مقبول خبریں
ایسٹرن پویلین ہال اولڈہم میں آزادکشمیر میں قائم اسلام ویلفیئر ٹرسٹ کے سالانہ چیرٹی ڈنر کا انعقاد
مسئلہ کشمیر بارےیورپی پارلیمنٹ انتخابات پر برطانیہ و یورپ میں بھرپور لابی مہم چلائینگے،راجہ نجابت
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
برطانیہ میں آباد تارکین وطن کی مسئلہ کشمیر پر کاوشیں قابل تحسین ہیں:چوہدری محمد سرور
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
کشمیریوں کو ان کا حق دیئے بغیر خطے میں پائیدار امن کا حصول ممکن نہیں: راجہ نجابت حسین
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
برطانیہ میں مقیم کشمیری و پاکستانی 16مارچ کو بھارت کے خلاف مظاہرہ کریں گے: راجہ نجابت حسین
سرچ آپریشن
پکچرگیلری
Advertisement
تندرستی ایک عطیہ الٰہی ہے، بدقسمتی سے اس نعمت کی قدر نہیں کی جاتی: ڈاکٹر روبینہ احمد
مانچسٹر( محمد فیاض بشیر ) ہا ئی لیول وآلنس تنظیم کی ڈائریکٹر ڈاکٹر روبینہ احمد نے کہا ہے کہ آج کا انسان گوناگوں مسائل کا شکار ہے، ان میں صحت و تندرستی کے مسائل بھی شامل ہیں ۔ صحت و تندرستی اللہ تعالیٰ کی نمایاں اور اہم ترین نعمتیں ہیں ۔ حضور صلی اللہ علیہ وسلم کا ارشاد ہے: دو نعمتیں ایسی ہیں جن میں بہت سارے لوگ نقصان اور خسارے میں رہتے ہیں ، ایک صحت اور دوسری فراغت۔صحت اور عمر کی قدر تب معلوم ہوتی ہے، جب انسان بیماری اور موت کا شکار ہو جائے۔ تندرستی ایک عظیم نعمت ہے۔ کہ اسلام حفظان صحت کا کس قدر خواہاں ہے، اور وہ کس طرح روحانی ارتقا کے ساتھ ساتھ جسمانی صحت اور تندرستی میں بھی دل چسپی لیتا ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے برٹش مسلم ھرٹج سنٹر میں صحت کے متعلق آگاہی پیدا کرنے کے لیے منعقدہ ایک ورکشاپ سے خطاب کرتے ھوئے کہا کہ صحت کا پہلہ درس آپ کے کچن سے شروع ھوتا ھے،انہوں نے کہا کہ تندرستی ایک عطیہ الٰہی ہے، لیکن بدقسمتی سے اس بیش بہا نعمت کی کماحقہٗ قدر نہیں کی جاتی، اور لوگ اس میں غفلت برتتے ہیں ۔ مال و دولت، جائداد اور دیگر املاک کی قدردانی سے تو ہر ایک واقف ہے، لیکن جس قوت کے ذریعے یہ تمام چیزیں میسر آتی ہیں اور جس کے ذریعے ان تمام نعمتوں سے فائدہ اٹھایا جا سکتا ہے، اس کو برقرار رکھنے اور اس کی حفاظت کے لیے کسی قسم کی احتیاطی تدابیر اختیار نہیں کی جاتیں ۔ہم یہاں پیچیدہ مسائلِ طب و صحت زیر بحث نہیں لانا چاہتے بلکہ صحت کے وہ سیدھے سادے اصول ہیں ، جن پر عمل کر کے ہر انسان اپنے جسم اور دماغ کو آلودگیوں سے پاک و صاف رکھ سکتا ہے۔ روشنی، تازہ ہوا، عمدہ اور صاف پانی، متوازن اور سادہ خوراک، جسم، لباس، مکان اور ماحول کی صفائی، جسمانی اور دماغی وظائف میں اعتدال، محنت کے بعد آرام، ورزش اور صحت کے دیگر مسلمہ اصولوں پر کاربند رہنے سے انسان اپنے آپ کو صحت مند اور طاقتور بنا سکتا ہے۔ ان اصولوں پر عمل کرنے میں کوئی دقت پیش نہیں آتی۔ انسان اپنی عملی زندگی میں ان پر عمل کر کے اپنے جسم اور ذہن کو تندرست رکھ سکتا ہے۔ صرف تھوڑی سی توجہ اور سنت و سیرت کا اس قدر مطالعہ درکار ہے، جو اس معاملے میں ہمارے رہنمائی کرسکے۔اس موقعہ پر روبینہ شاہ ،آمنہ، کوثر،شاھین،فرزانہ کے علاوہ دیگر خواتین نے شرکت کی،