کی دینی و دنیاوی تعلیم بارے بھی بات ہوتی ہے