مقبول خبریں
یو کے آئی ایم شعبہ خواتین کا کمیونیٹیز خواتین کو ایک پلیٹ فارم پر اکٹھا کرنے کا خوبصورت جذبہ
بھارتی ہائی کمیشن کے باہر کشمیریوں کا احتجاجی مظاہرہ،لندن کی فضا آزادی کے نعروں سے گونج اٹھی
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
کشمیریوں کو ان کا حق دیئے بغیر خطے میں پائیدار امن کا حصول ممکن نہیں: راجہ نجابت حسین
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
برطانیہ میں مقیم کشمیری و پاکستانی 16مارچ کو بھارت کے خلاف مظاہرہ کریں گے: راجہ نجابت حسین
پھر ہم نے وہ چراغ ہوا کو تھما دیا!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
مسئلہ کشمیر پر تحریکی رہنمائوں کی معاونت جاری رکھوں گا: واجد خان ایم ای پی
مانچسٹر(بیورو رپورٹ:فیاض بشیر)یورپی پارلیمنٹ کی انسانی حقوق کمیٹی میں مسئلہ کشمیر بحث واجد خان ایم ای پی کا تاریخی کارنامہ ہے جس سے عالمی سطح پر مسئلہ کشمیر کو اجاگر کرنے میں تقویت ملی ہے،برٹش کشمیریوں کی محنت اور جدوجہد رنگ لا رہی ہے جبکہ مقبوضہ کشمیر کے عوام کی قربانیوں کو اقوام متحدہ،یورپی یونین اور برطانوی پارلیمنٹ کے علاوہ انسانی حقوق کی تنظیموں نے تسلیم کیا ہے،کشمیری عوام کو حق خود ارادیت دینے کے مطالبے کی بھی حمایت کی ہے،جموں کشمیر تحریک حق خودارادیت انٹرنیشنل دیگر تنظیموں کے ساتھ ملکر مسئلہ کشمیر کو دیگر عالمی فورموں پر بھی لے کر جائے گی،واجد خان کو خراج تحسین پیش کرنے کیلئے9مارچ کو اولڈہم میں قومی کشمیر کانفرنس کا انعقاد کیا جائے گا جس کی صدارت ڈیبی ابراہم کریں گی،واجد خان ایم ای پی کی طرف سے تحریکی عہدیداروں کا معاونت پر شکریہ اور مل کر مستقبل میں بھی مسئلہ کشمیر پر کام جاری رکھنے کا عزم کیا،یورپی پارلیمنٹ میں کامیاب کوششوں کے بعد واجد خان ایم ای پی نے جموں و کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کی طرف سے دیئے گئے استقبالیے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جب انہوں نے یورپی پارلیمنٹ میں اپنی نشست سنبھالی تھی تو لیبر گروپ لیڈر اور فرینڈز آف کشمیر کے شریک چیئرمین رچرڈ کوربٹ ایم ای پی نے جو ذمہ داری سونپی تھی اور جو وعدہ میں نے اپنے حلقے کے عوام اور تحریکی عہدیداروں سے کیا تھا وہ آج پورا کر کے اپنے حلقے میں واپس آیا ہوں اور ان لوگوں کے ساتھ بیٹھا ہوں جنہوں نے مسلسل میری معاونت کی اور اس جدو جہد میں بھرپور حصہ ڈالا اس پر میں راجہ نجابت حسین،سردار عبدالرحمان خان،کونسلر یاسمین ڈار،محمد اعظم،امجد حسین مغل اور ان کی پوری ٹیم کا شکریہ ادا کرتا ہوں جو میری پشت پر موجود رہے حالانکہ نہ صرف بھارتی حکومت،ان کے حمایتوں بلکہ ہمارے اپنے کچھ نادان دوستوں نے بے شمار رکاوٹیں ڈالیں مگر ہم نے اس عظیم کام کا بیڑا اٹھایا تھا اسے یورپی پارلیمنٹ تک کامیابی سے ہمکنار ہوئے ہیں مگر ہمارا اصل کام ریاست میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں بند کرانا اور کشمیری عوام کو ان کا حق خودارادیت دلوانا ہے جس کیلئے ہر پلیٹ فارم پر آواز بلند کروں گا اور تحریکی رہنمائوں کی معاونت جاری رکھوں گا۔